اردو سیارہ

October 29، 2020

ابن آدمکس کو معلوم؟؟؟؟؟؟

امتیاز خانرشوت ایک معاشرتی ناسور

عصر حاضر میں کسی کام کیلئے استحقاق صرف اسی کا ہے جو کسی نہ کسی شکل میں رشوت دے۔ رشوت ایک مہلک معاشرتی ناسور ہے جو تمام بدعنوانیوں کی جڑ ہے۔اخلاقی انحطاط کے شکار معاشرہ میں رہتے ہوئے انسان کو قدم قدم پر رشوت ستانی اور بدعنوانی سے واسطہ پڑتا ہے۔جو لوگ رشوت نہ دیں […]

October 27، 2020

محمد احمداردو کو فارسی نے شرابی بنا دیا

یہ کلام ہم نے آج فیس بک کے ایک ادبی گروپ پر پڑھا۔ اچھا لگا سو بعد از تحسینِ کلام ہم اس کلام کو نقل کر کے یہاں لے آئے تاکہ قارئینِ رعنائیِ خیال بھی اس سے محظوظ ہو سکیں۔ 

اردو کو فارسی نے شرابی بنا دیا
عربی نے اس کو خاص ترابی بنا دیا

اہلِ زباں نے اس کو بنایا بہت ثقیل
پنجابیوں نے اس کو گلابی بنا دیا

دہلی کا اس کے ساتھ ہے ٹکسال کا سلوک
اور لکھنئو نے اس کو نوابی بنا دیا

بخشی ہے کچھ کرختگی اس کو پٹھان نے
اس حسنِ بھوربن کو صوابی بنا دیا

باتوں میں اس کی ترکی بہ ترکی رکھے جواب
یوں ترکیوں نے اس کو جوابی …

محمد اظہارالحقتارکین ِوطن اور موجودہ حکومت

نیویارک سے لے کر پرتھ اور سڈنی تک تارکینِ وطن دوستوں سے جب بھی بات ہو تی ہے یہی تاثر ملتا ہے کہ تارکینِ وطن کی بھاری اکثریت موجودہ حکومت کے حوالے سے ابھی تک پر امید ہے۔ وہ کوتاہیاں تسلیم کرتے ہیں مگر ان کا مؤقف وہی ہے جو وزیر اعظم کا ہے یعنی وقت دیجیے۔ صبر کیجیے۔ کچھ یہ دلیل دیتے ہیں کہ وزیر اعظم کی ٹیم کا قصور ہے۔ کچھ بدستور گزشتہ حکومتوں کو موردِ الزام ٹھہراتے ہیں۔ ایک دلیل یہ بھی ہے کہ کورونا کی وبا حملہ آور نہ ہوتی تو معاملات بہت بہتر ہو چکے ہوتے۔ سب سے پہلے یہ وضاحت ضروری ہے کہ اس کالم …

افتخار اجمل بھوپالاعلانِ جہاد ۔ بھارتی فوج اور برطانوی فضائیہ کے حملے

جمعہ 24 اکتوبر 1947ء کو جس دن سعودی عرب میں حج ہو رہا تھا جموں کشمیر کے مسلمانوں نے اپنے الله پر بھروسہ کرتے ہوئے جہاد کا اعلان کر دیا اور مسلح تحریک آزادی ایک جنگ کی صورت اختیار کر گئی ۔ مجاہدین نے ایک ماہ میں مظفرآباد ۔ میرپور ۔ کوٹلی اور بھمبر آزاد […]

عمر احمد بنگشبنوں میں پھرتے ہیں مارے مارے۔۔۔

آج سے چار سال پہلے کی بات ہے۔ مجھے دفتری کام کی غرض سے بنوں جانا پڑا۔۔۔ یہ سطر لکھ دی تو بوجوہ خیال آیا کہ وضاحت کر دوں۔ مجھے واقعی دفتری کام پیش آ گیا تھا۔ یہ وضاحت ضروری تھی۔ وہ یوں کہ اسی دن اور اسی حوالے سے یہ سنتے جائیں۔ ہمارے ایک دوست ہیں۔ وہ ذات کے کاکڑ ہیں لیکن ان میں کاکڑ ایسی کوئی بات نہیں ہے۔ میں نے زندگی میں دو چار ہی کاکڑ دیکھ رکھے ہیں لیکن یہ صاحب باقی کے تین کاکڑوں سے پرے لگتے ہیں۔

October 26، 2020

محمد اظہارالحقسر سید ایئر پورٹ اسلام آباد

راجہ ٹوڈر مل 1550ء میں پیدا ہوا۔ کچھ کہتے ہیں چونیاں ضلع لاہور کا تھا۔ کچھ اودھ کا بتاتے ہیں۔ یتیم تھا اور مفلس‘ مگر ٹیلنٹ اتنا تھا کہ اکبر اعظم نے اسے پوری سلطنت کا وزیر خزانہ مقرر کیا۔ اس سے پہلے شیر شاہ سوری نے روہتاس کے قلعے کی تعمیر کی نگرانی اسی کے سپرد کی تھی۔ جنگوں میں بھی بڑے بڑے معرکے سر کیے مگر اصل کارنامہ اس کا مالیات میں تھا۔ پٹواری سسٹم جو آج بھی جاری ہے، اسی نے شروع کیا۔ زرعی پیداوار کا سروے کیا۔ ٹیکس کی شرح مقرر کی۔ ماپ تول کے پیمانے فکس کیے۔ لگان کے حوالے سے صوبوں کو سرکار اور …

October 23، 2020

ایم اے امینفریدی سیریز پر تبصرہ

ہمارا پچھلا بلاگ ابن صفی کی عمران سیریز پر تھا، اس بار ہم انکی فریدی سیریز پر بات کریں گے۔ابن صفی اپنے ہر ناول کا دیباچہ پیشرس کے عنوان سے لکھا کرتے تھے۔ اپنے ابتدائی دور کے ایک پیشرس میں وہ لکھتے ہیں کہ ان کے زمانے میں زیادہ تر مصنفین اردو میں ریوایتی عشق و محبت کی داستانوں کو بیان کرتے تھے یا بازاری قسم کے گھٹیا ناولز عام تھے۔ گنتی کے لکھاری انگریزی یا دیگر زبانوں کے شاہکاروں کے تراجم کرتے تھے

محمد احمدنظم: وہیں تو عشق رہتا ہے ۔۔۔ از ۔۔۔ ظہیر احمد ظہیر

ظہیر احمد ظہیر بنیادی طور پر غزل گو شاعر ہیں۔ لیکن قادر الکلام شاعر کے لئے کسی بھی صنف میں کوئی بھی خیال نظم کرنا دشوار نہیں ہوتا۔ یوں بھی جو شعراء کبھی کبھی نظم کہتے ہیں اُن کی نظمیں اکثر بہت خوب ہوتی ہیں۔ ظہیر احمد ظہیر صاحب کی یہ نظم اس بات پر مزید دلالت کرتی ہے۔ یہ نظم رومانوی مزاج رکھتی ہے اور اس سے لطف اندوز ہونے کے لئے آپ کو کم از کم تخیلاتی سطح پر رومانی فضا کی ضرورت ہے۔

 

وہیں تو عشق رہتا ہے


جہاں ہونے نہ ہونے کی حدیں آپس میں ملتی ہیں
جہاں غم گیت گاتے ہیں ، جہاں ہر درد ہنستا ہے
وہیں …

افتخار اجمل بھوپالپہلے مُنتخِب وزیر اعظم کی شہادت

آج سے 69 سال قبل 16اکتوبر کی صبح قائدِ مِلّت راولپنڈی پہنچے ۔ سہ پہر کے وقت کمپنی باغ (اب لیاقت باغ) میں جلسہ عام سے خطاب کرنا تھا جس میں نئے عام انتخابات کا اعلان کرنا تھا ۔ نواب زادہ لیاقت علی خان نے تقریر شروع کرتے ہوئے ابھی اتنا ہی کہا تھا ” […]

October 22، 2020

محمد اظہارالحقآٹا گوندھنا ہے اور ہِلنا بھی نہیں

اس نے لبنان چھوڑا اور 2002ء میں جرمنی پہنچ گیا۔ اس وقت اس کی عمر بائیس برس تھی۔
اس نے میڈیکل میں داخلہ لے لیا۔ ڈاکٹر بننے کے بعد وہ لبنان واپس نہ آیا‘ وہیں، جرمنی ہی کے ایک کلینک میں ملازمت شروع کر دی۔ 2012ء میں اسے جرمنی آئے ہوئے دس سال ہو چکے تھے۔ اس نے جرمنی کی شہریت کے لیے درخواست دائر کر دی۔ اگلے آٹھ سال مختلف مراحل طے کرنے میں گزر گئے۔ تمام مغربی ملکوں کی طرح جرمنی کی شہریت حاصل کرنے کے لیے بھی طویل عرصہ درکار ہے۔ کئی قسم کے ٹیسٹ ہوئے۔ ان ٹیسٹوں میں اس نے خاصے اچھے نمبر لیے۔ پھر جرمنی کے …

October 21، 2020

محمد احمدتبصرہ ٴکُتب | پیاری زمین - پرل بک / اختر حسین رائے پوری


'پیاری زمین' مشہور امریکی مصنفہ مسز پرل بک کے ناول گُڈ ارتھ (Good Earth) کا اردو ترجمہ ہے۔ یہ وہ ناول ہے جس پر مصنفہ کو نوبل پرائز دیا گیا اور یہ ناول بیسٹ سیلرز میں سے ایک ہے۔ مصنفہ ایک امریکی خاتون ہیں لیکن اُن کی زندگی کا بیشتر حصہ چین میں گزرا اور اس ناول کے کردار و واقعات بھی چینی دیہاتی زندگی کا پس منظر لیے ہوئے ہیں۔ مصنفہ پرل بک 1892ء میں پیدا ہوئیں اور 1934ءتک زندگی کا بیشتر حصہ چین میں گزارا۔ اسی اثناء میں انہوں نے بیسوی صدی کے چین کی دیہاتی زندگی کو قریب سے دیکھا اور اپنے مشاہدات کی …

October 20، 2020

محمد اظہارالحقمگسی صاحب

فون کی گھنٹی بجی۔ دوسری طرف مگسی صاحب تھے۔ اسلم خان مگسی!فرمانے لگے : ''میں آج اسّی برس کا ہو گیا ہوں‘‘۔ محمد اسلم خان مگسی کے بزرگوں میں نواب حیدر خان مگسی اور نواب بر خوردار خان مگسی جیسے بڑے نام ہیں۔ مگسی قبیلے کے موجودہ سردار‘ نواب ذوالفقار خان مگسی‘ جو بلوچستان کے وزیر اعلیٰ بھی رہے‘ دورانِ تعلیم خانیوال میں اسلم خان مگسی کے گھر قیام پذیر رہے۔جھل مگسی اس قبیلے کا صدر مقام ہے۔ ماضی میں یہ قبیلہ بھی‘ دوسرے بلوچ قبائل کی طرح‘ اپنی بقا کے لیے جنگ و جدل میں مصروف رہا۔ 1829 ء میں مگسی اور رند …

October 19، 2020

اسریٰ غوریآذربائیجان نے مزید 13 علاقوں پرقبضہ کرلیا،آرمینین فوج کے بھاگنے کی ویڈیو وائرل – Urdu News – Today News

آذربائیجان کی فورسزنے راباخ کےمزید13 علاقوں کا کنٹرول حاصل کرلیا ہے جب کہ آرمینین فوج کے میدانِ جنگ سے فرار ہونے کی ویڈیو سامنے آگئی ہے۔ نگورنو کاراباخ میں جنگ بندی کے باوجود حملوں کا سلسلہ برقرار ہے ، آذربائیجان ..مزید پڑھیں

اسریٰ غوریگوگل میپس میں نیا فیچر شامل – Urdu News – Today News

نیویارک: انٹرنیٹ کی مقبول ترین کمپنی نے گوگل میپس میں ایک اور بہترین فیچر شامل کردیا۔ ٹیکنالوجی پر نظر رکھنے والی ویب سائٹ کے مطابق گوگل نے میپس ایپلیکیشن میں ’بزی نیس‘ فیچر کا اضافہ کردیا جس کے بعد صارف ..مزید پڑھیں

اسریٰ غوریخاندان کے ادارے کا بحران ۔ شاہنواز فاروقی

انسان کی پوری زندگی فرد اور اس کی انفرادیت پر کھڑی ہے مگر بہترین فرد وہی ہے جو بہترین اجتماعیت کو جنم دے جو بہترین خاندان تخلیق کرے۔ بہترین خاندان وہی ہے جو بہترین معاشرے کو جنم دے اور بہترین ..مزید پڑھیں

اسریٰ غوریعمان میں غیر قانونی طور پر داخل ہونے والوں کے لیے بری خبر –

مسقط: 300 سے زائد اسمگلر اور درانداز غیر قانونی طور پر عمان میں داخل ہوتے ہوئے پکڑے گئے۔ عرب میڈیا کے مطابق 2020 کی تیسری سہ ماہی کے دوران کوسٹ گارڈ پولیس نے مختلف کارروائیوں میں مختلف ممالک سے تعلق ..مزید پڑھیں

اسریٰ غوریجوبائیڈن کی جیت کرونا وبا کو طویل کردے گی، ٹرمپ کا دعویٰ

واشنگٹن : امریکی صدر نے صدراتی حریف کو ملک کیلئے خطرہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ اگر مخالف پارٹی انتخابات میں کامیاب ہوئی تو کرونا کی صورتحال مزید خراب ہوجائے گی۔ غیر ملکی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق ..مزید پڑھیں

October 15، 2020

محمد اظہارالحقترجیحات! بندہ پرور! ترجیحات


عابد کے والد اکبر نے بیچ چوراہے کے ہنڈیا پھوڑ دی۔ اکبر کی بیٹیاں یعنی عابد کی بہنیں پولیس کی حراست میں تھیں۔ والد کا کہنا ہے کہ اس نے بیٹے کو قائل کیا کہ گرفتاری دے۔ ظاہر ہے یہی کہا ہو گا کہ شرم کرو مرد ہو کر چھپتے پھر رہے ہو اور خاندان کی عورتیں تمہاری وجہ سے قید ہیں۔ سوچنے کی بات ہے کہ اکبر کو جھوٹ بولنے کی کیا ضرورت تھی۔ پولیس اگر اتنی لائق تھی تو اِس زمانے میں جب اس کے پاس جدید ترین وسائل کا انبار ہے، دو تین دن کے اندر نہ سہی، ہفتے میں عابد کو پکڑ لیتی۔
پولیس کے سر پر صرف اکبر کا بیان ہی بم …

October 12، 2020

عمر احمد بنگشڈبہ

'ابھی اور یہاں۔۔۔' آواز بولی۔اس آواز میں بے تکلفی اور انس تھا۔ مجھے لگا، جیسے یہ آواز میرے اندر مجسم ہو لیکن یہ ڈبے میں سے آ رہی تھی۔ پھر مجھے احساس ہوا کہ دراصل، میں اس ڈبے کے اندر بند ہوں۔ یہ ایک سادہ ، تاریک مکعب جیسا ڈبہ تھا۔ یہ اتنا بڑا تو ضرور تھا کہ اس کے اندر کھڑا ہوا جا سکے کیونکہ  مجھے لگا رہا تھ اکہ جیسے میں اس ڈبے کے اندر کھڑا ہوں۔ ڈبے کے اندر اتنی تاریکی تھی کہ مجھے اپنے ہاتھ  اور

October 11، 2020

محمد تابش صدیقینظم: بِنائے امید

بِنائے امید

٭​

کبھی جب زندگی کی تلخیاں مجھ کو ستاتی ہیں

کبھی ناکام ہونے پر قدم جب لڑکھڑاتے ہیں

کبھی مایوس ہو کر جب میں ہمت ہار جاتا ہوں

کبھی جب کوئی غم دل پر اثر اپنا دکھاتا ہے

تو ایسے میں

کلامِ پاک میں اللہ کا فرماں

مجھے پھر یاد آتا ہے

مری ہمت بندھاتا ہے

امید اک یہ دلاتا ہے

”کسی انسان پر اللہ کوئی بوجھ اس کی تاب سے بڑھ کر نہیں رکھتا“

کوئی بھی غم ہو یا مشکل،

کوئی تلخی کہ ناکامی

مری برداشت کی حد سے زیادہ ہو نہیں سکتی

٭

محمد تابش صدیقی

افتخار اجمل بھوپالفرق صرف سوچ کا ہے

ہر شخص کی 10 فیصد زندگی حقیقی ہوتی ہے ۔ 90 فیصد اُس کی سوچ ہوتی ہے یعنی بجائے اِس کے کہ کہنے والے کی بات کو صاف ذہن کے ساتھ سُنا جائے اگر ذہن میں ہے کہ دوسرا آدمی یہ چاہتا ہے اور وہ بات جو بھی کر رہا ہے اُس کا مطلب یہ […]

عمر احمد بنگششریعت

جہاں پولیس اور عدلیہ کا حال یہ ہو، پاکستان کی عوام کا مکمل طور پر مختلف اور بہتر انصاف کے نظام کا خواب دیکھنا قدرتی امر ہے۔ اس ضمن میں عوام کی اکثریت شریعت سے امیدیں وابستہ کرتی ہے۔ مجھے پاکستان کے طول و عرض میں عام لوگوں سے بات چیت کا موقع ملا ہے۔ میں نے طالبان کے ساتھ ملک کے بعض حصوں، جیسے سوات میں 2002ء کے نظام عدل معاہدے کی بابت رائے جاننا چاہی تو پشتون علاقوں میں اس کی بے پناہ

October 10، 2020

امتیاز خانعدم برداشت سماجی مسائل کابنیادی سبب

آج کی ترقی یافتہ دنیا نے اگرچہ جسم وجاں کی خواہشات و مطالبات کی تکمیل کا سارا سامان مہیا کرلیا ہے، یہاں تک کہ زمین و آسمان کو مسخر کرلیا ہے اور ستاروں پر کمندیں ڈال دی ہیں لیکن انسان اپنے اندر کی بہیمیت پر قابو نہیں پاسکا ہے۔ ہمارے سماجی رویئے ہمارے لئے وبالِ […]

October 08، 2020

حیدرآبادیصوبہ دار امیر علی خاں روڈ - ملک پیٹ، حیدرآباد، تلنگانہ

subedar-ameer-ali-khan-road
از: مکرم نیاز (حیدرآباد، انڈیا)۔
صوبہ دار امیر علی خاں روڈ
(چنچل گوڑہ / دبیرپورہ ، حیدرآباد، تلنگانہ)

ہمارے ملک میں ناموں کی تبدیلی کا رجحان عموماً منفی معنوں میں پیش کیا جاتا ہے۔ ہرچند کہ اس رجحان کو رد کرنے کے کچھ ٹھوس جواز بھی ہوتے ہیں۔ لیکن دوسری طرف بعض اوقات ناموں کی تبدیلی خوش آئند اور قابل ستائش بھی ہوتی ہے۔
ماضی میں ناچیز نے اپنی ٹائم لائن پر "بھارت رتن استاد بسم اللہ خان مارگ" اور "پروفیسر الیاس برنی روڈ" کا ذکر کیا تھا۔ آج ایک اور نامور مسلم شخصیت صوبہ دار امیر علی خاں کے نام پر …

افتخار راجہ

ج

جہلم میں ایک ہی لائبریری ہوتی تھی اقبال لائبریری، وحید امام صاحب لائبریرین، ہمارے گاؤں کے اور ہمارے بڑے بھائی جان کے ہم عمر ہونے کی وجہ سے ہمارے بھی بھائی جان تھے، میں اور مون اسلامیہ اسکول میں تھے، مہینے میں ایک آدھ ہونے والی آدھی چھٹی کے دن باقی وقت وہیں پر گزارتے، اسکے دو فائدے ہوتےکہ وحید صاحب مزے کی چائے پلاتے تھے اور اسکے بعد مزے مزے کی کتابیں دیکھتے وہ کتابیں جنکے حوالے ہماری درسی کتب میں ہوتے ، انکو اٹھاتے ، چھوتے اور انکے صفحات الٹتے، ادھر بیٹھے ہوئے اور بھی لوگوں میں جو پڑھے لکھے …

October 05، 2020

امتیاز خانبچوں کی تربیت میں کوتاہی اجتماعی نقصان

بلا شبہ اولاد والدین کیلئے ایک عظیم نعمت، قیمتی سرمایہ اور مستقبل میں قوم کے معمار ہوتے ہیں۔ اگر ان کی حفاظت کی جائے، خیر وبھلائی اور اخلاق حسنہ سے آراستہ کیا جائے، اچھی تعلیم وتربیت سے ہمکنار کیا جا ئے تو وہ فرشتہ صفت انسان بن سکتے ہیں کیونکہ بچپن کی تربیت پتھر کی […]

October 01، 2020

نویدظفرکیانیرُوداد

درد اُٹھتا ہے تو اُٹھتا ہی چلا جاتا ہےہاتھ سینے پہ دھرا ہے تو دھرا رہتا ہےایک لمحہ مرے سینے میں گڑا جاتا ہےدرد اُٹھتا ہے تو اُٹھتا ہی چلا جاتا ہےتیرا بسمل تیری دنیا سے جدا جاتا ہےدل تری یاد کی گرمی سے بھرا رہتا ہےدرد اُٹھتا ہے تو اُٹھتا ہی چلا جاتا ہےہاتھ […]

نویدظفرکیانیوہ سنگ کیوں ہوا گداز خود بھی جانتا نہیں

وہ سنگ کیوں ہوا گداز خود بھی جانتا نہیںچھڑا ہوا ہے کیسے ساز خود بھی جانتا نہیں اگرچہ مدتوں سے روز و شب کی ٹکٹکی پہ ہوںمگر حیات کا جواز خود بھی جانتا نہیں زمین کے کٹاؤ کی طرح نگل نگل گیایہ غم ہے کیسے دل نواز خود بھی جانتا نہیںشہیدِ ناز پر فسردہ ہو […]

افتخار اجمل بھوپالرِشتہءِ ازدواج

اُن دنوں ميں پرنسِپل ٹيکنيکل ٹريننگ انسٹيٹيوٹ تھا ۔ چند رحمدل حضرات ميرے پاس تشريف لائے اور فرمائش کی کہ معاشرہ کی صورتِ حال کے پيشِ نظر ميں تعليم يافتہ خواتين و حضرات کی مجلس ميں میاں اور بیوی کے رشتہ بارے تقرير کروں ۔ مجلس ميں نہ صرف نوجوان يا ميرے ہم عمر بلکہ […]

September 30، 2020

امتیاز خاننظم و ضبط کامیاب طرز زندگی کی کلید

نظم وضبط کسی معاشرے کے قیام کی پہلی شرط ہے۔ انسان کی زندگی کو منظم، پُرسکون، کامیاب بنانے اور مطلوبہ نتائج کے حصول میں نظم و ضبط بنیادی کردار ادا کرتا ہے۔ زندگی میں اس کی اہمیت سے انکار ناممکن ہے بلکہ یوں کہا جائے کہ نظم و ضبط کے بغیر ایک اچھے معاشرے کا […]

حیدرآبادیواہ حیدرآباد - مزاحیہ مضامین از ڈاکٹر عابد معز - pdf download

Wah Hyderabad by Abid Moiz


ڈاکٹر عابد معز (اصل نام: سید خواجہ معز الدین ، پیدائش: 25/جنوری/1955)
حیدرآباد میں مزاح نگار طبیب اور طب کے ماہر مزاح نگار کے طور پر جانے جاتے ہیں۔ طب کے موضوع پر ان کی 16 کتابیں اور طنز و مزاح کے شعبہ میں ان کی 8 کتب شائع ہو چکی ہیں۔ مزاح نگاری کے موضوع پر ان کی ایک اولین کتاب "واہ حیدرآباد" - طنز و مزاح میں دلچسپی رکھنے والے قارئین کی خدمت میں پی۔ڈی۔ایف فائل کی شکل میں پیش ہے۔

عابد معز نے 1979ء میں عثمانیہ میڈیکل کالج حیدرآباد سے ایم۔بی۔بی۔ایس اور 1985ء میں تغذیہ اور استحصالی امراض میں پوسٹ …

September 28، 2020

محمود الحقThe Force of Seclusion and Congregation / قوتِ خلوت و جلوت

راشد ادریس رانااسلام ‏آباد ‏کے ‏نیچے ‏دبے ‏دیہات

شکرپڑیاں بھی ان 85 دیہات میں شامل تھا جو اسلام آباد کی تعمیر سے متاثر ہوئے۔ جن میں تقریباً 50 ہزار افراد آباد تھے۔ یہاں دو سو سے زائد گھر تھے جو بالکل اس جگہ پر تھے جہاں آج لوک ورثہ موجود ہے۔ لوک ورثہ کے پیچھے پہاڑی پر اس گاؤں کے آثار آج بھی جنگل میں بکھرے پڑے ہیں۔ 85 دیہات کی 45 ہزار ایکٹر زمین جب سی ڈی اے نے حاصل کی تو متاثرین میں اس وقت 16 کروڑ روپے تقسیم کیے گئے جبکہ انہیں ملتان، ساہیوال، وہاڑی، جھنگ اور سندھ کے گدو بیراج میں کاشت کے لیے 90 ہزار ایکڑ زمین بھی الاٹ کی گئی جس کے لیے 36 ہزار …

September 24، 2020

امتیاز خانشرم وحیاانسانیت کا بہترین لباس

انسان کوجو صفت دوسری مخلوقات سے ممتاز وممیز کرتی ہے، ان میں نمایاں صفت اس کی شرم وحیا کی حِس اور جذبۂ عفّت ہے۔حیا مرد اور عورت دونوں کا یکساں اخلاقی وصف ہے۔ یہ وصف ہمیں پوری آب و تاب کے ساتھ قصۂ آدم و حوا میں نظر آتا ہے۔ جب دونوں میاں بیوی نے […]

September 21، 2020

ایم اے امینعمران سیریز پر تبصرہ

جب سے پرانے گانوں کو نئے انداز میں پیش کرنے کا رواج ہوا ہے اس سے بھی پہلے سے کسی کے تخلیق کردہ کرداروں پر مشتمل کہانیاں لکھنے کا سلسلہ چلا آرہا ہے۔ سن اسی اور نوے کی دہائی میں جہاں ہم مرحوم اشتیاق احمد کی انسپکٹر جمشید سیریز کے دلدارہ تھے وہیں مظہر کلیم کی عمران سیریز کے بھی رسیا تھے اور انہی کو اس کردار کا خالق سمجھتے تھے، بھولے بھالے دور کے معصوم قاری تھے نا، شاید اسی لئے۔مگر جب شعور و آگاہی کی

افتخار اجمل بھوپالدوسرے کا مذاق اُڑانا

اے لوگو جو ایمان لائے ہو، نہ مرد دوسرے مردوں کا مذاق اڑائیں، ہو سکتا ہے کہ وہ ان سے بہتر ہوں، اور نہ عورتیں دوسری عورتوں کا مذاق اڑائیں، ہو سکتا ہے کہ وہ ان سے بہتر ہوں آپس میں ایک دوسرے پر طعن نہ کرو اور نہ ایک دوسرے کو بُرے القاب سے […]

September 18، 2020

نورین تبسم"منہ دکھائی سے منہ دیکھنے تک"

 عام بول چال  اور اردو زبان دانی میں "منہ دکھائی" ایک بہت ہی عام فہم  لفظ ہے۔روزمرہ زندگی میں  اس کا استعمال   دنیا میں زندگی کی آنکھ کھلنے کے بعد نومولود کی منہ دکھائی سے  ہوتا ہے جب دیکھنے والے اپنی  اپنی سوچ کے مطابق بچے  کے نین نقش پر تبصرے کرتے ہیں  تو کہیں تحائف اور روپے پیسے سے   رسمِ دنیا  نباہتے  ہیں ۔   سفرِزندگی طے کرتے  کرتے ایک "منہ دکھائی" کا مرحلہ نئی نویلی دلہن کی زندگی میں   آتا ہے۔جو انہی مراحل سے گزرتی ہے۔لیکن   اس سمے وہ   اس "منہ دکھائی" سے نہ صرف باخبر ہوتی ہے بلکہ پوری طرح …

نورین تبسم"اب عمر کی نقدی ختم ہوئی"

پانچ برس اُدھار کے۔۔شرافت ناز

September 07، 2020

حیدرآبادیپھول کھلنے دو - افسانے از واجدہ تبسم - pdf download


پھول کھلنے دو
ممتاز اور بدنام افسانہ و ناول نگار واجدہ تبسم کی 8 کہانیوں کا مجموعہ ہے۔ یہ تمام کہانیاں ہندوستان کے پسماندہ طبقہ کی ہریجن ذات کی زندگی کے مخلف گوشوں پر تحریر کی گئی ہیں۔
بیسویں صدی کی ساتویں دہائی میں اس کا پہلا ایڈیشن شائع ہوا تھا، پھر جولائی1982ء میں انہی کے قائم کردہ ادارے "اوورسیز بک سنٹر" سے اس کے دوسرے ایڈیشن کی طباعت عمل میں آئی۔

واجدہ تبسم کے افسانوں کے دو مزید مجموعے، دو ناول اور ایک سوانحی مضمون، پی۔ڈی۔ایف فائل شکل میں یہاں پہلے ہی یپش کیے جا چکے ہیں:

September 06، 2020

محمد عامرانصاف اور انصاف کا قتل

تاریخ: 4 ستمبر سال 2020 خبر: کوئیٹہ کی ماڈل عدالت نے مشہور کیس کا فیصلہ سنا دیا۔ مجید خان اچکزئی کو عدم ثبوت کی بناء پر ٹریفک سارجنٹ کے قتل کے مقدمے میں بری کر دیا۔ اللہ اکبر ۔۔۔۔۔اللہ کی عدالت کا فیصلہ آنا ابھی باقی ہے۔ اس عدالت نے عدم شواہد کی بنا پر …

September 04، 2020

حیدرآبادیذکرِ حسین - از مولانا کوثر نیازی - pdf download

zikr-e-hussain-kausar-niazi

حضرت حسین رضی اللہ تعالیٰ عنہ کی مظلوم شخصیت اور سانحۂ کربلا پر یہ ایک نقطۂ نظر ہے۔ جو مختلف عنوانات پر مبنی مضامین کے سہارے نامور دینی و سیاسی شخصیت مولانا کوثر نیازی (پ: 1934، م: 20/مارچ 1994) نے تحریر کیا تھا اور اسے کتابی شکل میں جناب علی صدیقی کی قائم کردہ عالمی اردو کانفرنس نے دہلی سے شائع کیا تھا۔ اس کتاب کے چھٹے ایڈیشن (فروری 1990ء) کی پی۔ڈی۔ایف فائل پیش خدمت ہے۔

اس کتاب کے ابتدائیہ میں صاحبِ کتاب کوثر نیازی لکھتے ہیں ۔۔۔
ذکرِ حسینؓ میری کمزوری بھی ہے اور قوت بھی۔ للہ الحمد کہ اب تک کی …

September 01، 2020

حیدرآبادیہفت روزہ سرفراز لکھنؤ - مرزا دبیر نمبر 1976 - pdf download


"سرفراز" ، لکھنؤ سے شائع ہونے والا ہفت روزہ ہے جس کا آغاز غالباً 1921ء میں ہوا تھا۔ یہ آل انڈیا شیعہ کانفرنس کا آرگن ہے۔
اردو صحافت میں خصوصی نمبروں کو شائع کرنے کی اولیت کا شرف ہفت روزہ "سرفراز (لکھنؤ)" کو ہی حاصل ہے۔ محرم اور رجب میں نکالے جانے والے اس ہفت روزہ کے دو خصوصی نمبر (محرم نمبر اور رجب نمبر) قارئین میں اتنے مقبول رہے کہ سال بھر تک ان نمبروں کا بےچینی سے انتظار کیا جاتا رہا ہے۔
فروری 1972ء میں اس ہفت روزہ نے انیس نمبر شائع کیا تھا۔
17/دسمبر 1976ء کو منظر عام پر آنے والا ہفت روزہ …

نورین تبسم"ہنزہ داستان"

ہنزہ داستان۔۔۔مستنصرحسین تارڑ
سفر ۔۔۔1984
1985اشاعت۔۔۔
انتساب۔۔۔امی جان کے لیے











    صفحہ 114۔۔۔گُم وہی چیزیں ہوتی ہیں جو چاہے عارضی طور پر ہی سہی اِنسان  کی گرفت میں ایک مرتبہ تو آتی ہیں- بےشمار لوگ ہوں گے  جِن کے پاس  توگُم کرنے کے لیے بھی کچھ نہیں ہوتا۔
 صفحہ 119۔۔۔ طویل مسافتوں کی تھکاوٹ چند روز میں زائل ہو جاتی ہے ۔لیکن مہہ وسال کے گزرنے سے جو مسافت وجود میں آتی ہے اُس کی تھکاوٹ صرف مٹی میں  پنہاں ہو کر ہی ختم ہوتی ہے۔
 صفحہ 270۔۔۔ انسان فطرت کو مسخر تو کر سکتا ہے لیکن اُس کا دائمی رفیق نہیں  بن …

August 31، 2020

نورین تبسم" اقوال اور کہاوتیں"

میری ڈائری سے۔۔۔۔
٭ اصل قید جسمانی نہیں ذہنی ہوتی ہے۔ (نیلسن منڈیلا۔۔۔" لانگ واک ٹو فریڈم")۔ 
۔۔۔۔۔۔
 ٭ دھند ۔۔لکھنا ایک بہت بڑا ذہنی بوجھ ہے۔یہ دُھند میں ایک ایسا سفر ہے جس کی راہ میں کوئی نشان نہیں۔ بلکہ آپ کو یہ بھی معلوم نہیں ہوتا کہ آپ سفرکس جانب کر رہے ہیں اور کیوں کر رہے ہیں۔(جین پیٹرک موڈی اینا۔فرانسیسی ناول نگار۔۔۔ ادب کا نوبل پرائز 2014)۔
۔۔۔۔۔
 ٭ہر انسان پہاڑی کی چوٹی تک پہنچنا اور وہاں رہنا چاہتا ہے۔یہ جانے اور محسوس کیے بغیر کہ اصل خوشی اس رستے میں ہے جو ہمیں اس بلندی کے سفر کی طرف لے …

August 29، 2020

نورین تبسم"کیا ہے زندگی"

"کیا ہے زندگی"
٭ زندگی  تو بس پکے مکان سے کچی قبر تک فقط آنکھ بند ہونے اور آنکھ کھلنے کے بیچ کی سفرکہانی ہے جو کبھی تو حقوق وفرائض کے محور کے گردسمجھوتے کے کھوپے چڑھائے صبح وشام کرتے گزرتی ہے تو کبھی لایعنی خواہشوں  کی چادر میں اُمیدوں کی گلکاری کرتے،لباس کی  تکمیل کے  خمار میں  ڈولتے تو کبھی ناکافی حسرتوں کے لاشے اُٹھائے دن گن گن کر گزارتے۔ زندگی کے میلے میں اپنی محنت ومشقت کے سکًوں سے  آسودگی خریدتے خریدتے ایک ایسا وقت بھی آتا ہے  کہ  کاروبارِحیات  کا  مرکزی کردار   ایکسٹرا کی جانب بڑھنے لگتا …

August 25، 2020

محمد بلالاور اس کُٹیا کے ماتھے پر لکھوایا ہے… سب مایا ہے


دریائے چناب کے کنارے پر۔۔۔ آسمان پر چھائی کہکشاں۔۔۔ اک جلتا الاؤ۔۔۔ اک بیری کا درخت۔۔۔ اور اس کے پاس درویش کی کُٹیا۔۔۔ ”اور اس کٹیا کے ماتھے پر لکھوایا ہے… سب مایا ہے“۔۔۔ سڑک چھوڑی، بند سے اترے اور عین کنارے پر چلتے چلتے گھاس پھوس سے بنی کُٹیا کے قریب پہنچے۔ اس دشت و بیابان میں ایک طرف رات شدید تاریک، خطرناک کیڑے مکوڑوں کا گڑھ، اور دوسری طرف چناب میں طغیانی بڑھ رہی تھی۔ پانی کناروں سے باہر نکلنے ہی والا تھا۔ مگر اک دیوانے کو اپنے مطلوبہ نظارے کی تصویر درکار تھی۔ اور پھر اسی دوران کنارہ ٹوٹ کر …

August 23، 2020

ایم-ڈی نورچار خودکشیاں اور ایک طلاق ۔

منجانب فکرستان :غوروفکر کے لئے
 ٹوئٹر پر میری پوسٹ و شیئرنگ دیکھنے لئے
https://twitter.com/sunday77 
 دُنیا میں آٹھ ارب کے قریب انسان رہتے ہیں، فطرت کی حکمتی ( میکنیزم) نے اِن تمام انسانی چہروں کو قابلِ شناخت بنایا ہے ۔۔۔ یہ بھی کہ ہر فرد اپنی سی منفرد سوچ کا حامل ہے تاہم اِن قابلِ شناخت لوگوں کے ذہنوں میں کیا کُچھ چل رہا ہوتا ہے، معلوم نہیں ہو پاتا ، دوست احباب، عزیز و اقارب حتاکہ گھر والوں تک کو یقین کرنا مشکل ہوتا کہ  ہمارے بیٹے ہی نے  مسجد،چرچ،بار کلب،اسکول وغیرہ میں فائرنگ کرکے لوگوں کو  ہلاک …

August 18، 2020

شاکر عزیزلفظ، علامت اور معنی

 کوئی ایک عشرہ قبل جب ہم نے لسانیات کی تعلیم حاصل کرنا شروع کی تو زبان کے بنیادی خواص میں سے ایک کا علم حاصل ہوا۔ آربی ٹریری نیس یعنی آواز/ حروف اور معنی میں رشتے کا بے قاعدہ پن۔ آج ترجمہ کرتے ہوئے ایک لفظ 'اندر' پر نگاہ پڑی تو یہ لفظ انتہائی اجنبی معلوم پڑا۔ اشتقاقیات یا ایٹمالوجی (الفاظ کی تاریخ جاننے) کے علم کی رو سے اس لفظ کے حصے بخرے کر کے مزید ذیلی معنی دریافت کیے جا سکتے ہیں جیسا کہ 'در' شاید فارسی سے آیا اور جس کا مطلب بھی 'اندر' یا شاید 'دروازہ' ہے۔

لیکن آوازوں یا حروف اور معنی کے درمیان …

محمد احمدوہ لوگ میرے بہت پیار کرنے والے تھے ۔ جمال احسانی

غزل

وہ لوگ میرے بہت پیار کرنے والے تھے
گزر گئے ہیں جو موسم گزرنے والے تھے

نئی رتوں میں دکھوں کے بھی سلسلے ہیں نئے
وہ زخم تازہ ہوئے ہیں جو بھرنے والے تھے

یہ کس مقام پہ سوجھی تجھے بچھڑنے کی
کہ اب تو جا کے کہیں دن سنورنے والے تھے

ہزار مجھ سے وہ پیمان وصل کرتا رہا
پر اس کے طور طریقے مکرنے والے تھے

تمہیں تو فخر تھا شیرازہ بندیٔ جاں پر
ہمارا کیا ہے کہ ہم تو بکھرنے والے تھے

تمام رات نہایا تھا شہر بارش میں
وہ رنگ اتر ہی گئے جو اترنے والے تھے

اس ایک چھوٹے سے قصبے پہ ریل ٹھہری نہیں
وہاں بھی چند مسافر …

Footnotes