برائے اصلاح

فلسفی نے 'اِصلاحِ سخن' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جنوری 9, 2019

ٹیگ:
  1. فلسفی

    فلسفی محفلین

    مراسلے:
    2,584
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Pensive
    سر الف عین اور دیگر احباب سے اصلاح کی گذارش۔

    ہو کے دوچار عبرت کے انجام سے / رو برو ہو کے عبرت کے انجام سے
    دل بری ہو گیا ہر اک الزام سے

    بے یقینی ہے دل میں جو ابہام سے
    کچھ تعلق نہیں اس کا الہام سے

    کشمکش دیکھتے ہیں مرے ضبط کی
    وہ جو پہلو میں بیٹھے ہیں آرام سے

    آ رہی ہے رقیبوں کے لہجے کی بُو
    خط میں لکھے ہوئے ان کے پیغام سے

    بزمِ شب پھر کسی اور دن دوستو!
    آج آئے ہوئے ہیں وہ گھر شام سے

    ان کا محفل میں آنا ضروری نہیں
    خوف کھاتے ہیں جو حرفِ دشنام سے

    اخترانِ فلک ماند پڑنے لگے
    اک ستارہ جو ابھرا سرِ بام سے

    حاسدوں کے دلوں پر چلیں قینچیاں
    جب پکارا انھوں نے مجھے نام سے

    خلوتیں چھوڑ کر تجھ کو جانا پڑا
    فلسفیؔ ان کی محفل میں کس کام سے​
     
    آخری تدوین: ‏جنوری 9, 2019
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  2. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    34,298
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    مطلع میں پہلا متبادل ہی بہتر ہے
    ابہام الہام والے قوافی اگر حسن مطلع نہ بنائیں تو بہتر ہے کہ ایطا کا احساس ہوتا ہے الفاظ کی نشست بدل دو جیسے
    دل میں ابہام سے بے یقینی تھی جو

    اک ستارہ جو ابھرا سرِ بام سے
    محض سر بام کافی ہوتا ہے اس کے ساتھ 'سے' لگانا غلط محاورہ ہے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  3. فلسفی

    فلسفی محفلین

    مراسلے:
    2,584
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Pensive
    شکریہ سر
    ٹھیک ہے سر
    ٹھیک ہے سر
    سر کیا "لبِ بام سے" ٹھیک رہے گا۔
     
  4. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    34,298
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    نہیں کیا محض بام میں کچھ پرابلم ہے؟
    اک ستارہ جو ابھرا ہے اس بام سے
    یا اس قسم کا کچھ اور مصرع
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  5. فلسفی

    فلسفی محفلین

    مراسلے:
    2,584
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Pensive
    نہیں سر مسئلہ تو کوئی نہیں۔ بس "خالی بام" اچھا نہیں لگتا۔ :)
    کچھ اور سوچتا ہوں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  6. فلسفی

    فلسفی محفلین

    مراسلے:
    2,584
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Pensive
    سر الف عین ، گستاخی معاف کچھ اشعار میں لبِ بام استعمال ہوا ہے کیا ان کی بنیاد پر میں بھی استعمال کر سکتا ہوں۔


    اس لب بام سے اے صرصر فرقت تو بتا
    مثل تنکے کے مرا یہ تن لاغر پھینکا
    (عبدالرحمان احسان دہلوی)

    دیکھے کہیں مجھ کو تو لب بام سے ہٹ جائے
    اس وضع سے اس کی مرا دل کیونکہ نہ پھٹ جائے
    (محمد امان نثار)

    ویسے متبادل کے طور پر ان میں سے کوئی مناسب ہے؟

    ایک تارہ ابھرنے لگا بام سے
    یا
    اک ستارہ ابھرنے لگا بام سے
     
    آخری تدوین: ‏جنوری 9, 2019
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  7. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    34,298
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    لب بام سے ہٹنا، گر جانا وغیرہ درست ہے لیکن ابھرنا قبول نہیں
    اک ستارہ... بہترین ہے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  8. فلسفی

    فلسفی محفلین

    مراسلے:
    2,584
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Pensive
    کج فہمی کی معافی چاہتا ہوں سر۔

    ٹھیک ہے سر۔ اصلاح کے بعد غزل حاضر ہے۔

    ہو کے دوچار عبرت کے انجام سے
    دل بری ہو گیا ہر اک الزام سے

    دل میں ابہام سے بے یقینی تھی جو
    کچھ تعلق نہیں اس کا الہام سے

    کشمکش دیکھتے ہیں مرے ضبط کی
    وہ جو پہلو میں بیٹھے ہیں آرام سے

    آ رہی ہے رقیبوں کے لہجے کی بُو
    خط میں لکھے ہوئے ان کے پیغام سے

    بزمِ شب پھر کسی اور دن دوستو!
    آج آئے ہوئے ہیں وہ گھر شام سے

    ان کا محفل میں آنا ضروری نہیں
    خوف کھاتے ہیں جو حرفِ دشنام سے

    اخترانِ فلک ماند پڑنے لگے
    اک ستارہ ابھرنے لگا بام سے

    حاسدوں کے دلوں پر چلیں قینچیاں
    جب پکارا انھوں نے مجھے نام سے

    خلوتیں چھوڑ کر تجھ کو جانا پڑا
    فلسفیؔ ان کی محفل میں کس کام سے ​
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2

اس صفحے کی تشہیر