تنزیل بٹ
آخری سرگرمی:
‏اپریل 8, 2021 7:51 صبح
رکنیت:
‏جمعرات
مراسلے:
0
نمبرات:
0
محصول مثبت درجہ بندیاں:
1
محصول نیوٹرل درجہ بندیاں:
0
محصول منفی درجہ بندیاں:
0

مراسلہ ریٹنگ

محصول: عطا کردہ:
پسندیدہ 1 0
زبردست 0 0
معلوماتی 0 0
دوستانہ 0 0
پر مزاح 0 0
متفق 0 0
غیر متفق 0 0
غمناک 0 0
ناقص املا 0 0
مضحکہ خیز 0 0
نا پسندیدہ 0 0
یوم پیدائش:
‏دسمبر 25, 1988 (عمر: 32)
مقام سکونت:
نیلم ویلی آزاد کشمیر لیسواہ
پیشہ:
کاروبار

اس صفحے کی تشہیر

تنزیل بٹ

محفلین, 32, از نیلم ویلی آزاد کشمیر لیسواہ

بڑے بھائی خلیق الزمان بٹ شہید کی جدائی پر۔۔۔۔ زندہ کیسے رہوں بتا مجھ کو راہ جینے کی، آ دکھا مجھ کو کون پوچھے گا حال تحریر تنزیل بٹ ‏اپریل 8, 2021 7:54 صبح

تنزیل بٹ کو آخری دفعہ پایا گیا:
‏اپریل 8, 2021 7:51 صبح
    1. تنزیل بٹ
      تنزیل بٹ
      بڑے بھائی خلیق الزمان بٹ شہید کی جدائی پر۔۔۔۔ زندہ کیسے رہوں بتا مجھ کو راہ جینے کی، آ دکھا مجھ کو کون پوچھے گا حال تحریر تنزیل بٹ
    2. تنزیل بٹ
      تنزیل بٹ
      میرے بڑے بھائی جناب خلیق الزمان بٹ صاحب وفات پا گئے ہیں ان کے لیے دعا مغفرت کی درخواست ھے
      1. ہانیہ نے اسے پسند کیا۔
  • لوڈ ہو رہا ہے...
  • لوڈ ہو رہا ہے...
  • تعارف

    یوم پیدائش:
    ‏دسمبر 25, 1988 (عمر: 32)
    مقام سکونت:
    نیلم ویلی آزاد کشمیر لیسواہ
    پیشہ:
    کاروبار
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shocked
    بڑے بھائی خلیق الزمان بٹ شہید کی جدائی پر۔۔۔۔
    زندہ کیسے رہوں بتا مجھ کو
    راہ جینے کی، آ دکھا مجھ کو

    کون پوچھے گا حال اب میرا
    ہوگا کس کو خیال اب میرا

    درد کس کو بھلا سناؤں گا
    زخم دل کا کسے دکھاؤں گا

    کیسے کاندھوں پہ تُو بٹھاتا تھا
    ناز سو سو مرے اٹھاتا تھا

    روٹھتا تھا تو تُو مناتا تھا
    پیار کے گیت بھی سناتا تھا

    کس کو بھائی بڑا کہوں گا میں
    ساتھ کس کے چلا کروں گا میں

    یاد تیری بہت رلاتی ہے
    رات بھر یہ مجھے جگاتی ہے

    اتنی ہمت کہاں سے لاؤں میں
    یاد دل سے تری بھلاؤں میں

    بھول جانا تجھے نہیں بس میں
    دل مرا ہے مگر نہیں بس میں

    اتنا نہ بد نصیب ہوتا میں
    وقتِ رخصت قریب ہوتا میں

    کام ایسا میں کاش کر جاتا
    ساتھ تیرے ہی میں بھی مر جاتا

    پیش ہیں پھول کچھ دعاؤں کے
    دل سے اٹھتی ہوئی صداؤں کے

    ہو نہ میلا کبھی کفن تیرا
    صورتِ گل رہے بدن تیرا

    خوف کوئی تجھے ستائے نہ
    تجھ پہ سختی ذرا بھی آئے نہ

    زندہ ہر اک ادا رہے تیری
    لحد روشن سدا رہے تیری

    رحمتوں کا نزول ہو تجھ پر
    خوش خدا اور رسول ہو تجھ پر

    تحریر تنزیل بٹ