آج کی تازہ بہ تازہ گرم خبریں

زیرک نے 'آج کی خبر' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جنوری 23, 2020

  1. زیرک

    زیرک محفلین

    مراسلے:
    4,555
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    لیکن وہ بچائیں گے نہیں،مریض کو اور لاغر کریں گے تاکہ اسے ذبح کرنے میں آسانی رہے۔انہیں پاکستان کو بچانے کی کوئی جلدی نہیں، اپنے صرف اپنے سرمائے کی بمع سود واپسی سے غرض ہے،مہنگائی کر کے ملک میں ایسا ماحول پیدا کیا جا رہا ہے کہ کل کلاں ملک کے طول و عرض میں فساد پھیلے،مہنگائی،بیروزگاری سے پیدا شدہ فسادکے بعد ہر اکائی دوسرے سے لڑانے کی کوشش کی جائے گی، جو بچےگا اسے بڑے گدھ کھائیں گے اور ملک بچانے کی جس ٹرافی کو ہم ڈھول بجا کر گلے میں ڈالے پھرتے ہیں، پھر عوضانے کے طور پر وہ بھی لے لیا جائے گا، اب بھی تو وہاں ان کے بندے ہی تعینات ہیں۔
     
    • متفق متفق × 1
  2. زیرک

    زیرک محفلین

    مراسلے:
    4,555
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    جیسے نوازشریف نے سی پیک کی شرائط نہیں پڑھیں یا پڑھ کر نظر انداز کر دیں، یہی کام سیانے خان نے بھی کیا ہے۔ جرم ایک ہو تو سزا بھی ایک ہو گی ناں۔
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  3. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    22,040
    جیسے چین نے پاکستان کو اپنے سی پیک منصوبہ کیلئے مجبور نہیں کیا تھا۔ ویسے ہی آئی ایم ایف اور دیگر مالیاتی ادارے پاکستان کو اپنی مرضی کے قرضوں کیلئے مجبور نہیں کر سکتے۔ پاکستان جب خود ہی معاشی دلدل میں گر کر، کشکول اٹھا کر سخت مجبوری میں ادھر ادھر بھاگتا ہے تو پھر یہ بڑے ادارے اور ممالک امداد کے نام پر آگے آتے ہیں۔ اگر پاکستان ان کی سخت شرائط پر عمل کرکے معیشت کو اپنے پیروں پر کھڑا کر لے تو سبحان اللہ۔ نہیں تو مستقبل میں مشکل پڑنے پر واپس انہی اداروں اور ممالک کے پاس لوٹ کر جانا مقدر میں لکھا ہے :)
     
  4. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    22,040
    آئی ایم ایف کی شرائط ملک کے مالی حالات دیکھ کر طے ہوتی ہیں۔ قرضہ دینے سے قبل سی پیک معاہدے دیکھنے کی شرط بھی اسی لئے رکھی تھی کیونکہ وہ پاکستان پر لادے گئے خساروں اور قرضوں کا مکمل بوجھ جاننا چاہتے تھے۔ جبکہ حکومت پاکستان سخت شرائط کے خوف اور چینی دباؤ کے تحت یہ شرط ماننے سے انکاری تھی۔ اور ۶ ارب ڈالر کا شارٹ فال کہیں اور سے پورا کرنا چاہتی تھی۔
    بہرحال اصل حکومت یعنی فوج نے آئی ایم ایف پر ہی انحصار کیا اور اس کے لئے ادارہ کی سخت ترین شرائط بھی قبول کر لی کیونکہ ان پر عمل درآمد کئے بغیر ملک کی معیشت کو مستحکم کرنا ممکن نہیں تھا۔
     
  5. زیرک

    زیرک محفلین

    مراسلے:
    4,555
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    اب تم مدعا فوج کے سر ڈال رہے ہو،خیر یہ تمہارے خیالات ہیں، جس دن عمران خان نے یہ بات کی پھر اس پر بحث کی جا سکتی ہے۔ فی الحال تو آئی ایم ایف سے کئے گئے تازہ ترین معائدے کا بوجھ عوام پر ڈالنے کی ذمہ دار حکومت ہے کیونکہ معائدہ حکومت کے مشیر خزانہ نے کیا ہے۔
     
    • متفق متفق × 1
  6. زیرک

    زیرک محفلین

    مراسلے:
    4,555
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    آئی ایم ایف بطور ایک فنانشل ادارے کے اپنا کام ٹھیک کر رہا ہے، مسئلہ ہماری سابقہ اور حالیہ حکومت کا ہے کہ وہ ملک کے ساتھ مخلص نہیں،ایسے معائدے کرتے ہیں جو ملکی معیشت کے لیے قاتل بن جاتے ہیں۔ سابقہ حکومتیں جس میں فوجی و سیاسی سبھی شامل ہیں وہ بھی مجرم ہیں اور موجودہ حکومت بھی۔ نااہلی میں سب کو پورے پورے نمبرملتے ہیں ذمہ دار بھی سبھی ہیں۔ جس نے زیادہ قرض لیا یا مشکل تر شرائط مانیں وہی سب سے زیادہ ذمہ دار ہے یہ حقیقت افسانے سنانے سے بدل نہیں جائے گی۔
     
    • متفق متفق × 1
  7. زیرک

    زیرک محفلین

    مراسلے:
    4,555
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    شاہد خاقان عباسی کا سیاسی انجنیئرنگ نیب کو ٹی وی پر براہِ راست مناظرے کا چیلنج
    شاہد خاقان عباسی کا کہنا ہے کہ "یہ شرمناک بات ہے کہ نیب نے ان کے خلاف عائد کردہ الزامات ثابت کرنے میں ناکامی کے بعد ایک مرتبہ پھر میڈیا میں میرے خلاف من گھڑت اور بے بنیاد الزامات پھیلانا شروع کر دیئے ہیں تاکہ انہیں اور ان کے اہل خانہ کو بدنام کیا جا سکے۔ بدقسمتی کی بات ہے کہ پاکستان میں ریاستی ادارے لوگوں کو پھنسانے کی جعلی کوششیں کر رہے ہیں اور کیسز بنا رہے ہیں۔ یہ واضح طور پر سیاسی انجینئرنگ کا اور ساکھ کو نقصان پہنچانے کا کیس ہے۔ میں چاہتا ہوں کہ نیب براہِ راست ٹی وی نشریات پر مجھ سے میرے مالی معاملات، اثاثوں، بینک ٹرانزیکشن، ٹیکس ادائیگیوں، آمدنی و اخراجات وغیرہ کے حوالے سے جو ان کے ذہن میں سوال آئے پوچھ سکتے ہیں۔ شرمناک بات ہے کہ نیب میرے خلاف عائد کردہ کرپشن کے الزامات ثابت کرنے میں ناکام ہونے کے بعد اب ایک مرتبہ پھر میڈیا میں من گھڑت الزامات پھیلا رہا ہے۔ یہ میری ساکھ کو مجروح کرنے کے لیے سیاسی انجینئرنگ کا واضح ثبوت ہے"۔ باقی تفصیل لنکس میں دیکھیئے
    اہلخانہ پر من گھڑت الزامات، شاہد خاقان عباسی کا نیب کو چیلنج
     
    آخری تدوین: ‏فروری 7, 2020
    • زبردست زبردست × 1
  8. زیرک

    زیرک محفلین

    مراسلے:
    4,555
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    ماہر معیشت اور سابق وزیر خزانہ ڈاکٹر حفیظ پاشا نے خبردار کیا ہے کہ "اس سال بارہ لاکھ افراد کے بیروزگار ہونے کا خدشہ ہے۔ اندازہ یہ ہے کہ پچھلے سال دس لاکھ افراد بیروزگار ہوئے، دو سال میں بائیس لاکھ افراد بیروزگار ہوجائیں گے۔ پچھلے سال جی ڈی پی کی شرحِ نمو غلط بتائی گئی، پچھلے سال جی ڈی پی کی شرحِ نمو%3.3 کی بجائے %1.9 تھی"۔ کہاں ایک کروڑ نوکریاں دینے کے جھوٹے وعدے اور کہاں حقیقت میں 12 لاکھ سالانہ کے حساب سے بیروزگار پیدا کرنے والا عمران خان۔
    اس سال 12 لاکھ افراد کے بیروزگار ہونے کا خدشہ ہے ، حفیظ پاشا
    خبر کے مطابق آئی ایم ایف کا وفد پاکستان میں بیل آؤٹ پیکج کی اگلی قسط جاری کرنے کے لیے جائزہ رپورٹ کی تیار کر رہا ہے۔ آئی ایم ایف نے250 ارب کے مزید ٹیکس لگانے کی تجویز دے دی، آئی ایم ایف نے کسٹم اور ریگولیٹری ڈیوٹی میں ریلیف دینے کی بھی مخالفت کر دی ہے، بجلی ٹیرف میں بھی 1روپے 20 پیسے فی یونٹ کے اضافے کی تجویز دی گئی ہے۔ اگر ایسا کیا گیا تو یقیناً اس سے مہنگائی کا سیلاب آئے گا جس سے عوام کی پریشانی اور مشکلات میں میں مزید اضافہ ہو جائے گا۔
    آئی ایم ایف نے250 ارب کے مزید ٹیکس لگانے کی تجویز دے دی آئی ایم ایف نے کسٹم اور ریگولیٹری ڈیوٹی میں ریلیف دینے کی بھی مخالفت کردی ہے،بجلی ٹیرف میں بھی 1روپے20 پیسے اضافے کی تجویز دی ہے۔ ذرائع
     
    • غمناک غمناک × 1
  9. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    22,040
    ظاہر ہے اپنے نام پر لئے گئے قرضوں کا بوجھ عام عوام نے ہی اٹھانا ہے حکومت نے نہیں۔
     
  10. زیرک

    زیرک محفلین

    مراسلے:
    4,555
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    واہ کیا توجیع پیش کی ہے کرے کوئی تے بھرے کوئی، کرے نااہل اور بھرے عوام۔
    اے میرے مالک کیا یہی گدھے ہمارے مقدر میں لکھے گئے تھے۔ تجھے کوئی اور نہیں ملا تھا کوئی؟
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  11. زیرک

    زیرک محفلین

    مراسلے:
    4,555
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    احسان اللہ احسان کے مبینہ فرار پر لواحقین کی جانب سے توہین عدالت کی درخواست دائر
    سانحہ اے پی ایس پشاور کے ماسٹر مائنڈ احسان اللہ احسان کے مبینہطور پرملک سے فرار کے خلاف درخواست دائر کردیگئی ہے۔ درخواست 16 دسمبر 2014 کو پشاور کے آرمی پبلک اسکول میں ہلاک ہونے والے 133 بچوں کے والدین کی تنظیم کی جانب سے دائر کی گئی ہے۔ درخواست اے پی ایس شہید صاحبزادہ عمر خان کے والد فضل خان ایڈووکیٹ نے احسان اللہ احسان کے ملک سے مبینہ فرار کے واقعے کے بعد پشاور ہائی کورٹ میں درخواست میں مؤقف اختیار کیا ہے کہ "پشاور ہائی کورٹ نے اپنے 13 دسمبر 2017 کے حکم نامے میں وفاقی حکومت کو پابند کیا تھا کہ نہ تو احسان اللہ احسان کو رہا کیا جائے اور نہ ہی انہیں عام معافی دی جائے۔ سوشل میڈیا کے ذریعے علم ہوا کہ احسان اللہ احسان سیکیورٹی اداروں کی تحویل سے فرار ہونے میں کامیاب ہو گیا ہے، لہٰذا عدالت وفاقی حکومت سے اس بابت وضاحت طلب کرے۔ یوں لگتا ہے کہ احسان اللہ احسان کو منظم منصوبہ بندی کے تحت فرار ہونے کا موقع دیا گیا ہے"۔
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  12. زیرک

    زیرک محفلین

    مراسلے:
    4,555
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    سپریم کورٹ نے انٹرنیٹ کالز پر فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی لینے سے روک دیا
    پاکستان میں واٹس ایپ اور سکائپ پر بھی ٹیکس لگانے کی کوشش سپریم کورٹ آف پاکستان نے ناکام بنا دی۔ خبر کے مطابق سپریم کورٹ آف پاکستان نے حکومت کو انٹرنیٹ کمپنیوں سے فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی وصول کرنے سے روک دیا ہے۔ سپریم کورٹ نے نجی کمپنیوں سے ٹیکس وصولی کے لیے دائر ایف بی آر کی اپیل خارج کر دی۔ عدالت نے پانچ صفحوں پر مشتمل فیصلے میں کہا کہ "واٹس ایپ، اسکائپ اور دیگر سروسز کمیونیکیشن کے زمرے میں نہیں آتیں۔ واٹس ایپ اور دیگر کمپنیاں صارفین سے کوئی ٹیکس وصول نہیں کرتی۔ انٹرنیٹ صارفین کی مرضی ہے براؤزنگ کریں یا آڈیو کالز، انٹرنیٹ کالز پر ٹیلی کمیونیکیشن سروس کی مد میں ٹیکس نہیں لیا جا سکتا۔ انٹرنیٹ کمپنیاں صرف سروس چارجز لیتی ہیں، واٹس ایپ و دیگر کال کے چارجز نہیں۔ انٹرنیٹ کمپنیاں اضافی وصول نہیں کرتیں تو ٹیکس کیسے لیا جا سکتا ہے"۔ ہممانتے ہیں کہ مشکل معاشی حالات ہیں لیکن صرف عوام کا پیٹ مت کاٹیں خواص کی طرف توجہ دیں، ان کے پیٹوں سے نکلوائیں، عوام مزید قربانی نہیں دے سکتی۔ اگر حکومت نے اس معاملے پر بھی ہر ہٹ دھرمی دکھائی تو یاد رکھیں چند ماہ قبل لبنان میں کیا ہوا تھا؟۔ لبنان میں واٹس ایپ پر ٹیکس لگانے کے بعد عوام کی جانب سے حکومت مخالف مظاہروں میں شدت آ گئی تھی جس کے بعد لبنانی وزیراعظم سعد حریری کو استعفیٰ دینا پڑ گیا تھا۔ اس لیے حکومت عوام کو چچوڑنا بند کر کے مگر مچھ مافیا سے اپنا حصہ وصول کرے۔
     
    • زبردست زبردست × 1
  13. زیرک

    زیرک محفلین

    مراسلے:
    4,555
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    لگتا ہے تبدیلی کا کیڑا مرتا جا رہا ہے
    آج کل حکومت کے حامی سامجھے جانے والے صابر شاکر نے انکشاف کیا ہے کہ وزیراعظم عمران خان نے عندیہ دیا ہے کہ "اگر میں اپنے منشور پر عمل نہ کرا سکا، اور سیاسی بلیک میلنگ چلتی رہی، تو پھر بہتر یہی ہے کہ میں نیا الیکشن کروا دوں، الیکشن میں اگر لوگ مجھے پسند کریں گے تو ووٹ بھی دیں گے، ورنہ کسی اور کو لے آئیں گے، لیکن اب میں کسی بات پر کمپرومائز نہیں کروں گا"۔ باقی تفصیل لنک میں ملاحظہ کیجئے۔
    اگر سیاسی بلیک میلنگ چلتی رہی تو نیا الیکشن کروا دوں گا، عمران خان الیکشن میں اگرلوگ مجھے پسند کریں گے تو ووٹ بھی دیں گے، ورنہ کسی اور کو لے آئیں گے، لیکن اب میں کسی بات پر کمپرومائز نہیں کروں گا، وزیراعظم عمران خان کے سیاسی لائحہ عمل سے متعلق سینئر صحافی صابر شاکر کا انکشاف
     
    • زبردست زبردست × 1
  14. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    22,040
    حکومت عوام کے ٹیکس پر چلتی ہے۔ انہی کے نام پر قرضے لیتی ہے، خزانہ جمع کرتی ہے یا خالی کرتی ہے۔ اور پھر ووٹ بھی عوام سے ہی مانگنے جاتی ہے۔
     
  15. زیرک

    زیرک محفلین

    مراسلے:
    4,555
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    عوام میں اپر کلاس بھی ہوتی ہے، اس پہ ہاتھ ڈالتے موت پڑتی ہے؟ ملک بچانا ہے تو اس پہ ہاتھ ڈالنا ہو گا۔
     
    • متفق متفق × 1
  16. زیرک

    زیرک محفلین

    مراسلے:
    4,555
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    اندھیر نگری اور چوپٹ راج
    جہاں تک مہنگائی کا تعلق ہے حکومتی آشیر باد کے ساتھ ساتھ منافع خور مافیا بھی رج کر بے ایمانی کی تمام حدیں کراس کر رہا ہے۔ مہنگائی کے کچھ اسباب حکومتی ہیں جیسے ریونیو میں اضافہ کرنا، جو ایک حد میں ہوتا تو چل بھی سکتاتھا لیکن حکومت نے تو تمام حدیں کراس کر لی ہیں۔ یہ تو تھے وہ اثرات جو براہِراست حکومت کی جانب سے عائد کیے گئے ہیں۔ لیکن تاجروں کی طرف سے مہنگائی کو روکنا حکومتی اداروں کا کام ہوتاہے۔ لیکن اللہ معاف کرے کہ جب حکومتی کارندے بڑے ایوانوں میں جاتے ہیں تو عوام سے دور ہو جاتے ہیں، اور انہیں بنیادی عوامی مسائل کا ادراک نہیں رہتا یا وہ جان بوجھ کر ان سے آنکھ چرا لیتے ہیں اور یہی موجودہ حکومت کر رہی ہے کہ ایک تو حکومت کی جانب سے ریونیو بڑھانے کے لیے مہنگائی کرنے کی اجازت دی گئی ہے، اس کے ساتھ ساتھ اپنے پیاروں کو کھل کھیلنے کی بھی کھلی چھوٹ دی گئی ہے اور سب سے غلط کام یہ ہو رہا ہے کہ رِٹ آف گورنمنٹ کہیں دکھائی نہیں دیتی جس کی وجہ سے تاجر طبقے نے بھی اندھیر نگری مچائی ہوئی ہے۔ ملک اس وقت اندھیر نگری اور چوپٹ راج کی تصویر بنا ہوا ہے
     
    • متفق متفق × 1
  17. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    22,040
    اسحاق ڈار ایلیٹ کلاس سے تعلق رکھتا ہے۔ اس کا پوش ترین علاقہ میں گھر پناہ گاہ بنا دیا گیا۔ ابھی تو صرف شروعات ہیں۔
     
  18. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    22,040
    مہنگائی اگلے سال سے پہلے نیچے آتی دکھائی نہیں دے رہی۔
     
  19. زیرک

    زیرک محفلین

    مراسلے:
    4,555
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    ایسا ہر کرپٹ کے ساتھ ہونا چاہیے اور ایک ساتھ ہونا چاہیے، اس کی شروعات حکومت میں شامل کرپٹ مافیا سے شروع ہو تو میں حکومت کے ساتھ ہوں، اس کے بعد رائے ونڈ کی طرف بھی جانا۔ کسی اکیلے مفرور کے خلاف اسے انتقامی کاروائی کے طور پر دیکھا جائے گا۔ مفرور جس کا شاید پورا گھرانہ اس ملک میں موجود نہیں ہے۔ اس پراپرٹی کا کیس چل رہا ہے، عدالت نے اس گھر کو بیچنے پر پابندی لگائی ہے۔ اب اس گھر میں پناہ گاہ بنا کر عدالت کا مذاق اڑانے کا جس نے مشورہ دیا ہے اس کا تو کچھ نہیں جانا لیکن حکومت کو آگے چل کر بھگتنا پڑے گا۔ عدالت کچھ نہ بھی کرے تو ایسے اقدامات سے انتقام کی بو ہی آئے گی۔
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  20. زیرک

    زیرک محفلین

    مراسلے:
    4,555
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    تم اگلے سال 2021 کی بات کرتے ہو، جس رفتار اور جس تناسب سے بیروزگاری بڑھ رہی ہے، مجھے تو یہ 2022 کے آخر تک بھی جاتی نظر نہیں آتی۔ آخری سال 2023 میں شاید بجلی گیس اور مہنگائی میں کمی کی جائے کیونکہ ووٹ بھی تو لینے ہوں گے ناں۔ لیکن ایسا تبھی ممکن ہے کہ عوام نے انہیں وقت دیا تو، مجھے تو مزید 3 ماہ بعد عوام باہر نکلتی نظر آ رہی ہے، اگلے بجٹ کے بعد معاملہ مزید گرم ہو گا کیونکہ اگلے بجٹ میں 6800 ارب روپے کا ٹیکس ٹارگٹ رکھا گیا ہے۔ عوام کو بس کسی ایسے موقعے کا انتظار ہے شاید فضل الرحمان یا شہباز شریف یا کوئی اور بھی ہو سکتا ہے، ایک بار ایسا ہوا تو عوام یہ بھول کر کہ کس نے کیا کیا تھا صرف مہنگائی کے خلاف باہر نکلے گی، پھر معاملہ مشکل ہو جائے گا
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1

اس صفحے کی تشہیر