سعود عثمانی برون ِ دیوار و در گئی تھیں ، ورائے حد نظر گئی تھیں - سعود عثمانی

چوہدری لیاقت علی نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏مارچ 19, 2015

  1. چوہدری لیاقت علی

    چوہدری لیاقت علی محفلین

    مراسلے:
    305
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    برون ِ دیوار و در گئی تھیں ، ورائے حد نظر گئی تھیں
    وہ عشق پیچاں کی سرخ بیلیں جو مجھ میں گہری اتر گئی تھیں
    میں ایک دن جب ادھر سے گزرا ، تو پھر وہ منظر نظر سے گزرا
    اسی طرح سے وہ سبز شاخیں سنہرے پھولوں سے بھر گئی تھیں

    جنہوں نے مجھ کو جگائے رکھا ۔ تمام شب جگمگائے رکھا
    سحر ہوئی تو وہ شوخ کرنیں نہ جانے یکدم کدھر گئی تھیں

    وہ لمحۂ جاں گسل نہ بہلا ، کسی طرح سے بھی دل نہ بہلا
    مکالمے رائیگاں گئے تھے ، خموشیاں بے اثر گئی تھیں

    (سعود عثمانی )
     

اس صفحے کی تشہیر