1. اردو ویب کے سالانہ اخراجات کی مد میں فراخدلانہ تعاون پر احباب کا بے حد شکریہ نیز ہدف کی تکمیل پر مبارکباد۔ مزید تفصیلات ملاحظہ فرمائیں!

    $500.00
    اعلان ختم کریں

عرفان صدیقی ہم اپنے ذہن کی آب و ہوا میں زندہ ہیں

چوہدری لیاقت علی نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اگست 9, 2015

  1. چوہدری لیاقت علی

    چوہدری لیاقت علی محفلین

    مراسلے:
    305
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    ہم اپنے ذہن کی آب و ہوا میں زندہ ہیں
    عجب درخت ہیں، دشت بلا میں زندہ ہیں

    گزرنے والے جہازوں کو کیا خبر ہے کہ ہم
    اسی جزیرۂ بے آشنا میں زندہ ہیں

    گلی میں ختم ہوا قافلے کا شور، مگر
    مسافروں کی صدائیں سرا میں زندہ ہیں

    مجھے ہی کیوں ہو کسی اجنبی پکار کا خوف
    سبھی تو دامن کوہ ندا میں زندہ ہیں

    خدا کا شکر، ابھی میرے خواب ہیں آزاد
    مرے سفر، مری زنجیرہا میں زندہ ہیں

    ہوائے کونۂ نامہرباں کو حیرت ہے
    کہ لوگ خیمۂ صبر و رضا میں زندہ ہیں
     
    • زبردست زبردست × 1

اس صفحے کی تشہیر