آب کب آگ میں بدلتا ہے

میاں وقاص نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏دسمبر 19, 2015

  1. میاں وقاص

    میاں وقاص محفلین

    مراسلے:
    102
    موڈ:
    Relaxed
    آب کب آگ میں بدلتا ہے
    اشک آنکھوں سے جب نکلتا ہے

    عشق شاید اسی کو کہتے ہیں
    آنکھ دیکھے تو دل مچلتا ہے

    دیکھیے تو زمیں کی بے چینی
    جب بھی گرتا ہوا سنبھالتا ہے

    میں ہوں سورج کا پیش رو صاحب
    وہ تو سایے کے ساتھ چلتا ہے

    اشک دامن بھگو گئے تو کیا
    گھر کبھی پانیوں میں جلتا ہے؟

    ابر چھٹنے سے کچھ سکوں آے
    دل دلاسوں سے کب بہلتا ہے

    جس کی کوئی نہ ہو شنیدن، وہ
    راز دیوار کو اگلتا ہے

    مجھ کو پیچھے ہی چھوڑ جاتا ہے
    وقت یوں تیز تیزچلتا ہے

    لوگ ایسا کبھی نہیں کرتے
    یہ برا وقت ہے، جو ٹلتا ہے

    اب خزاں تو نہیں میاں شاہیں
    کون پھولوں کو آ مسلتا ہے

    حافظ اقبال شاہیں
     
    • زبردست زبردست × 1
  2. ساگر

    ساگر محفلین

    مراسلے:
    68
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    بہت خوب
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  3. میاں وقاص

    میاں وقاص محفلین

    مراسلے:
    102
    موڈ:
    Relaxed
    شکریہ جناب الفت
     

اس صفحے کی تشہیر