1. احباب کو اردو ویب کے سالانہ اخراجات کی مد میں تعاون کی دعوت دی جاتی ہے۔ مزید تفصیلات ملاحظہ فرمائیں!

    ہدف: $500
    $413.00
    اعلان ختم کریں

مولانا جلال الدین رومی

نیلم نے 'تاریخ کا مطالعہ' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏دسمبر 7, 2012

  1. امداد علی قادری

    امداد علی قادری محفلین

    مراسلے:
    24
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
     
  2. امداد علی قادری

    امداد علی قادری محفلین

    مراسلے:
    24
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    تکبر عزازئیل را خوار کرد ، بزندان لعنت گرفتار کرد
    شیطان بہی بہت بڑا عالم تھا اور اسی علم پہ غرور کیا تو لعنتی بن گیا اور حضرت موسیٰ علیہ السلام نے دل میں خیال کیا تھا کہ میرا جیسا علم والا اس دنیا میں اور کوئی نہیں تو اللہ تعالی اسے حضرت حضرت خضر علیہ السلام سے ملاقات کروائی جس کا ذکر تفصیل کے ساتھ قرآن مجید فرقان حمید میں موجود ہے۔اور یہ واقعہ بہی حقیقت پر مبنی ہے ،قبلہ اجر و ثواب نیتوں پر ہوتا ہے !اللہ تعالی تمام غلامان مصطفیٰ ﷺ کے حال پر اپنا رحم و کرم فرمائے،
    ایمان پہ زندہ رکھے اور ایمان پہ خاتمہ کرے ۔آمین ثم آمین
     
  3. جان خان

    جان خان محفلین

    مراسلے:
    2
    مولانا روم رحمہ اللہ درس دے رہے اور شمس تبریز رحمہ اللہ نے ان کی کتاب اٹھا کر پھینک دی
    اس واقعے میں قابل اعتراض کیا بات ہے؟
    یہ لازمی نہیں کہ درس ہمیشہ قرآن و حدیث کا ہی دیا جائے۔یہ بات حقیقت ہے کہ مدارس میں آج بھی علوم دینیہ کے علاوہ دنیاوی فنون بھی پڑھائے جاتے ہیں، اور یہی طرز شروع سے علماء کا چلا آرہا ہے، اسی لیے اس واقعے کو ہم یوں بھی لے سکتے ہیں کہ مولانا کسی دنیاوی فنون سے متعلق کتاب کا درس دے رہے تھے اور شمس تبریز رحمہ اللہ نے اس کتاب کو پانی میں پھینک دیا۔
    اب بتائیے قابل اعتراض بات بنتی ہے۔
     
  4. علی اسود

    علی اسود محفلین

    مراسلے:
    1
    سوز شمس از گفتہ ملا فزود
    آتشے از جان تبریزی کشود

    شمس تبریزی کے سوز کی گرمی مولانا روم کی باتوں سے بڑھ گئ ،
    ان کی جان میں چھپی آگ ظاہر ہوگئ۔

    بر زمیں برق نگاہ او فتاد
    خاک از سوز دم او شعلہ زاد

    انہوں نے جلال سے بھری آنکھ زمیں پہ ڈالی
    ان کے پھونک سے مٹی شعلہ بن گی

    آتش دل خرمن ادراک سوخت
    دفتر آں فلسفی را پاک سوخت

    دل کی آگ نے عقل و فہم و ادراک کا کھلیان جلا دیا
    اس فلسفی کا دفتر جل کر راکھ ہوگیا
     

اس صفحے کی تشہیر