اردو سیارہ

January 18، 2021

نویدظفرکیانیتجھ بن یہ دنیائے دلآویز کیا کرتا

تجھ بن یہ دنیائے دلآویز کیا کرتادفتر میں کیا جاتا، کرسی میز کیا کرتا جیون کی املاک کا قبضہ ملا نہیں ہےعمر کی لمبی چوڑی دستاویز کیا کرتا جگہ جگہ پر آوازیں تھیں بچھی ہوئیجادو نگری تھی، قدموں کو تیز کیا کرتا نعرہء یاہو تو سخت ضروری تھاسب کی خاموشی تھی معنی خیز ،کیا کرتا […]

محمد اظہارالحقوزیر ہمارا ہی بھائی ہے


ایک وزیر صاحب نے کہا ہے ''سابق حکومت ہمارے (یعنی موجودہ حکومت کے) راستے میں بارودی سرنگیں بچھا کر گئی ہے۔ انہیں پتہ تھا کہ ان کی حکومت نہیں آنی اور ان کے غلط معاہدوں اور منصوبوں کا خمیازہ آنے والی حکومت بھگتے گی۔ موجودہ حکومت نے ان کی غلط پالیسیوں کا بوجھ عوام پر نہیں ڈالا۔ اربوں روپے کی سبسڈی دی لیکن عوام پر بوجھ نہیں ڈالا۔ ان کی غلط پالیسیوں کا نتیجہ آنے والے سالوں میں بھی بھگتنا پڑے گا۔ جب ان سے سوال کرتے ہیں تو آئیں بائیں شائیں کرتے ہیں۔ ملک کو گروی رکھ کر چلے گئے۔ عوام نے ان کو مسترد کر دیا …

نویدظفرکیانیاس واسطے تو حسن کو مجھ سے گریز ہے

اس واسطے تو حسن کو مجھ سے گریز ہےمیں ماٹھا ماٹھا ہوں اور سمے تیز تیز ہے یہ عشق کیا ہے؟ عقد ہی دو احمقوں میں ہےاور یہ ”جمالِ میک اَپ“، تمھارا جہیز ہے ہو آتے ہیں اِک اور ہی عالم سے خان جینسوارکیا ہے ؟اِن کے لئے اِک ناویز ہے رہتا ہوں تیرے ُروئے […]

January 17، 2021

راشد ادریس رانافوجی ‏محمد ‏صدیق ‏کی ‏یادیں

نانا جان فوجی محمد صدیق مرحوم: 
والدہ کے چچا تھے لیکن ہمیں ہمیشہ نانا جان سے بڑھ کر پیار ملا بلکہ جو اور جتنا پیار ان سے ملا کسی سے نا ملا ہو گا:

وہ اپنے بچپن کے بارے بتاتے کہ:

ایک بار بہت بیمار تھا بیماری سے تھوڑا ہوش آیا تو بے بے (ماں جی) سے کھانے کی فرمائش کی کہ بے بے روٹی کھانی ہے لیکن مکھن کے ساتھ۔ بے بے نے خالی سی نظروں سے صحن میں پھیلی غربت کو دیکھا اور ڈبڈبائی آنکھوں سے پیار کیا اور کہا اچھا میرا پت میں لائی۔

بے بے نے سفید کپاہ (روئی) کا پھمبا لیا اور اسکو دھو کے صاف کرکے روٹی کے ساتھ رکھ …

نویدظفرکیانیہم ہیں حسنِ اشتہاء انگیز کے دونوں طرف

ہم ہیں حسنِ اشتہاء انگیز کے دونوں طرفجیسے پیاسے کھیت ہوں کاریز کے دونوں طرف ہائے کیوں دونوں کسی بھی بات پر ٹھہرے نہیںدیر تک بیٹھے رہے ہیں میز کے دونوں طرف وقت کے گرداب میں احساس ہو پاتا نہیںعقبیٰ ہے دنیائے فتنہ خیز کے دونوں طرف رنگ کیسے بھر سکے گا اِتنی اُمیدوں میں […]

January 16، 2021

نویدظفرکیانیوفورِ ہجر میں اس بات کی دہائی نہ تھی

وفورِ ہجر میں اس بات کی دہائی نہ تھیپڑا تھا پالہ مگر پاس وہ رضائی نہ تھی محبتوں میں فسادات یوں نہ ہو پائےہمارا پھپھا نہیں تھا، تمہاری تائی نہ تھی وہ پارلر سے بھی ہو آئی تھی مگر اب کےمرے حواسوں پہ بجلی گرانے پائی نہ تھی وہ پشتو بول رہا تھا، میں سر […]

January 15، 2021

نویدظفرکیانیاُس شوخ سے اب جائے مفر کچھ بھی نہیں ہے

اُس شوخ سے اب جائے مفر کچھ بھی نہیں ہےہے ایسا "اگر "جس کا "مگر” کچھ بھی نہیں ہے انصاف ہمیشہ سے ہی بتی ہے ٹرک کیجز جھوٹ وکالت کا ثمر کچھ بھی نہیں ہے دکھلاتے پھریں خاک چراہگاہیں گدھوں کوہم خود بھی اُدھر ہیں کہ جدھر کچھ بھی نہیں ہے سسرال میں پھر چودہ […]

افتخار اجمل بھوپالقائداعظم اور قرآن

اکثر محفلوں میں یہ سوال پوچھا جاتاہے کہ قائداعظمؒ کی تقاریر میں جابجا قرآن حکیم سے رہنمائی کا ذکر ملتا ہے۔ کیا انہوں نے قرآن مجید پڑھاہوا تھا اور کیا وہ قرآن مجید سے رہنمائی لیتے تھے؟ اگر جواب ہاں میں ہےتو اس کےشواہد یا ثبوت دیجئے۔ رضوان احمد مرحوم نے گہری تحقیق اور محنت […]

January 14، 2021

محمد اظہارالحق………فیڈرل اور صوبائی پبلک سروس کمیشن! یا ٹھہرا ہوا متعفن پانی؟


پنجاب پبلک سروس کمیشن میں جو کچھ ہوا آپ میڈیا میں پڑھ اور سُن چکے ہوں گے!
لیکچرر، تحصیلدار، اکاؤنٹس افسر، سمیت خالی اسامیاں پُر کرنے کے لیے جو امتحانات کمیشن نے لینے تھے، یا لیے، ان کے پرچے لاکھوں میں فروخت ہوئے۔ اسے لطیفہ سمجھیے یا ٹریجڈی کی انتہا کہ اینٹی کرپشن کے محکمے کی اسامیوں کے پرچے بھی بیچے گئے۔ جن دو امیدواروں نے انسپکٹر اینٹی کرپشن لگنے کے لیے امتحان میں ٹاپ کیا، انہوں نے بھی پرچے خریدے تھے۔ لیکن یہ جو کچھ آپ نے پڑھا یا سنا یہ تو صرف مکھن ہے جو اوپر کی سطح پر آ گیا۔ نیچے کیا ہے؟ لسّی …

January 13، 2021

محمد بلالراج کماری کا شہر دیو گڑھ


راج کماری اوچاں رانی کے شہر دیوگڑھ جانا بھی عجب اتفاق ہی تھا اور پھر بڑی مشکل سے وہاں کے ”دیو“ سے جان چھڑائی۔۔۔ ہوا کچھ یوں کہ جب ہم دیو گڑھ پہنچے تو وہ جگہ قبرستان نما تھی اور وہاں پر مقبروں اور مزاروں کا یوں ہی سمجھیں کہ پورا کمپلکس تھا۔ اور پھر دیو اور جِنوں نے ہمیں گھیر لیا۔ وہ ایسے نذرانہ نکلوانے کے درپے تھے کہ جیسے جگا لینا یا ہفتہ وصولی کرنی ہو۔ بلکہ وہ لوگ تو ایسے پیچھے پڑ گئے جیسے ہماری جان ہی بطور نذرانہ وصول کریں گے۔ اور پھر وہاں ایسی صورتحال بن گئی کہ←  مزید پڑھیں

January 12، 2021

محمد اظہارالحقآگ خون اور آنسو



کوئٹہ پہنچ کر سرائے میں سامان رکھنے کے بعد پہلا کام یہ ہوتا کہ میثم کو فون کرتا۔ وہ ایک سرکاری دفتر میں ملازم تھا اور میرا دوست ! یاد نہیں یہ دوستی کب آغاز ہوئی اور کیسے ۔ بس دوستی ہونے کے لیے یہ کافی تھا کہ وہ فارسی بولنے والوں میں سے تھا۔ مزدوری کا وقت ختم ہوتا ، اس کا ، اور میرا بھی ، تو ہم دونوں نکل پڑتے۔ علمدار روڈ ہماری جولانگاہ ہوتی! طول طویل علمدار روڈ ! پہلے کسی ریستوران میں افغان کھانا کھاتے! قہوہ پیتے ! پیالہ در پیالہ ! پھر کتاب فروشوں کا رُخ کرتے ! اب تو معلوم نہیں ان کا کیا بنا ، …

محمد اظہارالحقبزرگوں کی نصیحت پر عمل نہ کرنے کا نتیجہ



گھر والے پریشان تھے اور ہکا بکا ! میں نے دو تبادلوں  کا فوری حکم  دیا تھا۔

باورچی کو باغ میں تعینات کر دیا کہ باغبانی کے فرائض  سرانجام دے  ۔مالی روتا ہؤا آیا کہ اس کا آخر قصور کیا ہے۔ اسے تسلی دی اور ہدایت کی  کہ باورچی خانہ سنبھال لے ۔  آج سے وہ  کھانا پکائے گا۔  بیوی نے احتجاج کیا۔ میں خاموش سنتا رہا۔مگر فیصلہ نہ بدلا۔ بچوں نے ان تبدیلیوں کی وجہ پوچھی ۔ انہیں کہا کہ منہ بند رکھیں اور گھر کے معاملات میں ٹانگ نہ اڑائیں ۔ گھر میرا ہے۔ ان کا نہیں۔ 

باغبان نے کھانا کیا پکانا تھا۔ پلاؤ بنانے کی کوشش …

January 08، 2021

امتیاز خانفطرت سے بغاوت کا انجام اندوہناک

کورونا وائرس نے عالمی سطح پر بدستورخوف و ہراس کا ماحول قائم کیا ہوا ہے۔ اس عالمی وبا نے جو حالات پیدا کئے ہیں اس سے ایک بات تو طے ہے کہ اب پوری دنیا کو ہیلتھ بجٹ کو ترجیح دینا ہوگی۔ دنیا بھر میں اس وبا سے مرنے والوں کی تعداد18لاکھ سے زائد پہنچ […]

افتخار اجمل بھوپالاُردو قومی زبان کیسے بنی ؟ بہتان اور حقیقت

آج سے 72 سال 9 ماہ قبل 21 مارچ کو ایک واقعہ ہوا تھا جسے درست بیان کرنے کی بجائے نامعلوم کس مقصد کیلئے قوم کو خود تراشیدہ کہانیاں سنائی جاتی رہی ہیں اور اب تک سنائی جاتی ہیں ۔ جن صاحب نے سب سے پہلے خود تراشیدہ کہانی کو کتابی صورت میں پیش کیا […]

January 07، 2021

محمد اظہارالحقاک ذرا سیاست سے ہَٹ کر



مولانا، مریم بی بی، زرداری صاحب اور عمران خان کو کچھ دیر کیلیے شطرنج پر جھکا چھوڑ دیتے ہیں۔ سردست پولیس سے بھی نہیں پوچھتے کہ نہتے اور بے قصور اسامہ ستی کو سترہ گولیاں مار کر اپنی عاقبت کو کیوں سنوارا! کچھ شاعری اور محبت کا ذکر کر لیتے ہیں کہ زندہ رہنے کیلئے یہ آکسیجن بھی ضروری ہے۔
ہمارے دوست ڈاکٹر معین نظامی، وقفے وقفے سے، سوشل میڈیا پر، ادب کے مرجان اور لولو، ہمارے سامنے رکھتے رہتے ہیں! رشک آتا ہے ان کے حسنِ انتخاب پر! فارسی ادب ایک بے کنار سمندر ہے اور معین نظامی اس کے غوّاص! اب ایسے ثقہ …

January 06، 2021

فلک شیرنو برس ہوتے ہیں

 نو برس ہوتے ہیں

ہر کسی کے اپنے نو برس ہوتے ہیں

سیرِ صحرا سے لبِ دریا تک

عمر کوٹ سے بھٹ جو گوٹھ تک

سسی کی پیاس سے خضر کے گھڑے تک

بے انت بے سمتی سے یکسوئی کی مٹھاس تک

کانٹوں کے عرق سے ترتراتے پراٹھےسے....

شکرگزاری کی سوکھی روٹی تک

بے مصرف بنجر دنوں سے موتیوں جیسے لمحوں کے ڈھیر تک

واقف انجانوں کی بھیڑ سے دل میں اترے اجنبیوں کی مجلس تک


اور


کسی بربادکوزہ گر، جو اپنے ہی کوزوں سے رنجور ہو....

کوپھر سے اپنے چاک پہ شرابور ہونے تک

نو برس درکار ہوتے ہیں


پر یہ نو برس ہمیشہ سو سے آٹھ زیادہ مہینوں کے نہیں …

حیدرآبادیمورس لیول کے ہیبتناک افسانے - ترجمہ از امتیاز علی تاج - pdf download

maurice-level-horror-stories
نامور ادیب و مصنف سید امتیاز علی تاج کہتے ہیں کہ ۔۔۔
اردو کے ادبی رسائل میں ترجمہ شدہ مختصر افسانوں کے لیے عام طور پر ادب کے وہ ارزاں نمونے منتخب کیے جاتے ہیں جو پست معیار کے انگریزی جرائد میں شائع ہوتے رہتے ہیں۔
اردو میں مختصر افسانے کے فن پر ایک مفصل اور تعمیری تنقید کی کتاب لکھنے کی ضرورت اس وقت ہی پڑے گی جب تک زبان بہترین افسانوں کے نمونوں سے آشنا نہ ہو جائے۔
مختصر افسانے کے مطالعے کے دوران فرانسیسی افسانہ نگار مورس لیول [Maurice Level] کی کہانیاں اپنی کئی خصوصیات کے باعث مجھے اس قابل معلوم …

January 05، 2021

عامر شہزاد5 جنوری 2021 مفت ویب ڈویلپمنٹ


Please do share this post.
براہ مہربانی اس پوسٹ کو شیئر کریں۔

Here's the video of last session "05-Jan-21 FREE Web Development session" https://youtu.be/JquV4pbvr4I

For more videos about FREE Web Development Session, check this playlist "FREE Web Development Sessions" https://www.youtube.com/playlist?list=PLuSlqiqQkM0wepYUxRHnZVdeQvVOcwP9f

START "Selectors" https://www.w3schools.com/css/css_selectors.asp
ENDED "How To Add CSS" https://www.w3schools.com/css/css_howto.asp

Timestamp
00:00:00 Intro …

January 01، 2021

امتیاز خانماہ و سال یونہی گزرتے رہیں گے

صادق جذبوں سے مسافتوں کو طے کریں ایک اور سال بیت گیا۔آغازِ سال تو مجھے یاد نہیں ،جنوری کی ایسی ہی کوئی صبح ہوگی البتہ ابھی کل ہی کی بات لگ رہی ہے کہ دنیا ایک ایسے وبا سے آشنا ہوگئی جس نے سبھی چھوٹی بڑی طاقتوں کوقدرت کے سامنے سر جھکانے پر مجبور کیا۔سال […]

Kitaabistan157-فرشتوں کی تاریخ از یاسر جواد

قدیم بابلی مذاہب سے لے کے تین بڑے الہامی مذاہب میں موجود فرشتوں کے تصورات کو علیحدہ علیحدہ قلم ذد کیا گیا ہے تاہم دیگر غیر الہامی مذاہب جیسے بدھ مت یا ہندو مت کے لئے کوئی علیحدہ باب مقرر نہیں کیا گیا ہے۔ غالباً اس کی وجہ یہ ہے کہ کثیر دیوتاؤں پہ مشتمل مذاہب میں دیوتا خود ہی انسانی دنیا میں ظاہر ہوئے اور کسی وسیلے کو استعمال نہیں کیا اس لئے فرشتوں کا تصور ان مذاہب میں اس طرح موجود نہیں جیسا کہ دیگر الہامی مذاہب میں مذکور ہے۔

December 31، 2020

محمد بلالاے سالِ رفتہ 2020ء


زندگی کی کیسی خوبصورتی ہے کہ ہم مرنے کے بعد بھی کسی کیڑے کی خوراک، کسی درخت کی شاخ، کسی پھول کی پتی بن کر زندہ رہیں گے۔ یہ بات کرنے والا ہمارا پیارے دوست بھی اسی سال بچھڑا اور ہمیں روتا چھوڑ گیا۔ ہمارے لئے اس سال 2020ء کا آغاز بہت دل دہلا دینے والا تھا۔ دیکھتے ہی دیکھتے وبا نے پوری دنیا کو اپنی لپیٹ میں لے لیا۔ وہ دن مشکل تو تھے مگر ہم دیہاتیوں کے لئے ویسے ہرگز نہیں تھے کہ جیسے شہری لوگوں کے لئے تھے۔ کھلی فضاؤں میں سانس لینے کے لئے لہلہاتیں فصلیں اور قریب ہی بہتا چناب۔ اور پھر وہ جو گاؤں ویران …

December 28، 2020

محمد بلالمیں منظرباز ہوں مقابلہ باز نہیں


میرے لئے سیاحت صرف سیروتفریح اور فوٹوگرافی صرف تصویروں کا نام نہیں، بلکہ بات اس سے آگے کی ہے۔۔۔ اور اس کے لئے جو راستہ اپنایا ہے اس پر چلتے ہوئے ایک ایک لمحہ مجھے خوشی دیتا ہے۔ میں اس میدان میں اس لئے نہیں کہ مجھے کچھ ثابت کر کے کسی کو دکھانا ہے۔ مجھے تو بس اس منظربازی کے ذریعے ایسا عرق کشید کرنا ہے کہ جو روح کو تازہ دم اور زندگی کو سرشار کر دے۔ لہٰذا گزارش فقط اتنی سی ہے کہ مجھے اپنا مدِ مقابل (حریف) ہرگز نہ سمجھیئے۔ کیونکہ میں ایسی کسی دوڑ کا بندہ سرے سے ہوں ہی نہیں۔ مجھے کچھ ثابت نہیں کرنا، …

ابو شاملبهترین خرس ولنتاین را از آبنبات بخرید

از حدود یک ماه دیگر “خرس ولنتاین” به وفور در گوگل سرچ می شود. اگر به دنبال یک هدیه جذاب و دوست داشتنی برای همسر، دوست دختر، عشق، نامزد و یا یک فرد عزیز در زندگی خود هستید می توانید از روز ولنتاین برای دادن این هدفه استفاده کندی. روز ولنتاین Valentine’s Day یا روز… Continue reading بهترین خرس ولنتاین را از آبنبات بخرید

The post بهترین خرس ولنتاین را از آبنبات بخرید appeared first on abushamil.

December 26، 2020

حیدرآبادیمجتبیٰ حسین کے منتخب کالم - ترتیب از حسن چشتی - pdf download

mujtaba-hussain-columns-hasan-chishti
حسن چشتی (پ: 15/اکتوبر 1930 ، م: 25/دسمبر 2020)
جامعہ عثمانیہ سے گریجویشن کر کے جامعہ عثمانیہ ہی کی انتظامیہ سے وابستہ ہوئے تھے جہاں 28 سال تک خدمات انجام دینے کے بعد 1979ء میں وظیفہ پر سبکدوش ہوئے اور بعدازاں سعودی عرب منتقل ہوئے جہاں سات برس تک مختلف خدمات انجام دینے کے بعد 1986ء میں امریکہ منتقل ہو گئے۔
اردو شعر و ادب سے انہیں خاصی دلچسپی رہی اور اپنے ادبی ذوق کی تسکین کے لیے مختلف اخبارات و رسائل میں کام بھی کیا۔ حیدرآباد میں کئی ادبی، سماجی اور فلاحی اداروں سے وابستہ رہے۔
سعودی عرب میں بزم …

December 25، 2020

افتخار اجمل بھوپالکیا قائدِاعظم پاکستان کو ایک سیکولر ریاست بنانا چاہتے تھے ؟

دانشوروں کا ایک منظم گروہ گزشتہ 2 دہائیوں سے یہ ڈھنڈورا پیٹنے میں مصروف ہے کہ قائداعظم سیکولر ذہن کے مالک تھے اور وہ پاکستان میں سیکولر نظام نافذ کرنا چاہتے تھے ۔ یہ حضرات قائداعظم کی 11 اگست 1947ء کی تقریر کو اپنا سیکولر ایجنڈا آگے بڑھانے کے لئے استعمال کرتے ہیں ۔ قائداعظم […]

December 23، 2020

خاور کھوکھرپلان ابھی جاری ہے ۔

یہ جو ٹائیگر فورس بن رہی ہے ناں ؟یہ  بھیک کو گراس روٹ لیول تک پہنچانے کے پروجیکٹ کا ہی ایک حصہ ہے ،۔گراس روٹ لیول ، یعنی کہ گھاس کی جڑوں تک دھرتی میں پہنچانا ،۔اپنے دیسی دانش کے فلاسفر جناب چان نکّیہ صاحب سے ایک روایت منسوب ہے کہ ایک دن کسی کانٹوں والی جھاڑی کی جڑوں کو گڑ کا شربت پلا رہے تھے ،۔کسی نے پوچھا کہ یہ کیا ہے ؟تو ہند کے عظیم ترین عقل مند نے بتایا کہ اس جھاڑی نے مجھے زخمی کیا ہے ،۔میں اس

خاور کھوکھر

سرمایہ دارانہ نظام کی ایک فرض عبادت آڈٹ کروانا ہے ، جو کمپنی آڈٹ نہ کروائے مہذب ملکوں میں اس کمپنی کو " کام بند " کرنے کا حکم ہو جاتا ہے ،۔کیپٹل ازم اگرچہ کہ اپنے مذہب ہونے کا دعوہ نہیں کرتا ، نہ اس کا کوئی نبی پیغمبر ہے ، لیکن اپنے عبادت خاص کر فرض عبادات کا سختی سے تقاضا کرتا ہے کیونکہ یہ مذہب نیکیاں نہیں کرنسی کمانے اور خرچ کرنے کا مذہب ہے ،۔اگر ٹیکسٹائل کمپنی کو منافع زیادہ ہو گیا ہے تو ؟یہ

محمد تابش صدیقینظم: اسلامی جمعیت طلبہ کی نذر

اسلامی جمعیت طلبہ کی نذر
٭
ایک عزمِ جواں ہے جمعیت
ایک کوہِ گراں ہے جمعیت

اس کا مقصد ہے خاص رب کی رضا
یوں کلیدِ جِناں ہے جمعیت

ہر زمانہ ہے فیض یاب اس سے
ایک چشمہ رواں ہے جمعیت

یوں سنوارے ہیں سیرت و کردار
جیسے اک باغباں ہے جمعیت

ہر کوئی ہے شریکِ رنج و خوشی
گویا اک خانداں ہے جمعیت

بے تکلف، معاون و بے لوث 
محفلِ دوستاں ہے جمعیت

شکر تابشؔ ادا کرو رب کا
نعمتِ بے کراں ہے جمعیت
٭٭٭
محمد تابش‎ صدیقی

December 22، 2020

محمد بلالٹلہ جوگیاں کی ستاروں بھری رات


لذیذ کھانوں نے ٹلہ جوگیاں کے جنگل میں صرف منگل ہی نہیں بلکہ بدھ جمعرات بھی کر دیا۔ اونٹ اور گدھے گھوڑوں نے مل کھایا۔ تاروں سے بھرے آسمان تلے، الاؤ جلے۔ لیکن اکثر احباب الاؤ جلانے سے کترانے لگے۔ خیر ٹلہ ہو، تاروں بھرا آسمان ہو اور الاؤ نہ جلے، رات کی ایسی بے حرمتی کم از کم اپنی برداشت سے باہر ہے۔ آخر جنگل سے لکڑیاں لینے گیا اور میں تو خیر خیریت سے واپس آ گیا لیکن پھر کچھ لوگ گھپ اندھیرے میں جنگل کی طرف ”گھوسٹ ہنٹنگ“ کے لئے چلے۔ چلتے چلتے میں انہیں جنگل میں ایک کنویں تک لے گیا، جس کے اندر ہڈیوں کا …

December 21، 2020

محمد بلالمقامِ غروب – ٹلہ جوگیاں


او میری جان دے ٹوٹے! تم “مرکھائی“ سے چھلانگ لگا کر خودکشی نہ کرنا۔ وہ کیا ہے کہ ”مر کے بھی چین نہ پایا تو کدھر جائیں گے“۔ ویسے بھی ہم جو تیری یاد میں مرے جا رہے ہیں، وہ کیا کم ہے؟ اب تم بھی مر کر کیا ہماری دنیا ویران کرو گے؟ چل چھوڑ! ٹلہ ٹاپ پر چلتے ہیں۔۔۔ لو جی پہنچ گئے۔ اب بس جلدی جلدی خیمے لگاؤ اور ان میں سامان رکھو۔ باقی باتیں بعد میں ہوں گی۔ پہلے مقامِ غروب پر جا کر غروبِ آفتاب کا نظارہ تو کر لیں۔۔۔ ویسے کیا تمہیں خوف کے اُس پار جانا ہے؟ فطرت کو روح تک سمانا ہے؟ اور اپنے اندر دیا جلانا ہے؟ …

محمد احمدغزل ۔ بہہ نہ جانا کہیں بہاؤ میں ۔ محمد احمد

غزل

بہہ نہ جانا کہیں بہاؤ میں
رکھنا پتوار اپنی ناؤ میں

نا اُمیدی مرے مسیحا کی
عمر کاٹی ہے چل چلاؤ میں

عصرِ تازہ کا ترجماں ہے وہ
واہ مضمر ہے اُس کی واؤ میں

چارہ گر! ہے یہ اعتبار کا زخم
تیر گننا عبث ہے گھاؤ میں

دوستوں کو خبر نہ ہو پائی
رہ گیا میں کسی پڑاؤ میں

مسکراتے رہا کرو احمدؔ
رکھ رکھاؤ ہے، رکھ رکھاؤ میں

محمد احمدؔ

December 19، 2020

حیدرآبادیہندوستان میں مسلمان - پاکستانی مسلمانوں کی غلط فہمیاں

india-pakistan
سوشل میڈیا پر عموماً ہندوستان و پاکستان کے تقابل و موازنہ کے دوران دونوں طرف کے مسلمان غلط فہمی یا مبالغہ آرائی کا شکار ہوتے ہیں۔ اسی ضمن میں ایک ہندوستانی مسلمان کی جانب سے چند غلط فہمیوں کا ازالہ کرتی ہوئی ایک تحریر یہاں ملاحظہ فرمائیں۔
تحریر بشکریہ: جناب شیرخاں جمیل احمد کی فیس بک ٹائم لائن
"من كان بيته من زجاج فلا يرمي الناس بالحجر"
(شیشے کے گھر میں بیٹھ کر دوسروں کی طرف پتھر نہیں پھینکا جاتا)

آج فیس بک کھولا تو ہمارے ایک عزیز دوست کی پے در پے دو پوسٹ پر نظر پڑی:
"پاکستان کی قدر و منزلت اگر …

پروفیسر محمد عقیلسانپ خدا کے حکم سے کاٹتا ہے؟

بسم اللہ الرحمٰن الرحیم یہ سولہ قبل  کی ایک  سرد رات تھی اور میں اپنے دوستوں کے ساتھ  نورانی شاہ کے پہاڑوں میں  ایڈوینچر پر تھا۔انسانی مزاروں سے تو دلچسپی نہ تھی البتہ  خدائی پہاڑوں سے ضرور تھی۔ رات کافی سناٹا تھا اور ارد گرد کے پہاڑ دیو ہیکل جن کی مانند لگ رہے تھے۔ […]

December 18، 2020

افتخار اجمل بھوپالجانوروں سے بدلہ

ميں 8 دسمبر 2020ء کو انسانوں سے بدلہ لکھ چکا ہوں جس ميں اس سے متعلق الله کا فرمان نقل کر چکا ہوں ۔ ہم لوگ اتنے خود پسند اور خود غرض ہو چکے ہيں کہ بے زبان جانوروں کو بھی معاف نہيں کرتے ۔ انسان بول سکتے ہيں بدلہ لے سکتے ہيں مگر جانور […]

December 17، 2020

محمد تابش صدیقیغزل: سن کے گھبرا گئے تھے جو نامِ خزاں ٭ تابش

 سن کے گھبرا گئے تھے جو نامِ خزاں
آ گئی راس ان کو بھی شامِ خزاں

ہم بہاروں سے مایوس کیا ہو گئے
دیس میں بڑھ گئے یونہی دامِ خزاں

غم ضروری ہے قدرِ خوشی کے لیے
ہے یہی غمزدوں کو پیامِ خزاں

دن بہاروں کے آ کر چلے بھی گئے
ہم تو کرتے رہے اہتمامِ خزاں

گر کلامِ بہاراں ہے گل کی مہک
تو ہے پتوں کی آہٹ کلامِ خزاں

سوکھے پتے نہ کچلو یوں پیروں تلے
کچھ تو تابشؔ کرو احترامِ خزاں
٭٭٭
محمد تابش صدیقی​

محمد تابش صدیقینظم: ٹوٹا ہوا تارا ٭ تابش

 نظم: ٹوٹا ہوا تارا

٭​

رات خاموش ہے، تاریک فضا ہے ہر سو
دور افق پر کوئی تارا ہے مگر ٹوٹا ہوا
دل یہ کہتا ہے اسے پاس بلا لوں اپنے
اور پھر دیر تلک، دیر تلک باتیں کروں
باتوں باتوں میں بکھرنے کا سبب پوچھ لوں میں
شاید اس دل کے بکھرنے کا سبب مل جائے
یا ہمیں غم سے بہلنے کا سبب مل جائے
اسی اثناء میں یہ تاریکیِ شب چھٹ جائے

٭٭٭

محمد تابش صدیقی

December 16، 2020

حیدرآبادیڈاکٹر عبدالحق اردو یونیورسٹی کرنول (آندھرا پردیش) میں چند لمحات

از: مکرم نیاز (حیدرآباد، انڈیا)۔
ڈاکٹر عبدالحق اردو یونیورسٹی (کرنول، آندھرا پردیش)
اور ڈاکٹر قیسی قمرنگری

***
پرسوں پیر 14/دسمبر کو ایک عزیز کی شادی خانہ آبادی کی تقریب میں شرکت کی خاطر چند گھنٹوں کے کرنول دورہ کا موقع دستیاب ہوا۔ ڈاکٹر وصی بختیاری کے بتوسط اردو یونیورسٹی کے وائس چانسلر محترم پروفیسر مظفر شہ میری سے ملاقات کا وقت بھی طے ہوا تھا مگر بدقسمتی سے ملاقات ممکن نہ ہو پائی۔ کرنول پہنچتے ہی پروفیسر صاحب کو کال کرکے مطلع کرنا میں بھول گیا۔ میرے کزن اشفاق نے جب بس اسٹانڈ سے مجھے پِک کیا …

December 15، 2020

محمود الحقتصویر کائنات میں رنگ ( کائنات کے سر بستہ راز )

(یہ تحریر الفاظ سے زیادہ رنگوں کی زبان میں ہے جو کہ نیچے تصاویر کی شکل میں اپنا مدعا بیان کریں گی)
کائنات کی خوبصورتی میں  رنگوں کو بنیادی اہمیت حاصل ہے کیونکہ رنگوں کی ترتیب و تشکیل نے بنی آدم کے ارد گرد  ایک ایسا ہالہ تشکیل دے رکھا ہے کہ انسان ان کی جاذبیت سے سحرزدہ دکھائی دیتا ہے۔لباس کی تراش خراش میں رنگوں کو بنیادی اہمیت حاصل ہے ۔ڈریسنگ ٹیبل سے لے کر ڈرائنگ روم تک اور گھر کی کیاری سے باغات تک رنگوں کے خوبصورت امتزاج نے انسانوں کو اپنے سحر میں گرفتار کر رکھا ہے۔خوبصورت چیزیں اسی وقت …

December 12، 2020

امتیاز خانسیاسی شعورکی بیداری اہم ضرورت

سیاست ایک مقدس لفظ اور عمل ہے جس کا مقصدانسانی خدمت ہے ۔یہ ایسی خوبصورت چیز ہے جس سے جسم و جان میں آگے بڑھنے، کچھ کر گزرنے کی تحریک پیدا ہوتی ہے۔ سیاست تو بہترین انسانی زندگی گزارنے کے اصول طے کرنے والا ایسا خوبصورت عمل ہے جس کے مفہوم میں فلاح و صلاح […]

December 09، 2020

امتیاز خانکتب بینی سے بے رخی کیوں؟

موجودہ دور میں انسان جتناٹیکنالوجی سے قریب ہوتا جارہا ہے، کتب بینی کا شوق بھی دم توڑتادکھائی دے رہاہے ۔کتابیںصرف لائبریریوں اور چند اہل ذوق تک محدود رہ گئی ہے۔کچھ لوگ انٹرنیٹ کو اس صورتحال کا قصور وار ٹھہراتے ہیںلیکن یہ کہنا درست نہیں کیونکہ انٹرنیٹ ایک میڈیم ہے، جس نے دنیا کو ایک گلوبل […]

محمد وارثصائب تبریزی کے کچھ متفرق اشعار - 3

 گر ببینی ناکساں بالا نشیند صبر کن

روئے دریا کف نشیند، قعرِ دریا گوہر است

اگر تُو دیکھے کہ نااہل اور نالایق لوگ رتبے میں تجھ سے بلند ہیں تو صبر کر، کیونکہ سمندر کے اوپر جھاگ ہوتی ہے اور گوہر سمندر کی تہہ میں ہوتا ہے۔

----------

اظہارِ عجز پیشِ ستم پیشگاں خطاست

اشکِ کباب باعثِ طغیانِ آتش است

ستم پیشہ، ظالم لوگوں کے سامنے عاجزی کا اظہار کرنا غلطی ہے کیونکہ کباب سے گرنے والے قطرے آگ کو مزید بڑھکا دیتے ہیں۔

----------

می شوند از گردشِ چشمِ بُتاں زیر و زبر

عشقبازاں را غمے از گردشِ افلاک نیست

وہ تو …

December 08، 2020

افتخار اجمل بھوپالانسانوں سے بدلہ

ہم اپنی روز مرّہ کی زندگی ميں خود ہی کچھ مفروضے بنا کر اپنا اوليں حق سمجھتے ہوئے اُن پر بے دھڑک عمل کرتے ہيں ۔ ان ميں سے ايک ہے بدلہ ۔ جب ہم کوئی بھی جنس ليتے ہيں مثال کے طور پر گوشت ۔ گاجريں ۔ سيب ۔ چنے کی دال ۔ وغيرہ […]

December 06، 2020

حیدرآبادیعظیم تر حیدرآباد بلدیہ کے 150 وارڈوں کی فہرست

ghmc-150-wards
از: مکرم نیاز (حیدرآباد، انڈیا)۔
ریاست تلنگانہ کے صدر مقام حیدرآباد کی مقامی بلدیہ، عظیم تر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن
Greater Hyderabad Municipal Corporation (GHMC)
کے نئے انتخابات کا اعلان تلنگانہ ریاستی انتخابی کمیشن کے کمشنر سی۔ پارتھا سراتھی نے 17/نومبر 2020 کو کیا ہے۔ ریاستی الیکشن کمشنر کے مطابق بلدیہ حیدرآباد کے 150 وارڈز کے لیے انتخابات ایک ہی دن یعنی منگل یکم/دسمبر 2020 کو عمل میں آئیں گے اور ووٹوں کی گنتی 4/دسمبر کو ہوگی۔
یاد رہے کہ یہ انتخابات ای۔وی۔ایم مشینوں کے ذریعے نہیں ہوں گے۔ …

December 04، 2020

ابو شہیر سید سلمان رضااللہ مالک ہے

کسی پریشانی۔۔۔ کسی اچانک مصیبت۔۔۔ کسی کٹھنائی میں۔۔۔ یا بہت سوچ بچار کے باوجود بھی حل نہ تلاش کر پانے کی صورت میں۔۔۔ ہمارے منہ سے عادتاً یا غیر اختیاری طور پر ایک جملہ نکلتا ہے۔۔۔ اللہ مالک ہے۔ ایک روز سوچنے بیٹھا۔۔۔تو اس جملے کے کئی رنگ کئی پہلو نظر آئے۔ صاحب کیا ہی… Continue reading اللہ مالک ہے

December 03، 2020

نورین تبسم"اچھائی،برائی "

سورہ الانعام (6)۔پارہ 7۔ آیت 54۔
تمہارے رب نے اپنے ذمہ رحمت لازم کی ہے، جو تم میں سے ناواقفیت سے برائی کرے پھر اس کے بعد توبہ کرے اور نیک ہو جائے تو بے شک وہ بخشنے والا مہربان ہے۔
برائی کر کے بھولو نہیں اور اچھائی کر کے بھول جاؤ۔
برائی ہو یا اچھائی دونوں کے بدلےضرور ملتے ہیں اور اسی دنیا میں اپنی آنکھ کے سامنے۔لیکن آنکھ بھی وہ جو محض بصارت ہی نہ ہو بلکہ بصیرت کے نور سے بھی روشن ہو۔آنکھ بصارت سے بڑھ کر بصیرت ہے۔
ہر برائی کی سزا نہیں اور ہر اچھائی کی جزا نہیں ۔کہتے ہیں انسان خطا کا پُتلا …

November 28، 2020

محمود الحقغبارِ عشق

زندگی جینے کے ڈھنگ نرالے ہیں کسی کو کہیں کہ آ لوٹ چلیں تو کہتے کہ بیٹھ جاؤ اتنی بھی کیا جلدی کچھ دیر تو ٹھہرو۔ اگر بیٹھ جائیں تو کہتے کہ جانے کا وقت نہیں ہوا ، وقت بھی کبھی کسی کا ہوا ہے۔ جو پوچھ لے اسے پتہ چل جاتا ہے جو نہ سمجھے تو گزر جاتا ہے۔قلب بس سے باہر ، دل میں ایک پیاس جو بہاؤ کی طالب ہے۔ایک جنگ میں مبتلا ہیں جہاں دشمن کوئی نہیں ۔ بس روح کے لئے بدن تنگ ہوجاتا ہے۔ جیسے بچہ بڑا ہوتا ہے تو پرانے کپڑے اسے تنگ ہوتے جاتے ہیں۔ بڑھتے جسم نئے کپڑے میں سماتے ہیں۔ جسم کپڑوں کی مانند چھوٹا ہو …

امتیاز خانرشتوں کے انتخاب میں دوہرا معیارکیوں؟

سماج کو درپیش مسائل میں اِس وقت رشتوں کا انتخاب بالخصوص لڑکیوں کی شادی ایک بہت اہم مسئلہ بن چکا ہے ۔کئی والدین چاہتے ہوئے بھی اپنی بیٹیوں کے ہاتھ پیلے نہیں کرپارہے ہیں۔ ہم سب جانتے ہیں کہ غیر اسلامی اور غیر انسانی رسم و رواج کی وجہ سے غرباءکی بیٹیاں بے بسی اور […]

November 24، 2020

محمد احمدنو برس - ایک نثری نظم

 آج ہم نے اپنے عزیز دوست اور اُستاد فلک شیر بھائی کی ایک نثری نظم دیکھی جو ہمیں بہت بھائی! سو ہم کمالِ اپنائیت سے یہ نظم بغیر اجازت اپنے بلاگ پر چسپاں کر رہے ہیں۔ آپ کو ضرور پسند آئے گی۔

نو برس

نو برس ہوتے ہیں
ہر کسی کے اپنے نو برس ہوتے ہیں
سیرِ صحرا سے لبِ دریا تک
عمر کوٹ سے بھٹ جو گوٹھ تک
سسی کی پیاس سے خضر کے گھڑے تک
بے انت بے سمتی سے یکسوئی کی مٹھاس تک
کانٹوں کے عرق سے ترتراتے پراٹھےسے....
شکرگزاری کی سوکھی روٹی تک
بے مصرف بنجر دنوں سے موتیوں جیسے لمحوں کے ڈھیر تک
واقف انجانوں کی بھیڑ سے دل …

November 21، 2020

محمد احمدیوں حسرتوں کے داغ محبت میں دھو لیے ۔ راجیندر کرشن

یوں تو یہ ایک گیت ہے جو شاید آپ میں سے کسی نے لتا کی آواز میں سنا ہو۔ لیکن ہیئت کے اعتبار سے یہ ایک غزل ہے اور کیا ہی خوب غزل ہے۔ آج فیس بک پر اسے دیکھا تو سوچا کہ اس خوبصورت کلام کو بلاگ پر لگایا جائے۔ ملاحظہ فرمائیے۔

غزل

یوں حسرتوں کے داغ محبت میں دھو لیے
خود دل سے دل کی بات کہی اور رو لیے

گھر سے چلے تھے ہم تو خوشی کی تلاش میں
غم راہ میں کھڑے تھے وہی ساتھ ہو لیے

مرجھا چکا ہے پھر بھی یہ دل پھول ہی تو ہے
اب آپ کی خوشی اسے کانٹوں میں تولیے

ہونٹوں کو سی چکے تو زمانے نے یہ کہا
یوں چپ سی کیوں لگی ہے …

November 17، 2020

محمد احمدتبصرہ ٴکُتب | کبڑا عاشق ۔ وکٹر ہیوگو


مجھے تراجم پڑھنا اس لئے اچھا لگتا ہے کہ عموماً شاہکار کتابیں ہی ذہن میں یہ خیال پیدا کرتی ہیں کہ انہیں دوسری زبان کے جاننے والوں کے لئے بھی پیش کیا جائے۔ ورنہ ہر کتاب کا ترجمہ نہیں کیا جاتا۔ اور اکثر تراجم جو میں نے پڑھے ہیں وہ واقعتاً اپنی صنف کی شاہکار کتابیں ہیں۔

وکٹر ہیوگو کا مشہور ناول نوٹرے ڈیم کا کبڑا کا اردو ترجمہ کبڑا عاشق کے نام سے کیا گیا ہے ۔ فکشن ہاؤس نے اسے چھاپا ہے لیکن کہیں بھی مترجم کا ذکر نہیں کیا۔ ویب سرچ سے پتہ چلتا ہے کہ اس ناول کا ترجمہ ستار طاہر صاحب نے کیا ہے۔ بدگمانی سے …

Footnotes