تاجر تنظیموں کا چار روزہ ملک گیر شٹر ڈاؤن ہڑتال کا اعلان

جاسم محمد نے 'معیشت و تجارت' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جولائی 31, 2019

  1. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    13,164
    آپ شاید ایڈمنسٹریٹر اور سیاست دان کو آپس میں غلط ملط کر رہے ہیں۔
    یہ سچ ہے کہ عمران خان اچھے ایڈمنسٹریٹر نہیں۔ ان کے اکثر شروع کردہ منصوبے ناکام یا سست روی کا شکار ہو جاتے ہیں۔ کے پی کے میں بی آرٹی کا حال سب کے سامنے ہے۔ ملک کی بیروکریسی ان سے سنبھالی نہیں جا رہی ۔ معیشت کنٹرول سے باہر ہے۔ وغیرہ وغیرہ۔
    البتہ جس انداز سے انہوں نے ملک کی دو بڑی سیاسی پارٹیوں کو پےدرپے شکست سے دوچار کیا ہے۔ پلوامہ سانحہ پر بھارت کو ناکوں چنے چبوائے۔ ٹرمپ کو صرف ایک ملاقات میں اپنا مداح بنا لیا۔ یہ کام ایک منجھا ہوا سیاست دان ہی کر سکتا ہے۔ نواز شریف، شہباز شریف جیسے ایڈمنسٹریٹر نہیں :)
     
  2. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    8,908
    اسٹیبلشمنٹ کے کندھوں پر سوار ہو کر یہ کار ہائے نمایاں سر انجام دینے والے دیگر سیاست دان، بالخصوص، نواز شریف ان معنوں میں خان صاحب سے بڑے سیاست دان ہوئے کہ وہ یہ کارہائے نمایاں کم عمری میں ہی سر انجام دے چکے تھے۔ :) وہ بھی، اسی طرح کرپشن کے خاتمے کے لیے میدان میں کودے تھے۔ انہیں بھی اسٹیبلشمنٹ نے قریب قریب اسی بیانیے کے ساتھ لانچ کیا تھا۔ پاکستان میں یہ کھیل، پہلی بار کب کھیلا جا رہا ہے؟ :) وہ دو تہائی اکثریت سے آئے تھے؛ وہ بھی ایٹمی دھماکوں کا کریڈٹ لے کر دشمن کے چھکے چھڑانے کا دعویٰ کرتے ہیں۔ :) اور ان سب سے بڑھ کر، بھٹو صاحب! شاید وہ کسی حد تک اپنے دعوٰی میں حق بجانب بھی تھے!
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  3. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    13,164
    اسٹیبلشمنٹ ایک حد تک ہی انگلی پکڑ کر چلا سکتی ہے۔ آگے سے کچھ کام سیاست دان نے اپنی قابلیت پر بھی کرنا ہوتا ہے۔
    نواز شریف ، زرداری دور میں ملک کی خارجہ محاذ پر رسوائی معمول کا حصہ تھی۔ نواز شریف جس ملک کا دورہ کرتے وہاں سے اچھی طرح اپنے ساتھ ساتھ پورے پاکستان کی بےعزتی کروا کر لوٹتے۔ کم از کم عمران خان کو اتنا کریڈٹ تو دیں کہ وہ چلتا پھرتا پاکستانی سفیر ہے۔
     
  4. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    8,908
    آپ نے واقعی تاریخ کا مطالعہ نہیں کیا۔ نواز شریف صاحب کے پہلے دورِ حکومت میں امریکی سفیر کو وقت نہیں دیا جاتا تھا کہ وہ وزیراعظم آفس میں آ کر ملاقات بھی کر سکے۔ یہ سب پرانے حربے ہیں جو اپنے چاہنے والوں کے سامنے مقبول رہنے کے لیے اختیار کیے جاتے ہیں وگرنہ جو ہمارا حال ہے، وہ دنیا کے سامنے ہے۔ بین الاقوامی معاملات میں یہ صالح ظافریت نہیں چلتی۔ وزیراعظم کی تعریف میں یہ ترانے صرف ملک کے اندر ہی چلتے ہیں۔ :) بقیہ، دنیا میں جو ہمارا حال ہے، اظہر من الشمس ہے۔ اوقات تو ہماری یہ ہے کہ مودی تک وزیراعظم خان کا فون نہیں اٹھاتے اورہم ہیں کہ اپنی تعریف سے فرصت نہ ہے! :)
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  5. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    13,164
    پاکستانی وزیر اعظم کا فون اٹھا کر مودی نے اپنی حکومت نہیں گرانی۔ ان کو تو ووٹ ہی پاکستان مخالفت پر پڑے ہیں :)
     
  6. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    8,908
    جواز تو آپ کو ہر بات کا مل جائے گا؛ غیرت و حمیت کا کیا ہے صاحب! :) وہ سوکھی روٹی کھا کر اسے ڈبل روٹی کہتی سمجھتی رہے گی۔ :)
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  7. حسیب

    حسیب محفلین

    مراسلے:
    1,655
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    عید کی تعطیلات چودہ اگست تک ہی ہوں گی.
     
    • معلوماتی معلوماتی × 2

اس صفحے کی تشہیر