خورشید رضوی جانے کس کس کا شریکِ انجمن یادوں میں ہے

نمرہ نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏ستمبر 12, 2015

  1. نمرہ

    نمرہ محفلین

    مراسلے:
    571
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Paranoid
    جانے کس کس کا شریکِ انجمن یادوں میں ہے
    ایک پہلو سے دلِ پابند آزادوں میں ہے

    دیدہ و دل اب بھی جاگ اٹھتے ہیں تیرے نام پر
    حسرتِ تعمیر اب تک خانہ بربادوں میں ہے

    وہ جو توڑے گا طلسم ِ سامری، وہ بھی انھی
    راہ سے بھٹکے ہوئے لب تشنہ شہزادوں میں ہے

    ہر عمارت میں نظر آنے لگے گی ایک دن
    یہ کجی جو ان دنوں آنکھوں کی بنیادوں میں ہے

    ہو کسی کا صید تو ہم ڈھال بن جائیں مگر
    اس کا کیا کیجے کہ دل آپ اپنے صیادوں میں ہے
     

اس صفحے کی تشہیر