1. اردو محفل سالگرہ شانزدہم

    اردو محفل کی سولہویں سالگرہ کے موقع پر تمام اردو طبقہ و محفلین کو دلی مبارکباد!

    اعلان ختم کریں

پی آئی اے کو خسارے سے نکال لیا ہے، انتظامیہ کا دعوی

جاسم محمد نے 'معیشت و تجارت' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اپریل 21, 2019

  1. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    30,982
    پی آئی اے کو خسارے سے نکال لیا ہے، انتظامیہ کا دعوی
    محمد صلاح الدین 21 اپریل 2019
    [​IMG]
    کراچی : پی آئی اے انتظامیہ نے دعوی کیا ہے کہ قومی ادارے میں طویل عرصے بعد مالی خسارے پر قابو پالیا گیا ہے اور31مارچ کو ختم ہونے والی سہ ماہی میں انتظامی اخراجات کی نسبت ریونیو میں معمولی اضافہ ہوا ہے۔

    اس حوالے سے پی آئی اے کے چیف ایگزیکٹو کے مشیر ایئروائس مارشل نور عباس نے میڈیا کو بتایا ہے کہ ادارے کے آپریشنل اخراجات اور ریونیو برابر ہوگئے ہیں، 3سے 4 ماہ میں ادارہ نفع کمانے کے قابل ہوجائے گا۔

    قومی ادارے کا ریونیو پہلی سہ ماہی میں8سے 8.5ارب روپے ماہانہ پر پہنچ گیا جو گزشتہ سال اسی عرصے میں7ارب روپے ماہانہ تھا۔ فضائی بیڑے میں چار طیاروں کا اضافہ ہوا ہے۔

    ملازمین کی تعداد میں کمی، ٹکٹ ریزرویشن کی لاگت میں کمی، کارگو بزنس میں اضافہ اور نفع بخش روٹ پر پروازوں کی تعداد میں اضافے سے نتائج حاصل کرنے میں مدد ملی ہے۔

    اس کے علاوہ ترکی سے جدید سافٹ ویئر حاصل کیے جانے کے بعد سے صرف ٹکٹ ریزرویشن میں ماہانہ ایک ارب روپے کی بچت ہورہی ہے۔
    PIA reaches break-even in operating profit | The Express Tribune
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  2. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    30,982
    #کپتان_کی_نکمی_ٹیم
    #اچھا_سوری
     
  3. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    27,149
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    آپریٹنگ بریک ایون پر آ جانے کا مطلب ہے کہ پی آئی اے ابھی بھی خسارے میں ہے کیونکہ ٹیکسز اور قرضوں پر سود وغیرہ آپریٹنگ پرافٹ کے بعد منہا کیے جاتے ہیں۔ بہرحال اس پوزیشن میں بھی آ جانا ایک اچھی علامت ہے لیکن صحیح خوش کن بات تب ہوگی جب یہ نیٹ پرافٹ میں آئیں گے۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
    • متفق متفق × 1
  4. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    30,982
  5. یاسر شاہ

    یاسر شاہ محفلین

    مراسلے:
    1,500
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bitched
    فوج کو ہم جتنا برا کہہ لیں بہرحال سیدھے ہم فوج سے ہی ہوتے ہیں -CEO کا اس خسارے سے نکالنے میں بڑا کردار ہے -انھوں نے کچھ سختیاں کیں جس پہ شروع میں ہم سب نے بہت شور کیا -جیسے پندرہ منٹ کی جو "ان"in کرنے کی گنجائش تھی ختم کر دی -مَثَلاً پہلے اگر ہم سات سے سوا سات تک ان کر سکتے تھے اب لازمی سات بجےسے پہلے کرنا پڑتا ہے -اس کے علاوہ حاضری پر جو مینیجرز کو ایڈجسٹ کرنے کا اختیار تھا وہ ختم کر دیا اور باہر آنے جانے کو بھی موومنٹ سلپ سے پابند کر دیا -یعنی وہ جو ایک رسم تھی یہاں ان-in کر کے گھر جا کر ان-in کیا جاتا تھا ،کم ہوگئی -پھر جاسوس چھوڑ رکھے ہیں جس کو سوتا ہوا یا بیکار پھرتا دیکھتے ہیں نام وغیرہ نوٹ کر کے کاشن لیٹر تھما دیتے ہیں -اس کے علاوہ خود ہر جگہ پہنچ جاتے ہیں -

    لیکن اس کا کیا کریں کہ صاحب کو دو عہدوں میں سے جب قانون کے تحت ایک کو چھوڑنا تھا تو CEO کی آسامی کے لئے ایک اشتہار بنایا گیا جس میں "وار کورس " لازمی قرار دیا گیا یعنی نہ رہے بانس نہ بجے بانسری - نہ وار کورس بلڈی سولین(bloody civilian) کرے گا نہ CEO بنے گا-اب صاحب کی قابلیت بھی کوئی خاص نہیں -ایک بار جہاز (boeing-777)کا سی چیک(c check) تھا ،آئے ہوئے تھے ،میں بھی وہیں تھا ،سنجیدگی سے جہاز کی لات (landing gear)کی طرف اشارہ کر کے پوچھنے لگے کہ جہاز جب اڑے گا لات کہاں جائے گی ؟یہاں ،یا وہاں یعنی پر (wing)کی طرف یا پیٹ (belly)کی طرف ؟ ان کے اس سوال سے ان کا سارا رعب ہوا ہوگیا -:D
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  6. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    30,982
    اگر یہ لاتوں کی بھوت قوم اپنی مدد آپ کے تحت خود کو ڈسپلن کر دیتی تو کیا آج یہاں کند ذہن عسکری مسلط ہوتے ؟ :)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • متفق متفق × 1
  7. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    27,149
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    ویسے یہ معاشی خبر شاید آج کل کے" معاشی میس" میں تازہ ہوا کے جھونکے کے طور پلانٹ کرنے کی کوشش کی گئی ہے کیونکہ ایک ایسی کمپنی جس کا 'جہاز جہاز' قرضوں میں جکڑا ہو اور جو عشروں سے نقصان در نقصان میں چل رہی ہو اس کی محض ایک "سہ ماہی" کے فنانشلز کو بنیاد بنا کر اس کی معاشی کارکردگی کے طور پر پیش کرنا اسی طرح کی بات ہے جیسی سب سے بڑے سمندری تیل کے ذخائر!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  8. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    30,982
    مستقبل کا کچھ نہیں کہہ سکتے۔ البتہ اس میں کوئی شک و شبہ نہیں کہ موجودہ حکومت پوری نیک نیتی کے ساتھ پچھلے دس سالہ جمہوری دور میں مچنے والی تباہی کا ازالہ کرنے کیلئے ہر طرف ہاتھ پاؤں مار رہی ہے۔
    امید ہے اگلے پانچ سالوں تک اس میں سے کچھ نہ کچھ “مثبت” نکل ہی آئے گا۔
     
  9. یاسر شاہ

    یاسر شاہ محفلین

    مراسلے:
    1,500
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bitched
    وہ کہنا یہ چاہ رہے ہیں کہ عمران خان کے دور میں یہ ترقی ہو گئی -کوئی بات نہیں مان لینے میں کیا برائی ہے -خوش ہو لینے دیں -
    ایک بزرگ فرماتے ہیں جو کتا دن میں دس بار کاٹتا ہو اگر پانچ بار کاٹے تو یہ بھی ایک اصلاح ہے -
     
    • پر مزاح پر مزاح × 4
  10. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    10,183
    ازراہ تفنن عرض ہے کہ کہیں یہ طویل مدت تک بوجوہ ائیر اسپیس بند رہنے کا کرشمہ تو نہیں ۔۔۔! یعنی کہ نہ نو من تیل ہو گا نہ رادھا ناچے گی ۔۔۔! جب سروس میسر ہی نہ ہو گی تو خسارہ کاہے کا ۔۔۔!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  11. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    30,982
    ارے صاحب ہم تو آپ کو بہت ہلکا لے رہے تھے۔ آپ تو چھپے معیشت دان نکلے :)
     
  12. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    10,183
    ویسے خبر کے مطابق کچھ بہتری تو آئی ہے جو بہرصورت خوش آئند ہے۔
     
  13. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    27,149
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    یہ وجہ بھی ہو سکتی ہے مگر اس طور پر زیادہ نہیں کیونکہ کام نہ ہونے کی صورت میں اخراجات میں بچت ضروری ہوتی ہے لیکن آمدن میں بھی اسی طرح کمی ہوتی ہے بلکہ فکسڈ کاسٹ جیسے عملے کی تنخواہیں اور دیگر دفتری اخراجات ، بل وغیرہ تو کام ہو یا نہ ہو دینے ہی پڑتے ہیں سو یہ مستقل اخراجات منافع کو مزید کھا جاتے ہیں یا نقصان کو مزید بڑھا دیتے ہیں۔

    ایک ممکنہ وجہ یہ ہو سکتی ہے کہ بہت ساری دوسری ایئر لائنز کی فلائٹس اس عرصے میں بند رہی ہیں اور متبادل کاروبار پی آئی اے نے مہنگے داموں پر سمیٹا، اسی طرح کارگو بھی انہی کے پاس آئی جیسے کہ سی ای او نے خود کہا۔ عام حالات میں پی آئی اے کو بہت زیادہ کاروباری کارگو نہیں ملتا۔ اس کی ایک ذاتی مثال یہ ہے کہ نوے کی دہائی میں پی آئی اے نے پے در پے ہماری کچھ کارگوز کے ساتھ ہاتھ کیا تو تب سے اب تک مجھے نہیں یاد پڑتا کہ کبھی پی آئی اے کو درآمدی یا برآمدی کارگو دی ہو، الا مخصوص حالات میں جیسے یہ ایئر سپیس کی بندش تھی۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 2

اس صفحے کی تشہیر