بہار جاں فزا تم ہو نسیم گلستاں تم ہو ۔۔۔

الشفاء

لائبریرین
بہار جاں فزا تم ہو نسیم گلستاں تم ہو
بہار باغ رضواں تم سے ہے زیب جناں تم ہو

خدا کی سلطنت کا دو جہاں میں کون دولہا ہے
تمہی تم ہو تمہی تم ہو یہاں تم ہو وہاں تم ہو

حقیقت سے تمہاری جز خدا اور کون واقف ہے
کہے تو کیا کہے کوئی چنیں تم ہو چناں تم ہو

کجا ہم خاک افتادہ کجا تم اے شہہ بالا
اگر مثل زمیں ہم ہیں تو مثل آسماں تم ہو

یہ کیا میں نے کہا مثل سما تم ہو معاذاللہ
منزہ مثل سے ، برتر ز ہر وہم و گماں تم ہو

میں بھولا آپ کی رفعت سے نسبت ہی ہمیں کیا ہے
وہ کہنے بھر کی نسبت تھی کہاں ہم ہیں کہاں تم ہو

میں بے کس ہوں میں بے بس ہوں مگر کس کا تمہارا ہوں
تہہ دامن مجھے لے لو پناہ بے کساں تم ہو

ہمیں امید ہے روز قیامت ان کی رحمت سے
کہ فرمائیں ادھر آؤ نہ مایوس از جناں تم ہو

ستم کارو، خطا کارو ، سیہ کارو، جفا کارو
ہمارے دامن رحمت میں آ جاؤ کہاں تم ہو

تمہارے ہوتے ساتے درد و دکھ کس سے کہوں پیارے
شفیع عاصیاں تم ہوں وکیل مجرماں تم ہو

ریاضت کے یہی دن ہیں بڑھاپے میں کہاں ہمت
جو کچھ کرنا ہے اب کر لو ابھی نوری جواں تم ہو

فقط نسبت کا جیسا ہوں حقیقی نوری ہو جاؤں
مجھے جو دیکھے کہہ اٹھے میاں نوری میاں تم ہو

محمد مصطفےٰ رضا خان نوری رحمت اللہ علیہ۔۔۔

 
ہمیں امید ہے روز قیامت ان کی رحمت سے
کہ فرمائیں ادھر آؤ نہ مایوس از جناں تم ہو

ستم کارو، خطا کارو ، سیہ کارو، جفا کارو
ہمارے دامن رحمت میں آ جاؤ کہاں تم ہو
بے شک اسی امید سے تو عمل کی مہمیز ملتی ہے۔
سبحان اللہ۔ خوب شراکت ہے۔
 
بہار جاں فزا تم ہو نسیم گلستاں تم ہو
بہار باغ رضواں تم سے ہے زیب جناں تم ہو

خدا کی سلطنت کا دو جہاں میں کون دولہا ہے
تمہی تم ہو تمہی تم ہو یہاں تم ہو وہاں تم ہو

حقیقت سے تمہاری جز خدا اور کون واقف ہے
کہے تو کیا کہے کوئی چنیں تم ہو چناں تم ہو

کجا ہم خاک افتادہ کجا تم اے شہہ بالا
اگر مثل زمیں ہم ہیں تو مثل آسماں تم ہو

یہ کیا میں نے کہا مثل سما تم ہو معاذاللہ
منزہ مثل سے ، برتر ز ہر وہم و گماں تم ہو

میں بھولا آپ کی رفعت سے نسبت ہی ہمیں کیا ہے
وہ کہنے بھر کی نسبت تھی کہاں ہم ہیں کہاں تم ہو

میں بے کس ہوں میں بے بس ہوں مگر کس کا تمہارا ہوں
تہہ دامن مجھے لے لو پناہ بے کساں تم ہو

ہمیں امید ہے روز قیامت ان کی رحمت سے
کہ فرمائیں ادھر آؤ نہ مایوس از جناں تم ہو

ستم کارو، خطا کارو ، سیہ کارو، جفا کارو
ہمارے دامن رحمت میں آ جاؤ کہاں تم ہو

تمہارے ہوتے ساتے درد و دکھ کس سے کہوں پیارے
شفیع عاصیاں تم ہوں وکیل مجرماں تم ہو

ریاضت کے یہی دن ہیں بڑھاپے میں کہاں ہمت
جو کچھ کرنا ہے اب کر لو ابھی نوری جواں تم ہو

فقط نسبت کا جیسا ہوں حقیقی نوری ہو جاؤں
مجھے جو دیکھے کہہ اٹھے میاں نوری میاں تم ہو

محمد مصطفےٰ رضا خان نوری رحمت اللہ علیہ۔۔۔
سبحان اللہ ماشاءاللہ بہت ہی خوبصورت نعت کا انتخاب
سلامت رہیں
 

مونس ھاشمی

محفلین
بعض کلام دل کی گہرائیوں میں اتر کر سوزن عشق کو بھڑکا دیتے ہیں جس سے عشق وسرور میں چار چاند لگ جاتے ہیں۔
واہ میاں! نوری میاں تم ہو۔
 

سیما علی

لائبریرین
فقط نسبت کا جیسا ہوں حقیقی نوری ہو جاؤں
مجھے جو دیکھے کہہ اٹھے میاں نوری میاں تم ہو
سبحان اللّہ سبحان اللّہ
جیتے رہیے بھیا اسقدر خوبصورت نعت شریکِ محفل کرنے کا بے حد شکریہ
اور پھر اویس رضا قادری صاحب کا پڑھنے کا انداز
ڈھیروں دعائیں !!!!!!!
 
Top