1. احباب کو اردو ویب کے سالانہ اخراجات کی مد میں تعاون کی دعوت دی جاتی ہے۔ مزید تفصیلات ملاحظہ فرمائیں!

    ہدف: $450
    $255.00
    اعلان ختم کریں

وصالِ یار ایلہ دل شاد ہر چہ بادا باد - کاتب زادہ محمد رفیع

حسان خان نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جون 14, 2018

  1. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    13,387
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    وصالِ یار ایله دل شاد هر چه بادا باد
    فراقېن ائیله‌مزیز یاد هر چه بادا باد
    جفا ایسه اگر اۏ مه‌وشین همان کارې
    دل اۏلدو جور ایله مُعتاد هر چه بادا باد
    نُقودِ عِفّتی جامِ ملامته قۏیالېم
    اۏلورسا طعنهٔ زُهّاد هر چه بادا باد
    دِلا هلاکینه قصد ائیله‌میش قېلېچ چکمیش
    یینه اۏ غمزهٔ بی‌داد هر چه بادا باد
    رهِ وصالینه یارین سری قۏدوق ائتمه
    بیزه مُقدّمه ایراد هر چه بادا باد
    هوایِ عشق رفیع اختیارېمې آلالې
    دل اۏلدو قیددان آزاد هر چه بادا باد

    (کاتب‌زاده محمد رفیع)

    ترجمہ:
    وصالِ یار کے ساتھ دل شاد ہے۔۔۔ جو بھی کچھ ہونا ہے ہو جائے!۔۔۔۔ ہم اُس کے فراق کو یاد نہیں کرتے۔۔۔ جو بھی کچھ ہونا ہے ہو جائے!
    اگر اُس ماہ وش کا کار فقط جفا ہو تو [کوئی مسئلہ نہیں، کیونکہ] دل اُس کے جور و ستم کا عادی ہو گیا ہے۔۔۔ [حالا] جو بھی کچھ ہونا ہے ہو جائے!
    [آؤ] ہم نقدِ عِفّت کو جامِ ملامت کے عِوض میں دے دیں۔۔۔ اگر زُہّاد طعنہ کریں گے تو [کوئی پروا نہیں]۔۔۔ جو بھی کچھ ہونا ہے ہو جائے!
    اے دل! [ظاہراً] اُس غمزۂ ستم گر نے دوبارہ تمہاری ہلاکت کا قصد کیا ہے [اور] تیغ کھینچی ہے۔۔۔۔ [کوئی مسئلہ نہیں!] جو بھی کچھ ہونا ہے ہو جائے!
    ہم نے یار کی راہِ وصال میں سر رکھ دیا [ہے]۔۔۔ [اب] تم ہم کو مُقدّمہ بیان مت کرو [اور تمہید مت باندھو] (یعنی اعتراض و بہانہ مت کرو)۔۔۔ جو بھی کچھ ہونا ہے ہو جائے!
    اے رفیع! جب سے عشق کی آرزو و جنون نے میرے [دست سے] اختیار لیا ہے، [میرا] دل قید سے [اور فکر و اندیشہ] سے آزاد ہو گیا ہے۔۔۔ [اب] جو بھی کچھ ہونا ہے ہو جائے!


    Visâl-i yâr ile dil şâd her çi bâd-â-bâd
    Firâkın eylemeziz yâd her çi bâd-â-bâd
    Cefâ ise eger o mehveşin hemân kârı
    Dil oldu cevr ile mu'tâd her çi bâd-â-bâd
    Nukûd-i 'iffeti câm-ı melâmete koyalım
    Olursa ta'ne-i zühhâd her çi bâd-â-bâd
    Dilâ helâkine kasd eylemiş kılıç çekmiş
    Yine o gamze-i bî-dâd her çi bâd-â-bâd
    Reh-i visâline yârin seri koduk etme
    Bize mukaddeme îrâd her çi bâd-â-bâd
    Hevâ-yı ‘aşk Refî’ ihtiyârımı alalı
    Dil oldu kayddan âzâd her çi bâd-â-bâd
     
    آخری تدوین: ‏جون 15, 2018
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1

اس صفحے کی تشہیر