ڈالر ایک بار پھر ملکی تاریخ کی بلند ترین سطح پر آگیا

جاسم محمد نے 'معیشت و تجارت' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏مئی 15, 2019 1:11 شام

  1. جان

    جان محفلین

    مراسلے:
    1,225
    ماشاءاللہ، جواب پھر بھی آپ نے اپنی مرضی کا دیا ہے لیکن پھر بھی یہ بتلانے سے قاصر ہیں کہ وہ بنیادی عناصر کیا ہیں جس پہ ملک کی معیشت کے تمام فیکٹرز انحصار کرتے ہیں۔ اگرچہ پہلے کئی مراسلوں میں میں ان کی طرف اشارہ کر چکا ہوں لیکن وقت نکال کر موقع ملا تو اس پر ایک تفصیلی مراسلہ کیا جائے گا لیکن فی الوقت وہی سوال آپ کے مراسلے سے اخذ کر کے سادہ ترین الفاظ میں پھر ایک بار دہرائے دیتا ہوں:
    • حکومت ملک کی آمدن اور خرچوں میں توازن پیدا کرے۔ کیسے؟ اخراجات اور آمدن کن عوامل پہ انحصار کرتے ہیں؟ آپ کی اس ضمن میں سمت کیا ہے؟
    • امپورٹ کم اور ایکسپورٹس بڑھانے پر توجہ دے۔ کیسے؟ امپورٹ اور ایکسپورٹ پہ اثر انداز ہونے والے عوامل کیا ہیں اور ان میں سے کس حد تک آپ نے ان عوامل کا ادراک کر کے ان کو اپنایا ہے؟
    • اندرونی گردشی قرضے واپس کرنے کے ساتھ ساتھ ملک میں نئی سرمایہ کاری لائے۔ کیسے؟ قرضے واپس کرنے کے لیے سود سمیت پیسہ چاہیے اور سرمایہ کار منہ اٹھا کے نہیں چلے آتے، ملک کے اندرونی عوامل سرمایہ کاری پہ پہ بہت گہرا اثر رکھتے ہے، وہ عوامل کیا ہیں اور آپ کی سمت کیا ہے ان عوامل کے ضمن میں؟
    • سرکاری اداروں اور محکموں کے خسارے کم یا مکمل ختم کر دے۔ کیسے؟ باقی سرکاری ادارے تو ایک طرف کیا آپ دفاع کا بجٹ کم کرنے کی اہلیت رکھتے ہیں جو مسلسل ریاستِ پاکستان پہ بوجھ ہے جس کی حقیقی آؤٹ پٹ کچھ بھی نہیں؟

      ان سب عوامل پہ عمل در آمد کے لیے آپ کا حکومت میں آنے سے قبل ہوم ورک کیا تھا؟ "کرپشن" کے نعرے سے باہر نکل کر اپنے عملی اقدامات سے واضح کیجیے۔
      حکومت اپنے اعمال اور اقدامات کی خود ذمہ دار ہے، قوم کیوں حکومت کی نا اہلی برداشت کرے؟ اپوزیشن کیوں آپ کا ساتھ دے؟ پچھلے پانچ سال میں جو آپ نے کیا اس کا پانچ فیصد بھی اس اپوزیشن نے نہیں کیا اور سونے پہ سہاگا کہ اپوزیشن کے خلاف انتقامی کاروائی بھی جاری رہے اور اپوزیشن ساتھ بھی دے، یہ کونسی دنیا میں ہوتا ہے؟ اسٹیبلشمنٹ کو قابو میں کرنا آپ کا کام ہے، پچھلی حکومتوں کے خلاف آپ نے اسے استعمال کیا اور اب چاہتے ہیں کہ آپ کے ہاتھ بٹائے؟ حقیقت کی دنیا میں رہتے ہوئے فیصلے کریں، کوئی آپ کی سپورٹ کس بنیاد پہ کرے؟ حکومت آپ نے کرنی ہے، اپوزیشن نے نہیں، جواب دہ آپ ہیں، اپوزیشن نہیں، اس لیے آپ نے خود اپنی حکمت عملی سے ان کی سپورٹ حاصل کرنی ہے اور آپ کی حکمت عملی اپوزیشن کے نہ ہوتے ہوئے بھی، اسٹیبلشمنٹ کے ساتھ ہوتے ہوئے بھی ابھی تک انتہائی ناقص ہے۔
     
    آخری تدوین: ‏مئی 15, 2019 7:30 شام
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  2. عبدالقیوم چوہدری

    عبدالقیوم چوہدری محفلین

    مراسلے:
    16,338
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    باقی سارے مراسلے سے متفق ماسوائے آخری 'انتہائی ناقص' سے۔

    کوئی شے وجود رکھتی ہو تو ایسے کسی لفظ (ناقص) کے ذریعے اس کا اچھا برا ہونا ظاہر کیا جاتا ہے۔
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  3. عبدالقیوم چوہدری

    عبدالقیوم چوہدری محفلین

    مراسلے:
    16,338
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    وہ جو ن لیگ دور میں 12 ارب روزانہ کرپشن ہوتی تھی، وہ کب کی رک چکی ہے۔ اتنے عرصے میں کم از کم ان سے بیس بائیس ارب ڈالر تو بن جانے چاہییے تھے۔ کپتان خوامخواہ ہی ڈرائیوریاں کرتا رہا ہے۔
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  4. آصف اثر

    آصف اثر محفلین

    مراسلے:
    2,029
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    پھر عمران خان نے پانچ سال آئی ایم ایف سے قرضے لینے پر ن لیگ کو کیوں نشانہ بنایا۔ حالاں کہ ن لیگ نے پچھلے پانچ سالوں میں ایک بار قرضہ لیا اور واپس بھی کردیا۔ جب کہ ن لیگ کو جو معیشت پی پی سے ملی تھی وہ ن لیگ کے مقابلے میں بہت ابتر تھی۔
     
    • متفق متفق × 1
  5. عبدالقیوم چوہدری

    عبدالقیوم چوہدری محفلین

    مراسلے:
    16,338
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    اتنا جھوٹ بولو کہ وہ سچ لگنے لگے۔

    سائیوں کا حکم تھا اور سائیں چانکیہ کے نظام سیاست کو پچھلے ساٹھ ستر سالوں سے مکمل اپنائے پوری ریاست کتر کتر کر کھائے چلے جا رہے ہیں۔
     
    • متفق متفق × 1
  6. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    7,238
    ملکی محکموں اور اداروں میں خسارے طویل مدتی ان افیشنسیز کی وجہ سے ہیں۔ الحمدللہ تحریک انصاف اس ضمن میں آمدنی بڑھانے کیلئے جدید ٹیکنالوجیز کا استعمال کر رہی ہے۔ آج ہی کی خبر ہے کہ پاکستان پوسٹ نے ای کامرس کے ذریعہ اپنی آمدن میں 6 ارب روپے کا اضافہ کیا ہے۔
    E-commerce boosts Pakistan Post revenue by Rs6 bn

    ملک کی ایکسپورٹ مختلف سیکٹرز جسے زراعت، حلال گوشت، آئی ٹی اور مینوفیکچرنگ سیکٹر میں بیرونی سرمایہ کاری کی مدد سے بڑھائی جا سکتی ہے۔ حکومت نے اس حوالہ سے ملائیشیا، چین، ترکی اور دیگر دوست ممالک سے ٹیکنالوجی ٹرانسفر اور سرمایہ کاری کے معاہدہ کئے ہیں۔ جن کا پھل آنے والے سالوں میں نظر آئے گا۔
    [​IMG]
    Exports increase to $25 bn: Hammad Azhar

    جبکہ امپورٹس میں لغژری آئی ٹمز، امیر طبقہ کی عیاشی والی اشیاء پر مکمل پابندی یا شدید قسم کے ٹیکسز لگا کر کمی لائی جا رہی ہے۔
    [​IMG]
    Pakistan’s imports decline by $3.5bn in 10 months, NA told

    سرمایہ کار بد امنی سے دور بھاگتے ہیں۔ نیز ملک کے معاشی نظام میں سرمایہ کاری جذب کرنے کی صلاحیت ہونا بھی لازمی ہے۔ حکومت نے اس حوالہ سے وزیر اعظم کے اپنے دفتر میں سرمایہ کاروں کو انٹرٹین کی غرض سے یونٹ قائم کر رکھا ہے۔ دوست ممالک سے معاہدوں کے بعد اربوں ڈالرز کی ڈائریکٹ سرمایہ کاری آئندہ چندسالوں میں پاکستان میں نظر آئے گی۔ جس سے روزگار کے نئے مواقع نکلیں گے۔
    Lahore factory to produce Pakistan’s first locally manufactured cars | Samaa Digital

    دفاع کا بجٹ ملک پر بوجھ ہے؟ اس طرح تو ملک کا ہر ادارہ اور محکمہ سرکاری خزانہ پر بوجھ ہے جو ریکارڈ خساروں میں جا رہے ہیں۔
    صرف اس بنیاد پر ان کا بجٹ کم تو نہیں کیا جا سکتا۔ ہاں جدید ٹیکنالوجیز کی مدد سے ان کی ایفی شنسی بہترکر کے بڑھتے خساروں کو کم ضرور کیا جا سکتا ہے۔ جو حکومت کر رہی ہے۔
     
  7. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    7,238
    ن لیگ نے صرف آئی ایم ایف سے ہی قرضہ نہیں لیا تھا۔ اپنی معلومات میں اضافہ کریں۔ نیز بیرونی قرضہ کا 50 فیصد صرف پرانے قرضے اتارنے پر صرف کیا۔ اسی لئے تو اس وقت بیرونی قرضہ 100 ارب ڈالر تک پہنچ چکا ہے۔

    Pakistan has taken loans from all available options, including commercial banks and International Monetary Fund (IMF), and through issuing bonds in international market, according to the official documents.
    Pakistan had borrowed $13.38 billion from the multilateral, $5.048 billion from bilateral, $6.7 billion from the commercial banks and $6.4 billion from the IMF by the end of September 2017. Similarly, the government has issued $6.5 billion Sukuk and Euro bonds in the international capital market during the last four years.
    Later, the government borrowed $1.24 billion loan from external sources during October and November this year.
    According to the documents, almost 50 percent of the foreign loans were spent on the repayment of previous loans. The government had repaid $18.3 billion on the previous loans, out of total $36 billion borrowed by the end of September. Similarly, it had repaid $7.38 billion to the multilateral sources, out of $13.38 billion taken from them.
    Government got record $40b loans
     
  8. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    7,238
    جیسے وسیع تر ملکی مفاد میں پوری اپوزیشن نے پلوامہ حملے کے بعد حکومت کو سپورٹ کیا۔ اسی طرح فاٹا کو ملک کا حصہ بنانے کیلئے 26ویں آئینی ترمیم میں حصہ ڈالا۔ کیا یہی کام ملک کے معاشی ڈھانچہ کے ریفارمز کیلئے نہیں کر سکتے؟ یقینا کر سکتے ہیں اگر نیت ٹھیک ہو اور ملک کے ساتھ مخلص ہو۔
     
  9. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    7,238
    کوئی سونے پہ سہاگا نہیں۔ اپوزیشن کے اپنے کرتوت سامنے آ رہے ہیں۔ تحریک انصاف نے ماضی میں زور زبردستی کر کے اپوزیشن سے کرپشن نہیں کروائی تھی۔
     
  10. آصف اثر

    آصف اثر محفلین

    مراسلے:
    2,029
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    پی ٹی آئی نے اب تک کتنا قرضہ لیا ہے؟ اور حکومت کے قیام کے وقت پاکستان کتنا مقروض تھا؟
     
  11. آصف اثر

    آصف اثر محفلین

    مراسلے:
    2,029
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    ویسے یہ بات (فی الحال پالیسی کی حد تک) بہت اچھی ہے کہ آٹو سیکٹر خصوصا لگژری گاڑیوں کی امپورٹ کم کرنے سے پٹرولیم کی امپورٹ کم ہو جائے گی۔ جو پاکستان کی درآمدات کا تقریبا 13 فیصد بنتا ہے۔
    بینکوں کی جانب سے "آسان" اقساط پر گاڑیوں کی دستیابی نے بھی معاملات بگاڑے ہیں۔ مزید یہ کہ ریل ٹرانسپورٹ میں انقلاب لانے سے بھی درآمدات کی کایا ہلٹ سکتی ہے، کیوں کہ اس کا اثر فوری طور پر فضائی سفر پر پڑے گا، نتیجتا پٹرولیم کا کم استعمال ہوگا۔
    اسی طرح پبلک ٹرانسپورٹ اور روڈز کی بہتر حالت بھی اچھی خاصی اثر انداز ہوگی۔
    [ملک بھر میں روڈز اور پنجاب کی حد تک پبلک ٹرانسپورٹ کا کریڈٹ ن لیگ کو ضرور جاتا ہے۔]
     
  12. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    7,238
    عالمی مارکیٹ میں روپے کی قدر گرنے سے قرضوں میں بتدریج اضافہ ہوا ہے۔
    Devaluation pushes up total debt by Rs900bn - Newspaper - DAWN.COM
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  13. آصف اثر

    آصف اثر محفلین

    مراسلے:
    2,029
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    روپے گرانے کا کارنامہ بھی اب کہیں ن لیگ پر ڈال دیں۔
     
  14. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    7,238
    انہی کا کارنامہ ہے۔ اپنے دور حکومت میں تجارتی خسارہ اتنا بڑھا دیا تھا کہ روپے کو گرانا ملکی معیشت کی سالمیت کے لئے ناگزیر تھا۔
    Pakistani rupee devalued after ‘thought and precision’, says Miftah Ismail


     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  15. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    7,238
    مارکیٹ سے زائد قیمت پر ڈالر فروخت کرنیوالی کمپنیوں کیخلاف کارروائی کا فیصلہ
    ویب ڈیسک بدھ 15 مئ 2019
    [​IMG]
    اجلاس میں ایمنسٹی اسکیم کے تحت اثاثے ظاہر نہ کرنے والوں کے خلاف کارروائی پر بھی غور کیا گیا فوٹو: فائل

    اسلام آباد: حکومت نے مارکیٹ سے زائد قدر میں ڈالر فروخت کرنیوالی ایکسچینج کمپنیوں کیخلاف کارروائی کا فیصلہ کیا ہے۔

    روپے کے مقابلے میں غیر ملکی کرنسیوں کی قدر میں اضافے کے حوالے سے وزیراعظم کی زیرصدارت اعلی سطح کا اجلاس ہوا، اجلاس میں چیئرمین ایف بی آر، گورنر اسٹیٹ بینک، ڈی جی ایف آئی اے اور ڈی جی آئی بی کے علاوہ سیکیورٹی اینڈ ایکسچینج کمیشن آف پاکستان کا وفد بھی شریک ہوا۔ اجلاس میں ایمنسٹی اسکیم کے تحت اثاثے ظاہر نہ کرنے والوں کے خلاف مجوزہ کارروائی پر بھی غور کیا گیا۔

    اجلاس کے دوران دی گئی بریفنگ میں بتایا گیا کہ ڈالر کی مارکیٹ قیمت خرید 143 روپے 50 پیسے جبکہ قیمت فروخت 144 روپے ہے، اسی طرح سعودی ریال کی قیمت خرید 38 روپے 20 پیسے جبکہ قیمت گروخت 38 روپے 35 پیسے ہے۔

    اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ طے شدہ کرنسی ریٹ سے انحراف کرنے والی کمپنیوں کو کوئی رعایت نہیں دی جائے گی، مارکیٹ سے زائد ڈالر فروخت کرنے والی ایکس چینج کمپنیوں کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔
     
  16. جان

    جان محفلین

    مراسلے:
    1,225
    پہلے آپ اپوزیشن کے اپنے پانچ سالہ دور دیکھیں پھر ایسی بات کریں۔ وقت تھوڑا رہ گیا ہے بجٹ پیش کرنے میں، ان شاء اللہ بجٹ کی الوکیشن کے بعد اپوزیشن آپ کو سپورٹ کرے گی۔
     
    آخری تدوین: ‏مئی 15, 2019 11:41 شام
  17. جان

    جان محفلین

    مراسلے:
    1,225
    میرا سوال دیکھیں اور اپنا جواب دیکھیں۔ :heehee:
    مزید یہ کہ دفاع کا بجٹ یقیناً بوجھ ہے۔ مولا خوش رکھے!
     
  18. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    7,238
    بجٹ کے کل 4500 ارب روپے میں سے 1700 ارب فوج کو دے دینا یقینا زیادتی ہے۔
    ن لیگ نے اس میں کمی بیشی کرنے کے نتائج بھگت لئے ہیں۔ اس لئے موجودہ اور آئندہ آنے والی حکومتیں اس معاملہ میں کوئی تبدیلی کرنے والی نہیں۔
     
  19. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    7,238
    ڈالر مہنگا ہو کر ملکی تاریخ کی نئی بلند ترین سطح 147 روپے تک پہنچ گیا
    [​IMG]
    انٹربینک مارکیٹ میں ڈالر کی قدر میں 5.61 روپے کے اضافے کے بعد ڈالر ملکی تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گیا۔ فوٹو: فائل

    کراچی: انٹر بینک مارکیٹ میں ڈالر مزید 4 فیصد مہنگا ہو کر 147 روپے کی سطح پر پہنچ گیا۔

    انٹر بینک میں آج کاروبار کا آغاز ہوا تو ایک امریکی ڈالر 141 روپے 39 پیسے کا تھا جس کی قدر میں دیکھتے ہی دیکھتے اضافہ ہوا اور 5 روپے 61 پیسے مہنگا ہونے کے بعد 147 تک پہنچ گیا۔

    انٹر بینک مارکیٹ میں ڈالر کی قیمت خرید 146 اور قیمت فروخت 147 روپے دیکھی گئی جب کہ اوپن مارکیٹ میں ڈالر کی قیمت خرید 146 اور قیمت فروخت 148 ہے۔

    ڈالر کی نئی اڑان کے بعد پاکستان کے بیرونی قرضوں میں 666 ارب روپے کا اضافہ ہوگیا۔

    روپے کی قدر گرنے سے پہلے پاکستان کے 105 ارب ڈالر کے بیرونی قرضوں اور واجبات کا حجم پاکستانی روپوں میں 14 ہزار 891 ارب روپے تھا جو بڑھ کر 15 ہزار 558 ارب روپے ہوگیا۔

    روپے کی قدر کم ہونے پر پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں بھی منفی رجحان ہے جہاں 100 انڈیکس 656 پوائنٹس کمی سے 33 ہزار 635 کی سطح پر آگیا۔

    گزشتہ روز اوپن مارکیٹ میں ڈالر کی قدر 146 روپے سے تجاوز ہوئی تو وزیراعظم عمران خان نے اس کا نوٹس لیا اور اسٹیٹ بینک، قانون نافذ کرنے والے اداروں اور ایکسچینج کمپنیز کے وفد سے ملاقات میں روپے کی قدر گرنے پر برہمی کا اظہار کیا۔

    وزیراعظم نے اس موقع پر زائد قیمت پر ڈالر فروخت کرنے والی کمپنیوں کے خلاف کارروائی کی بھی ہدایت کی لیکن آج ایک مرتبہ پھر ڈالر کی قیمت کو پر لگ گئے ہیں۔

    واضح رہےکہ حکومت اور عالمی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف) کے درمیان معاہدے سے قبل ڈالر کی قدر 141 سے 142 روپے کے درمیان تھی اور آئی ایم ایف سے معاہدے کے بعد ڈالر کی قدر میں مزید اضافے کا امکان ظاہر کیا جارہا ہے۔
     
  20. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    7,238
    [​IMG]
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1

اس صفحے کی تشہیر