برقیائی گئی پانچ اسلامی و تاریخی کتب ۔

طالوت نے 'ای بکس کی تیاری' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جون 30, 2010

  1. سویدا

    سویدا محفلین

    مراسلے:
    1,839
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Question
    ڈاکٹر غلام جیلانی برق لکھتے ہیں :
    میری سابقہ تحریریں
    جو لوگ اس موضوع پر میری پہلی تحریروں سے آشنا ہیں وہ یقینا یہ اعتراض کریں گے کہ میرا موجودہ موقف پہلے موقف سے متصادم ہورہا ہے ، ان کی خدمت میں گذارش ہے کہ انسانی فکر ایک متحرک چیز ہے جو کسی ایک مقام پر مستقل قیام نہیں کرتی اور سدا خوب سے خوب تر کی تلاش میں رہتی ہے ، جس دن فکر انسان کا یہ ارتقا رک جائے گا علم کی تمام راہیں مسدود ہوجائیں گی ، کمال صرف رب ذوالجلال کا وصف ہے وہ جو بات کہتا ہے وہ از ابتدا تا انتہا ہر لحاظ سے کامل ہوتی ہے اور کسی تغیر کو قطعا گوارا نہیں کرتی، لیکن انسان صداقت تک پہنچتے پہنچتے سو بار گرتا ہے، میں بھی بارہا گرا، اور ہر بار لطف ایزدی نے میری دست گیری کی کہ اٹھاکر پھر ان راہوں پر ڈال دیا جو صحیح سمت کو جارہی تھیں، والحمدللہ علی ذلک۔

    نیز کتاب کے آغاز میں یہ اقتباس بھی ان کے کسی خط سے درج ہے :

    1952” کے بعد میں نے حدیث کے متعلق اپنا موقف بدل لیا تھا اور اس پر ”چٹان“ میں بارہا لکھ بھی چکا ہوں، ایک اور تبدیلی یہ کی کہ میں علماء اسلام کو خواہ وہ کسی مکتب فکر سے تعلق رکھتے تھے ، اسلام کا خادم ومعاون سمجھنے لگا ہوں، میرے عقائد وہی ہیں جو اہل سنت کے ہیں“۔
    (ڈاکٹر صاحب کے ایک خط سے اقتباس)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
  2. سویدا

    سویدا محفلین

    مراسلے:
    1,839
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Question
    کتاب کے بالکل آخر میں برق صاحب لکھتے ہیں :
    تو یہ تھے حضور صلی اللہ علیہ وسلم کے چودہ لاکھ اقوال میں سے صرف سات سو جو بیاسی عنوانات کے تحت درج ہوئے، ہے زندگی کا کوئی ایسا پہلو جس پر حضور صلی اللہ علیہ وسلم کے درجنوں ارشادات موجود نہ ہوں؟ہمیں قرآن وحدیث میں شبانی سے جہاں بانی تک مفصل ہدایات ملتی ہیں، اس لیے یہ کہنا غلط نہیں کہ اسلام ایک مکمل ضابطہ حیات ہے۔“
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
  3. سویدا

    سویدا محفلین

    مراسلے:
    1,839
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Question
    واضح رہے کہ ڈاکٹر غلام جیلانی برق نے ”دو اسلام“ ۱۹۴۹ میں تحریر فرمائی تھی۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  4. باذوق

    باذوق محفلین

    مراسلے:
    1,093
    صاحبِ "تفہیم اسلام بجواب دو اسلام" کے نام اپنے ایک خط (16-مئی-1971ء) میں برق صاحب نے بذاتِ خود اعتراف کیا کہ :
    صاحبِ "تفہیم اسلام بجواب دو اسلام" کے نام برق صاحب کے ایک اور خط (14-نومبر-1972ء) میں واضح اعتراف :
    میں نے ناشرین "دو اسلام" کو تاکید کی ہے کہ وہ اس کا آئیندہ کوئی ایڈیشن شائع نہ کریں۔

    ***
    یہ اعترافات کتاب "تفہیم اسلام" کے تیسرے ایڈیشن (1987ء) کے آخری صفحات میں شائع کئے گئے ہیں۔ ان شاءاللہ یہ کتاب بھی پی ڈی ایف شکل میں جلد منظر عام پر آ جائے گی۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
  5. طالوت

    طالوت محفلین

    مراسلے:
    8,357
    جھنڈا:
    SaudiArabia
    موڈ:
    Bashful
    مزید وضاحت کے لئے شکریہ باذوق و سویدا ۔
    وسلام
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1

اس صفحے کی تشہیر