1. اردو محفل سالگرہ شانزدہم

    اردو محفل کی سولہویں سالگرہ کے موقع پر تمام اردو طبقہ و محفلین کو دلی مبارکباد!

    اعلان ختم کریں

اوبنٹو اور گنوم کے راستے جدا

الف نظامی نے 'لینکس کارنر' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اکتوبر 28, 2010

  1. الف نظامی

    الف نظامی لائبریرین

    مراسلے:
    17,546
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amused
  2. دوست

    دوست محفلین

    مراسلے:
    13,086
    جھنڈا:
    Germany
    موڈ:
    Fine
    یونٹی مواجہ نیٹ بُکس کے لیے بنایا گیا تھا۔ جن کی چوڑائی زیادہ اور اونچائی کم ہوتی ہے۔ اب اوبنٹو اسے نارمل ڈیسکٹاپ پر بھی ٹھونس رہا ہے تو پرانے صارفین کو ونڈو بٹنوں کو واپس بائیں سے دائیں لانے کی طرح کوئی جگاڑ اختیار کرنی پڑے گی۔ لینکس کا مواجہ جتنا کسٹمائز ایبل ہے اس میں ایسی تبدیلی، خصوصٓا اوبنٹو میں ایسی تبدیلیوں کا دورانیہ چھ ماہ ہی ہوتا ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  3. الف نظامی

    الف نظامی لائبریرین

    مراسلے:
    17,546
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amused
    تو کیا ہم gubuntu کی امید رکھیں؟
     
  4. دوست

    دوست محفلین

    مراسلے:
    13,086
    جھنڈا:
    Germany
    موڈ:
    Fine
    خیر مواجے کی یہ تبدیلی کوئی اتنی بڑی نہیں۔ بس ذرا بڑک ہے اوبنٹو کو نئی ریلیز کے لیے کوئی ایج چاہیے ہوتی ہے ہر بار۔ سو کچھ نہ کچھ تو کرنا ہوتا ہے۔ لوگ اسے پسند بھی کریں گے اور ناپسند بھی۔ اور ناپسندوں کے لیے ہاؤ ٹو کے ڈھیر لگ جائیں گے چند ہی دنوں میں۔
     
  5. الف نظامی

    الف نظامی لائبریرین

    مراسلے:
    17,546
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amused
    اسی ط ح کی حرکتوں سے لینکس صارفین میں اضافہ نہیں ہوتا۔
    لاتعداد ڈسٹروز ، ڈیسک ٹاپ انوائرنمنٹ ، آفس سافٹ وئیر ، ڈویلوپر ٹولز وغیرہ وغیرہ۔۔۔
    نتیجہ کیا نکلتا ہے کہ ایک بھی اطلاقیہ "چج" کا نہیں بن سکتا۔ آپ وژیول سٹوڈیو جیسا آئی ڈی ای ہی دکھا دئیں؟
    اگر محدود تعداد میں مثلا 5 یا 10 ڈسٹروز ہوں اور اسی طرح تمام زمروں کے اطلاقیوں کی تعداد زیادہ سے زیادہ 2 یا 3 ہو تو اس سے یہ فائدہ ہوگا کہ ڈویلوپر کمیونٹی منقسم ہونے کے بجائے مجتمع ہوگی اور معیاری اطلاقیے وجود پائیں گے اور صارفین کی تعداد بھی بڑھے گی۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  6. ابن سعید

    ابن سعید خادم

    مراسلے:
    60,174
    محترم آپ لینکس کو ونڈوز اور اوپن سورس کو کلوز سورس بنتے کیوں دیکھنا چاہتے ہیں؟ جیسا آپ کہہ رہے ہیں ویسا ہوا پھر تو فلسفہ ہی بدل جائے گا۔ وژول اسٹوڈیو بچوں کے لئے ہے پروگرامرس ای میکس اور وی آئی ایم استعمال کرتے ہیں۔ ویسے آپ کو گرافیکل انٹرفیس کے ساتھ ایک عدد آئی ڈی ای چاہئیے تو ایکلپس، نیٹ بینس، انجوتا، اپٹانا وغیرہ وغیرہ میں سے کوئی ایک یا کئی منتخب کر لیں۔ ڈریگ ڈراپ سہولت کے ساتھ ویب ڈیویلپمینٹ یا ڈیسکٹاپ ڈیویپلمینٹ کرنی ہو تو کیو ٹی ڈیزائنر، کوانٹا پلس، کمپوزر وغیرہ استعمال کر کے دیکھیں۔ :) میرے استعمال میں جی ایڈٹ اور ای میکس ہوتے ہیں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
  7. الف نظامی

    الف نظامی لائبریرین

    مراسلے:
    17,546
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amused
    ابن سعید آپ نے کیسے میری پوسٹ سے یہ اخذ کرلیا کہ لینکس کو کلوز سورس ہونا چاہیے ، یہ بات میں نے ہر گز نہیں کہی بلکہ یہ کہا ہے کہ ڈسڑوز کی تعداد محدود ہونی چاہیے تاکہ ڈویلوپر کمیونٹی منقسم ہونے کے بجائے مجتمع ہو اور معیاری اطلاقیے وجود پائیں۔ کیونکہ ڈسٹروز کی اتنی زیادہ تعداد ہونے کی وجہ سے ایک ہی کام مختلف ڈسٹروز میں دھرایا جارہا ہے-
    آئی ڈی ای بمقابلہ ای میکس / و ی آئی ایم والی بحث کا کوئی ایک نتیجہ نہیں نکلتا ۔ دونوں کے اپنے فوائد و نقصان ہیں۔ لینکس پر آئی ڈی ایز اور ای میکس / جی ایڈٹ / وی آئی ایم وغیرہ میرے استعمال میں رہتے ہیں لیکن لینکس کا کوئی آئی ڈی ای وژیول سٹوڈیو کے پائے کا نہیں۔
     
  8. ابن سعید

    ابن سعید خادم

    مراسلے:
    60,174
    ڈسٹروز، ایپلیکیشنز اور ایسی دوسری چیزوں پر قید لگا کر آپ اس فلسفے کے آزادی والے عنصر پر بٹہ لگا رہے ہیں۔ کام دہرائے نا جائیں اس کام کے لئے تو مختلف لائبریریاں اور ریپوزیٹریز وجود میں آئی ہیں۔ اور اس محدود تعداد کا تعین کون کرے جتنے میں کوالٹی کو برقرار رکھا جا سکے؟

    میں نے وژول اسٹوڈیو کبھی بھی استعمال نہیں کیا۔ اس لئے میں اس پر زیادہ کچھ رائے نہیں دے سکتا اور غالباً نیٹ بینس، ایکلپس، انجوتا وغیرہ سے موزنہ بھی نہ کر سکوں کیوں کہ مجھے یک طرفہ تجربہ ہے۔ ویسے لینکس کو ونڈوز کے ترازو میں تولنا ذاتی طور پر مجھے پسند نہیں۔ میرے لئے لینکس کا بنیادی مقصد ہے کمپیوٹنگ مسائل کا ممکنہ حد تک بہترین اور مفت حل جسے مین حاصل بھی کر سکوں اور ممکن ہو تو دوسروں کے مسائل کے حل کا سامان بھی بن سکوں۔ لہٰذا انھیں مسائل کو دوسرے پراپرائٹری ایپلیکیشنز میں کس خوبصورتی سے حل کیا گیا ہے اس بات کی پروا ذرا کم کرتا ہوں۔ میں نے خاص کر ایکلپس اور نیٹ بینس کا نام اس لئے لیا تھا کیوں کہ یہ دونوں ہی جنرل پرپز آئی ڈی ایز میں مخصوص مقام کے حامل ہیں۔ چھوٹی بڑی بے شمار پروگرامنگ انوائرنمینٹ کے لئے ان میں پلگ انس دستیاب ہیں۔ جی یو آئی ڈیزائننگ کے لئے گلیڈ، کیوٹی ڈیزائنر وغیرہ جیسے ٹولز موجود ہیں تو ہمیں کیا ضرورت پڑی ہے یہ جاننے کی کہ وژول اسٹوڈیو میں اس کام کے لئے کتنا فینسی اور ہینڈی نظم ہے۔

    ویسے ایسی کچھ خصوصیات تو بتائیں وژول اسٹوڈیو کی جو ہم دوسری آئی ڈی ایز میں مس کرتے ہیں۔ کئی چیزیں ایسی ہیں جن میں ایک ایپلیکیشن کے مقابلے دوسرے کو بہتر یا ایڈوانسڈ سمجھتا ہوں مثلا گمپ پر فوٹوشاپ کو، اوپن آفس پر ایم ایس آفس 2007+ کو اور جی ایڈٹ پر ایپل ٹیکسٹ میٹ کو۔ لیکن ان میں جو خوبصورتی یا سہولت ہے وہ اضافی نہیں ہے یا ایسی نہیں ہے جو ہم کسی طور مقابل سافٹوئیر میں نہ حاصل کر سکیں۔ عموماً سہل الاستعمال محض ہے۔ پھر ہم مفت کے ایپلیکیشنز میں اپنے سارے کام سوفسٹیکیٹیڈ طریقے سے کر پائیں یہی بہت بڑی بات ہے۔ اور بہتری تو وقت کا انعام ہمیشہ سے رہا ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  9. الف نظامی

    الف نظامی لائبریرین

    مراسلے:
    17,546
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amused
    لینکس کو ونڈوز کے ترازو میں تولنا یا ونڈوز کو لینکس کے ترازو میں تولنا مجھے بھی پسند نہیں۔ تقابل آئی ڈی ایز کے مابین ہے نہ کہ او ایسز کے درمیان۔
     
  10. ابن سعید

    ابن سعید خادم

    مراسلے:
    60,174
    خیر آپ نے یہ بات اب بھی نہیں بتائی کہ اس میں ایسے کون سے سرخاب کے پر لگے ہیں جو دوسرے آئی ڈی ایز میں عنقا ہیں؟
     
  11. arifkarim

    arifkarim معطل

    مراسلے:
    29,828
    جھنڈا:
    Norway
    موڈ:
    Happy
    لینکس آزاد مصدر اور حوصلہ مند پروگرامرز کے قیمتی وقت کا ثمر ہے۔ ونڈوز اور میک ملٹی بلین ڈالرز صنعت کاری نظام کا حاصل کُل ہے۔ ان دو انتہائی مختلف چیزوں کا تقابلی جائزہ بیکار ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1

اس صفحے کی تشہیر