1. اردو محفل سالگرہ پانزدہم

    اردو محفل کی یوم تاسیس کی پندرہویں سالگرہ کے موقع پر تمام اردو طبقہ و محفلین کو دلی مبارکباد!

    اعلان ختم کریں

آج کی تازہ بہ تازہ گرم خبریں

زیرک نے 'آج کی خبر' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جنوری 23, 2020

  1. زیرک

    زیرک محفلین

    مراسلے:
    4,555
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    حقائق درست کر لو، یہ جہاد امریکا نے شروع کروایا تھا، ہم تو ویسے ہی شامل باجے بن جاتے ہیں امریکا کے، لیکن یہ کہنے کا حوصلہ کون لائے۔
    طالبان نے خود افغانستان کا محاذفتح کیا تھا، ہم نے مدد ضرور کی لیکن عملی جہاد میں کسی نے حصہ نہیں لیا، سب کا سب پاکستان کے سر مت ڈالو، ڈالنے والا طاقتور ہو تو اس کا نام کوئی نہیں لیتا۔
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  2. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    21,501
    پاکستانی ایجنسیوں کے تعاون کے بغیر افغان طالبان کابل کے قریب بھی نہیں پھٹک سکتے تھے۔ اسے فتح کرنا تو بہت دور کی بات ہے۔
     
  3. زیرک

    زیرک محفلین

    مراسلے:
    4,555
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    انٹیلی جنسیا کی بات اور ہے انہوں نے ضرور خدمات انجام دی ہیں، اس کے علاوہ جو کچھ کیا وہ کرائے کے لوگوں نے ہی کیاہے۔
     
    • متفق متفق × 1
  4. زیرک

    زیرک محفلین

    مراسلے:
    4,555
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    چول کی چول نہ چلی لیکن عوام کی جان ضرور چلی گئی
    وفاقی وزیر برائے بحری امور علی زیدی کے بقول جو زہریلی گیس زمین سے نکلی تھی، اس کا منبع کراچی کی بندرگاہ پر کھڑا جہاز نکلا جس میں میں لدی سویابین کی ڈسٹ مبینہ طور پر تیز ہوا کے سبب اڑ کر قرب و جوار میں عوام کو متاثر کر رہی تھی۔ کوئی زیدی سے پوچھے کہ وہ کیا چھپا رہا تھا؟ اور کیوں چھپا رہا تھا، اس کی ذمہ داری کسی اور پر کیوں ڈال رہا تھا؟ تو یقین مانیں کہ اس کا جواب آئین بائیں شائیں ہی نکلے گا۔ بندہ چول مارے تو کسی کلاس کی ہو، لیکن وزیر موصوف نے چول ماری بھی وہ جو 24 گھنٹے نہ چل سکی۔ چول کی چول نہ چلی لیکن عوام کی جان ضرور چلی گئی، افسوس ہوتا ہے کہ کیسے کیسے چھوٹے ذہن کے لوگ اتنے بڑے عہدوں پر بٹھا دئیے جاتے ہیں کہ جن کے وہ لائق نہیں ہوتے۔ خبر کے مطابق پولیس ذرائع نے تصدیق کی ہے کہ "کیماڑی میں اب تک 14 شہریوں کی موت کا سبب بننے والی ہوا میں آلودگی کراچی بندرگاہ پر بحری جہاز سے سویابین کی آف لوڈنگ سے پیدا ہو رہی تھی اور یہ اپلوڈنگ اب رکوا دی گئی ہے۔ جہاز سے سویابین اتارنے کے دوران غیر معمولی ڈسٹ ہوا کے ذریعے قریبی آبادی کو متاثر کر رہی تھی، شام کو ہوا چلنے اور رخ آبادی کی طرف ہونے کی وجہ سے لوگ متاثر ہو رہے تھے۔ سویابین کی آف لوڈنگ روکنے سے آج شام علاقے کی مانیٹرنگ ہوگی، آج شام ہوا میں آلودگی رک گئی تو ذمہ داری سویابین کے بحری جہاز پر عائد ہوسکتی ہے۔ بحری جہاز سے سویابین کے بھی نمونے لئے گئے ہیں، رپورٹ آج ملنے کا امکان ہے۔ علاقے سے لیے گئے سیمپل اور متاثرین کے خون کے نمونوں سے موازنہ کیا جائے گا"۔
    باقی تفصیل اس خبر میں ملاحظہ کیجیئے
    کیماڑی، بحری جہاز سے سویابین کی آف لوڈنگ رکوادی گئی
    کراچی کے علاقے کیماڑی میں زہریلی گیس سے پچھلے 48 گھنٹوں میں اموات کی تعداد 14 ہو گئی ہے۔
    کیماڑی: زہریلی گیس نے 14 افراد کی جان لے لی
     
    آخری تدوین: ‏فروری 18, 2020
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  5. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    21,501
    زیدی بھی انسان ہے کوئی خدا نہیں جو فورا بتا دیتا کہ زہریلی گیس کا اخراج کہاں سے ہو رہا تھا۔ بندرگاہ پر روزانہ امپورٹ ایکسپورٹ کے لئے جہاز آتے جاتے رہتے ہیں جس میں کئی ہا اقسام کا مال ہوتا ہے۔ جب تک طبی طور پر کنفرم نہ جائے کہ گیس کا منبع کیا ہے تب تک اس بارہ میں کچھ بھی کہنا یا متعلقہ وزارت پر کیچڑ اچھالنا غیر فطری رویہ ہے۔
     
  6. زیرک

    زیرک محفلین

    مراسلے:
    4,555
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    تو بہتر تھا یہ کہتا تحقیقات کے بعد بتایا جائے گا، چول مارنے کی کیا ضرورت تھے، لیکن ضرورت کی سمجھ آ گئی کیونکہ سویابین والا شپ امریکی تھا، اب وڈی سرکار کو بچانا بنتا تھا ناں۔
    خبر کے مطابق "محکمہ صحت سندھ نے کیماڑی کے رہائشیوں کے متاثر ہونے کی وجہ سویابین کی ڈسٹ کو قرار دے دیا ہے"۔ رپورٹ کے مطابق سویابین کی گرد استھما/دمے اور سانس کی بیماری میں مبتلا افراد کے لیے بہت زیادہ نقصان دہ ہے۔" شہری صفائی ستھرائی کا خاص خیال رکھیں اور ماسک پہن کر گھر سے باہر نکلیں"۔
    کیماڑی کراچی میں سویابین کی ڈسٹ کے اخراج سے 14افراد ہلاک ہو چکے ہیں اور سینکڑوں افراد ہسپتالوں میں داخل ہیں.مجھے حیرانگی ہو رہی ہے وفاقی وزیر علی زیدی یہ کیسے کہہ سکتے ہیں کہ "سب نارمل ہے"۔ انسان ہمدردی کے دو اچھے بول کر مرنے والوں کے لواحقین کا دکھ نہیں بٹا سکتا تو چول مارنے کی بجائے اسے خاموش رہنا چاہیے۔
    ہلاکتوں کی وجہ سویابین ڈسٹ ہے، محکمہ صحت سندھ
     
  7. زیرک

    زیرک محفلین

    مراسلے:
    4,555
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    قاضی فائز عیسیٰ کیس تبدیلی سرکار کے گلے میں پھنسی ہڈی
    انور منصور خان نےسپریم کورٹ بینچ پر الزام لگایا تها کہ "جسٹس فائز عیسیٰ کا کیس ان ججز نے خود تیار کیا ہے"،ججز نے ثبوت مانگا، موصوف اپنی بات کے حق میں کوئی ثبوت نہ دے سکے لہٰذا استعفیٰ کا طوق گلے میں ڈال کر "بہت بے آبرو ہو کر تبدیلی سرکار کے گھر یہ صنم نکلے"۔ حکومت چاہے کہتی رہے کہ یہ الزام سابق اٹارنی جنرل انور منصور خان نے ذاتی حیثیت میں لگایا ہے لیکن حکومت کا سب سے بڑے قانونی عہدے دار جو بات بھی کہتا ہے وہ اس کے ذاتی خیالات نہیں ہوا کرتے بلکہ حکومت کا جواب متصور ہوتا ہے اس لیے جس تبدیلی سرکار نے یہ سب کیا کروایا ہے، وہ کیسے بری الذمہ ہو سکتی ہے؟ کوئی مانے یا نہ مانے لیکن لگتا یہی ہے کہ جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کیس تبدیلی سرکار کے گلے میں پھنسی ہڈی کی طرح اٹک کر رہ گیا ہے اور فوری طور پر اٹارنی جنرل کو عہدے سے ہٹا کر وقت مستعار لیا گیا ہےتا کہ اس پر کسی طریقے سے مٹی ڈالی جا سکے۔ یہاں یہ سوال پیدا ہوتا ہے کہ کیا حکومت اس کیس پر مٹی ڈالنے میں کامیاب ہو سکے گی؟جو کہ بظاہر بہت مشکل کام لگتا ہے۔
    حکومت کو قاضی فائز عیسیٰ کے خلاف ریفرنس واپس لے کر عزت بچانی چاہئیے انور منصور نے الزام لگایا کہ جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کا جواب تیار کرنے میں سپریم کورٹ کے کچھ ججوں نے انکی مدد کی،الزام کا ثبوت پیش نہ کر سکے،یہ ریفرنس اب مذاق بن چکا ہے۔ حامد میر
     
    آخری تدوین: ‏فروری 20, 2020
    • غمناک غمناک × 1
  8. زیرک

    زیرک محفلین

    مراسلے:
    4,555
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    عمران خان کی سوشل میڈیا پر کنٹرول کی خواہش، ماضی و حال کے بیانات
    عمران خان کے ماضی کے خیالات اور آج کا موازنہ کریں تو مجھے کہنےکی کوئی ضرورت نہیں کہ اسے اپنا نام بدل کر یو ٹرن خان رکھ لینا چاہیے۔ مہاتما اپوزیشن میں رہتے ہوئے فرماتے تھے "اس سے بڑا کوئی بے وقوف ہو ہی نہیں سکتا کہ آج کل کے زمانے میں کوئی سوشل میڈیا کو کنٹرول کر سکے"، باقی ماضی و حال کے بیانات سنیں اور سر دھنیں۔
     
    • متفق متفق × 1
  9. عباس اعوان

    عباس اعوان محفلین

    مراسلے:
    2,381
    جھنڈا:
    Germany
    موڈ:
    Cool
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  10. فاخر رضا

    فاخر رضا محفلین

    مراسلے:
    3,020
    سلام
    بھائی اس میں بہت ساری میڈیکل اور سیاسی و معاشرتی معاملات ہیں.
    عام عوام کے لئے بچنا ممکن نہیں ہے. انہیں تو یہ لگ ہی جائے گا. چودہ دن تک ایک ایسا شخص جو ظاہراً بیمار نہیں ہے وہ بھی یہ جرثومہ لے کر پھر سکتا ہے. صرف ایک دو دن کھانسی بخار اور پھر ٹھیک. ایسے میں پتہ نہیں کتنوں کو لگا دے گا.
    ڈاکٹرز کا بچنا بھی بہت مشکل ہے.
    جوان صحتمند لوگوں کو اس سے ڈرنے کی ضرورت نہیں ہے. یہ سارے ٹھیک ہوجاتے ہیں. یعنی ایک ہزار میں چار شدید بیمار یا موت کا شکار ہوتے ہیں. جبکہ بوڑھے اور low immunity والے زیادہ مسائل کا شکار ہوتے ہیں
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  11. فاخر رضا

    فاخر رضا محفلین

    مراسلے:
    3,020
    ماسک کا فائدہ شاید یہ ہو کہ ایک بیمار پہن لے تاکہ اس کے منہ سے جراثیم دوسروں کو نہ لگیں. باقی کوئی فائدہ سمجھ نہیں آتا
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • متفق متفق × 1
  12. عباس اعوان

    عباس اعوان محفلین

    مراسلے:
    2,381
    جھنڈا:
    Germany
    موڈ:
    Cool
    ایک شخص جو عوامی مقامات پر جاتا ہے، یا پبلک ٹرانسپورٹ پر سفر کرتا ہے، اس کو ماسک پہننے سے فائدہ نہیں ہو گا؟ کہ وہ ان لوگوں سے بھی بچ جائے جو انکیوبیشن فیز میں ہیں۔
     
    • متفق متفق × 1
  13. فاخر رضا

    فاخر رضا محفلین

    مراسلے:
    3,020
    جی ہاں
    مگر علامات ظاہر ہونے سے پہلے infectivity low ہوتی ہے
    دوسرے آپ کتنے کروڑ ماسک روزانہ بنائیں گے. ماسک زیادہ سے زیادہ چوبیس گھنٹے چلتا ہے
     
    • متفق متفق × 1
  14. عباس اعوان

    عباس اعوان محفلین

    مراسلے:
    2,381
    جھنڈا:
    Germany
    موڈ:
    Cool
    درست، یہ ایک اِشو ہے۔
    لیکن مجھے حیرانی اس بات پر تھی کہ یوں کہا جا رہا تھا کہ ماسک پہنے سے کوئی فائدہ نہیں ہوتا۔
     
    • متفق متفق × 1
  15. فاخر رضا

    فاخر رضا محفلین

    مراسلے:
    3,020
    میں نے فورم پر اس سے متعلق لکھا ہے وہ یہاں بھی شیئر کررہا ہوں
    السلام علیکم
    ابھی تک کراچی میں صورتحال قابو میں ہے. اس مرض سے گھبرانے کی ضرورت نہیں ہے. احتیاطی تدابیر کی ضرورت ہے
    ذیل میں میرے مشورے ہیں جنہیں آپ اور دیگر علمائے کرام غوروفکر اور مشورے کے بعد ایک اعلامیے کے طور پر بڑھا سکتے ہیں. ظاہر سی بات ہے کہ اس معاملے میں اگر کوئی فقہی پہلو نکلتا ہے تو میں اسکا ماہر نہیں ہوں.
    بوڑھے اور کمزور یا پہلے سے بیمار افراد اور وہ جو قوت مدافعت کم رکھتے ہیں جیسا کہ شوگر کے مریض، ڈائلسس اور ٹرانسپلانٹ کے مریض یہ ہر صورت احتیاط کریں. یعنی کسی ایسی جگہ یا مجمع میں جانے سے پرہیز کریں جہاں کورونا وائرس کا خطرہ موجود ہو.
    وہ افراد جو کسی ایسے ملک سے تشریف لائے ہیں جہاں کورونا وائرس پھیل چکا ہے جیسا کہ چین اٹلی کوریا ایران وغیرہ یہ افراد چودہ دن اپنے گھر پر رہیں اور الگ کمرے میں رہیں. اگر کھانسی، بخار، سانس میں دشواری ہو تو فوراً سول اسپتال میں موجود سیل سے رابطہ کریں یعنی وہاں جاکر چیک اپ کرائیں.
    مذہبی اجتماعات کے حوالے سے ابھی تک کوئی وارننگ سامنے نہیں آئی ہے لہٰذا اس میں احتیاط کی ضرورت نہیں ہے. ہاں یہ ضرور ہوسکتا ہے کہ آنے والے افراد کا تھرمل ڈیٹیکٹر سے چیک اپ کیا جائے اور بیمار افراد کو مجمع میں نہ جانے دیا جائے
    اجتماعات کے اشتہار میں یہ لکھا جاسکتا ہے کہ فلاں فلاں علاماتِ والے افراد گھر پر بیٹھ کر درس یا خطاب سن لیں
    سندھ گورنمنٹ کے اعلانات ماہرین کی رائے کی روشنی میں ہی دیئے جارہے ہیں لہذا ان پر شک نہ کیا جائے اور ان پر عمل کیا جائے
    میرے خیال میں رمضان المبارک تک یہ مسئلہ حل ہو جائے گا جب زیادہ گرمی پڑے گی. یعنی اگلے 45 دن میں
    میں نہیں سمجھتا (جیسا کہ ماہرین نے بھی کہا ہے) کہ ہر شخص ماسک پہننا شروع کردے. اسکا فائدہ صرف منافہ خوروں کو ہوگا. جہاں ضرورت ہے وہاں ماسک پہنا جائے.
    کورونا کے حوالے سے کراچی کے حالات سے میں باخبر ہوں. یہاں صورتحال ابھی قابو میں ہے

    ابھی جنگ نہیں ہو رہی مگر جنگ کی تیاری تو اِسی وقت کرنی ہے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • زبردست زبردست × 1

اس صفحے کی تشہیر