ناصر کاظمی گئے دنوں کا سراغ لیکر کہاں سے آیا کدھر گیا وہ - ناصر کاظمی

فاروقی نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اگست 29, 2008

  1. فاروقی

    فاروقی معطل

    مراسلے:
    1,748
    گئے دنوں کا سراغ لیکر کہاں سے آیا کدھر گیا وہ
    عجیب مانوس اجنبی تھا مجھے تو حیران کر گیا وہ

    خوشی کی رت ہو کہ غم کا موسم، نظر اسے ڈھونڈتی ہے ہر دم
    وہ بوئے گل تھا کہ نغمہ جان، میرے تو دل میں اتر گیا وہ

    وہ میکدے کو جگانے والا، وہ رات کی نیند اڑانے والا
    نہ جانے کیا اس کے جی میں آئی کہ شام ہوتے ہیں گھر گیا وہ

    کچھ اب سنبھلنے لگی ہے جاں بھی، بدل چلا رنگ آسماں بھی
    جو رات بھاری تھی ڈھل گئی ہے، جو دن کڑا تھا گزر گیا وہ

    شکستہ پا راہ میں کھڑا ہوں، گئے دنوں کو بلا رہا ہوں
    جو قافلہ میرا ہمسفر تھا، مثل گرد سفر گیا وہ

    بس اک منزل ہے بوالہوس کی، ہزار رستے ہیں اہل دل کے
    یہی تو ہے فرق مجھ میں اس میں، گزر کیا میں ٹھہر گیا وہ

    وہ جس کے شانے پہ ہاتھ رکھ کر سفر کیا تونے منزلوں کا
    تیری گلی سے نہ جانے کیوں آج سر جھکائے گزر گیا وہ

    وہ ہجر کی رات کا ستارا، وہ ہمنفس ہمسخن ہمارا
    سدا رہے اس کا نام پیارا، سنا ہے کل رات مر گیا وہ

    بس ایک موتی سی چھب دیکھا کر، بس ایک میٹھی سی دھن سنا کر
    ستارا شام بن کے آیا، برنگ خواب سحر گیا وہ

    نہ اب وہ یادوں کا چڑھتا دریا، نہ فرصتوں کی اداس برکھا
    یونہی ذرا سی کسک ہے دل میں، جو زخم گہرا تھا بھر گیا وہ

    وہ رات کا بے نوا مسافر، وہ تیرا شاعر وہ تیرا ناصر
    تیری گلی تک تو ہم نے دیکھا، پھر نہ جانے کدھر گیا وہ
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 11
    • زبردست زبردست × 3
  2. جیا راؤ

    جیا راؤ محفلین

    مراسلے:
    1,888
    ارے زبردست فاروقی جی
    خوبصورت ترین غزل پیش کی ہے آپ نے !
    ہر شعر ایک سے بڑھ کر ایک !
    بہت شکریہ شئیر کرنے کا۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  3. فاروقی

    فاروقی معطل

    مراسلے:
    1,748

    آپ نے تعریف کی ہمارا دل "کلکاریاں" مارنے کو کر رہا ہے. . . . کیا اجازت ہے؟
     
  4. جیا راؤ

    جیا راؤ محفلین

    مراسلے:
    1,888
    'اربابِ محفل' سے اجازت طلب کیجئیے، ہمیں کوئی اعتراض نہیں:grin:
     
  5. فاروقی

    فاروقی معطل

    مراسلے:
    1,748
    با ادب با ملاحظہ . . ہو شیار. . . ارباب محفل ...حاضر ہوں ں ں ں ں ں ں ں ں ں،،،
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  6. سارہ خان

    سارہ خان محفلین

    مراسلے:
    15,819
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    بہت خوب فاروقی ۔۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  7. امیداورمحبت

    امیداورمحبت محفلین

    مراسلے:
    3,058
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    بہت خوب ۔ ۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  8. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    25,480
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    ناصر کاظمی کی خوبصورت ترین غزلوں میں سے اس غزل کا شمار ہوتا ہے۔ شکریہ فاروقی صاحب شیئر کرنے کیلیئے۔


    حج کا موسم ہے سو تمام اربابِ محفل پا پیادہ عازمِ 'حجاز' ہو گئے ہیں، آپ بے دھڑک 'کُھل کاریاں' ماریئے ;)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 5
  9. زونی

    زونی محفلین

    مراسلے:
    4,186
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amused
    بس اک منزل ہے بوالہوس کی، ہزار رستے ہیں اہل دل کے
    یہی تو ہے فرق مجھ میں اس میں، گزر کیا میں ٹھہر گیا وہ




    بہت اچھی غزل ھے فاروقی صاحب، بہت شکریہ شئیرنگ کیلئے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  10. ملائکہ

    ملائکہ محفلین

    مراسلے:
    10,592
    موڈ:
    Daring
    بہت ہی اچھی غزل شیئر کی ہے،بہت شکریہ:):)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  11. فرخ منظور

    فرخ منظور لائبریرین

    مراسلے:
    12,661
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cold
    بہت اچھی غزل ہے فاروقی- بہت شکریہ!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  12. فاروقی

    فاروقی معطل

    مراسلے:
    1,748
    عزت افزائی ہے آپ کی
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  13. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    33,762
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    مطلع میں شاید دونوں جگہ کدھر نہیں، پہلے لفظ ’کہاں‘ ہے۔ کہاں سے‌آیا کدھر گیا وہ۔ چیک کریں ذرا، میں تو محض یادداشت سے لکھ رہ ہوں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
  14. فاروقی

    فاروقی معطل

    مراسلے:
    1,748
    بھئی غضب کی یاداشت ہے آپ کی . . . میں صحیح کرتا ہوں اسے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  15. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    25,480
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    شکریہ فاروقی صاحب درستگی کیلیئے، عنوان میں بھی درست کر دیں پلیز!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  16. فاروقی

    فاروقی معطل

    مراسلے:
    1,748
    سر عنوان سے کیسے درست کر سکتا ہوں میں........اصل میں مجھے اس کے متعلق معلومات نہیں. . . مجھے بھی بتائے گا خود ہی درست نہ کردیجیے گا اکیلے اکیلے
     
  17. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    25,480
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    آپ کی توقع کے عین خلاف میں نے عنوان درست کر دیا ہے!

    جب اپنی پوسٹ کو 'قطع و برید' کریں تو یہ اسی ونڈو میں تبدیلیوں کے لیئے پوسٹ کو کھولتا ہے اگر عنوان میں بھی تبدیلی کرنی ہے تو جب تبدیلیاں کرنے والی ونڈو آ رہی ہو تو 'اضافی اختیارات' کو کلک کریں، اسکے بعد مکمل پوسٹ تدوین کیلیئے کھل جائے گی مع عنوان کے، کر کے دیکھ لیں، میں نے صحیح کیا ہے آپ پھر سے غلط کر دیں!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  18. فاروقی

    فاروقی معطل

    مراسلے:
    1,748
    شکریہ جناب . . . تجربہ کرتا ہوں
     
  19. پیاسا صحرا

    پیاسا صحرا محفلین

    مراسلے:
    704
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amazed
    غزل - گئے دنوں کا سراغ لے کر کدھر سے آیا کدھر گیا وہ - ناصر کاظمی

    گئے دنوں کا سراغ لے کر کدھر سے آیا کدھر گیا وہ
    عجیب مانوس اجنبی تھا مجھے تو حیران کر گیا وہ

    بس ایک موتی سی چھب دکھا کر بس ایک میٹھی سی دھن سنا کر
    ستارہء شام بن کے آیا ببرنگ خواب سحر گیا وہ

    خوشی کی رت ہو کہ غم کا موسم نظر اسے ڈھونڈتی ہے ہر دم
    وہ بوئے گل تھا کہ نغمہء جاں مرے تو دل میں اتر گیا وہ

    نہ اب وہ یادوں کا چڑھتا دریا نہ فرصتوں کی اداس ببرکھا
    یونہی ذرا سی کسک ہے دل میں جو ذخم گہرا تھا بھر گیا وہ

    کچھ اب سنبھلنے لگی ہے جان بھی بدل چلا دور آسماں بھی
    جو رات بھاری تھی ٹل گئی ہے جو دن کڑا تھا گزر گیا وہ

    بس ایک منزل ہے بوالہوس کی ہزار رستے ہیں اہل دل کے
    یہی تو ہے فرق تجھ میں اس میں گزر گیا میں ٹھہر گیا وہ

    شکستہ پا راہ میں کھڑا ہوں گئے دنوں کو بلا رہا ہوں!
    جو قافلہ میرا ہم سفر تھا مثالِ گردِ سفر گیا وہ

    مرا تو خوں ہو گیا ہے پانی ستمگروں کی پلک نہ بھیگی
    جو نالہ اٹھا تھا رات دل سے نہ جانے کیوں بے اثر گیا وہ

    وہ میکدے کو جگانے والا وہ رات کی نیند اڑانے والا
    یہ آج کیا اس کے جی میں آئی کہ شام ہوتے ہی گھر گیا وہ

    وہ ہجر کی رات کا ستارہ وہ ہم نفس ہم سخن ہمارا
    سدا رہے اس کا نام پیارا سنا ہے کل رات مر گیا وہ

    وہ جس کے شانے پہ ہاتھ رکھ کر سفر کیا تونے منزلوں کا
    تری گلی سے نہ جانے کیوں آج سر جھکائے گزر گیا وہ

    وہ رات کا بے نوا مسافر وہ تیرا شاعر وہ تیرا ناصر
    تری گلی تک تو ہم نے دیکھا پھر نہ جانے کدھر گیا وہ

    ناصر کاظمی​
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  20. عمران شناور

    عمران شناور محفلین

    مراسلے:
    668
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    بہت شکریہ فاروقی صاحب۔ بہت شکریہ پیاسا صحرا جی!
    بہت اچھی غزل شیئر کی آپ نے۔
     

اس صفحے کی تشہیر