Recent content by زبیر صدیقی

  1. زبیر صدیقی

    طبع زاد اشعار کی بیت بازی

    گماں ہو تم، کہ یقیں؟ یہ کھلے گا کیسے؟ کب؟ ہو آسماں یا زمیں؟ یہ کھُلے گا کیسے؟ کب؟
  2. زبیر صدیقی

    طبع زاد اشعار کی بیت بازی

    نئے زاویے یہاں اور نئے خیال کے لوگ گزر رہے ہیں وہاں سے جہاں ٹہرنا تھا سفر عجیب سا کرتے رہے کمال کے لوگ
  3. زبیر صدیقی

    طبع زاد اشعار کی بیت بازی

    خوب خیال ہے، اگر آپ برا نہ مانیں ان کے انکار کی شدت یہ بتاتی ہے ہمیں یہی انکار بہت جلد بنے گا اقرار
  4. زبیر صدیقی

    طبع زاد اشعار کی بیت بازی

    یک رنگی ہوئی ہر چیز یہاں اب چلو زخم ہرے کرتے ہیں
  5. زبیر صدیقی

    طبع زاد اشعار کی بیت بازی

    ڑ کی ضرب لگا دی اب آپ نے بات ہی مُکا دی اب
  6. زبیر صدیقی

    طبع زاد اشعار کی بیت بازی

    فائدہ کیا ہے شعر کہنے میں بات جب کچھ نہیں ہو کہنے کو
  7. زبیر صدیقی

    طبع زاد اشعار کی بیت بازی

    اصحاب کوشش کر کے کچھ مختلف حروف پہ شعر ختم کریں۔ ورنہ ن اور یے تو مار ڈالیں گے
  8. زبیر صدیقی

    طبع زاد اشعار کی بیت بازی

    آپ کا حسنِ نظر ہے۔ یوں رہا ضعف سر تا پا ہم کو جانے کس طور سہہ گئے غم کو
  9. زبیر صدیقی

    طبع زاد اشعار کی بیت بازی

    آپ کا حسنِ نظر ہے۔
  10. زبیر صدیقی

    طبع زاد اشعار کی بیت بازی

    یا مان لے ، ہے تیرے بدن میں مری مہک نگاہ کو مری کوئی ہنر نہیں آتا سبھی جو دیکھ لیں وہ بھی نظر نہیں آتا
  11. زبیر صدیقی

    طبع زاد اشعار کی بیت بازی

    نہیں نہیں نہیں نہیں کبھی نہیں کبھی نہیں ازراہِ مذاق ہے۔
  12. زبیر صدیقی

    طبع زاد اشعار کی بیت بازی

    مجھے شاعر سمجھ بیٹھے یہاں سب غلط محفل میں بلوایا گیا ہوں
  13. زبیر صدیقی

    طبع زاد اشعار کی بیت بازی

    باری میری یہاں آتی ہی نہیں ہے یہاں حال تری محفل سا
  14. زبیر صدیقی

    طبع زاد اشعار کی بیت بازی

    خوش نوائی کی شرط ہے؛ یعنی اہتمام ہے مری خموشی کا 😊
  15. زبیر صدیقی

    محفل کے جِن بھوت

    آپ سب کے خلوص اور محبت کا شکریہ
Top