1. اردو محفل سالگرہ شانزدہم

    اردو محفل کی سولہویں سالگرہ کے موقع پر تمام اردو طبقہ و محفلین کو دلی مبارکباد!

    اعلان ختم کریں

کچھ ادبی لطیفے۔ تشکر علی گڑھ اردو کلب

الف عین نے 'علمی و ادبی لطیفے' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏فروری 23, 2010

  1. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    36,434
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    یہ بیش تر لطائف طارق/المان غازی صاحبان نے پوسٹ کئے تھے۔

    ایک زمانہ تھا کہ فلمی دنیا اس طرح سے ایک طلسماتی دنیا نظر آتی تھی کہ شوٹنگ دیکھنے کا شوق ہر شخص کو ہوتا تھا۔ اکثر باریش اور مذ ہبی حضرات بھی اس خواہش پر قابو نہیں پا سکے ایک بار اتفاق سے ماہرالقادری صاحب اپنے اس شوق کی تسکین کے لئے کسی کے ساتھ اسٹوڈیو پہنچ گئے کہ وہاں ان کا جاننے والا کون ملے گا۔ اتفاق سے اسی دن شورش کاشمیری بھی پہلی مرتبہ شوٹنگ دیکھنے پہنچے اور دونوں کی ملاقات ہوئی تو ماہرالقادری نے ہنستے ہوئے فی البدیہہ یہ شعر کہا
    دل لگانے کا جہاں موقع بھی تھا کوشش بھی تھی
    ہائے وہ محفل جہاں شورش بھی تھا شورش بھی تھی
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 7
    • پر مزاح پر مزاح × 5
    • زبردست زبردست × 2
  2. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    36,434
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    پطرس بخاری ریڈیو اسٹیشن کے ڈائریکٹر تھے ایک مرتبہ مولانا ظفر علی خان صاحب کو تقریر کے لئے بلایا تقریر کی ریکارڈنگ کے بعد مولانا پطرس کے دفتر میں آ کر بیٹھ گئے۔ بات شروع کرنے کی غرض سے اچانک مولانا نے پوچھا۔ پطرس یہ تانپورے اور تنبورے میں کیا فرق ہوتا ہے۔ پطرس نے ایک لمحہ سوچا اور پھر بولے۔ مولانا آپ کی عمر کیا ہوگی؟ اس پر مولانا گڑ بڑا گئے اور بولے۔ بھئی یہی کوئی پچھتر سال ہوگی۔ پطرس کہنے لگے۔ مولانا جب آپ نے پچھتر سال یہ فرق جانے بغیر گذار دئے تو دو چار سال اور گذار لیجئے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 5
    • پر مزاح پر مزاح × 4
    • زبردست زبردست × 2
  3. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    36,434
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    میرے پڑ داد مولانا عبداللہ انصاری، پہلے ناظم دینیات، علی گڑھ ،کے قرابتی بھائی، مولانا خلیل احمد محدث سہارنپوری، جنہوں نے صحاح ستہ کی کتاب سنن ابی داؤد کی شرح بذل المجہود عربی میں لکھی ہے، خطوط میں دستخط سے پہلے خود کو ننگِ اسلاف (بڑوں کے لئے باعث شرم و عار) لکھا کرتے تھے. ان کے ایک بھتیجے، مولانا محمد فاروق مظاہر العلوم، سہارنپور میں پڑھنے کے لئے آئے. وہاں سے گھر خط لکھا، جس میں اپنے بڑوں کی روائت کی پاسداری میں دستخط سے پہلے خود کو ننگ اسلاف لکھا. ان کی والدہ نے خط پڑھوا کر سنا تو آبدیدہ ہوگئیں اور چہرہ سے غصہ بھی ہویدا تھا. خط پڑھنے والے نے کہا، خط میں تو کوئی ایسی بات نہیں تھی جس پر رونا یا غصہ آئے. تو بولیں، یہ رونےکی بات نہیں؟ آج کل کے لڑکے ایسے آپ خود ہوگئے کسی کا بڑے چھوٹے کا لحاظ باقی نہیں رہا. پوچھا آخر فاروق میاں نے ایسی کیا بات لکھ دی جو آپ اتنا ناراض ہو رہی ہیں؟

    جواب دیا:

    دنیا سے شرم غیرت اٹھ گئی. پہلے مولانا خلیل احمد ، مولانا رشید احمد گنگوہی ،جیسے عالی رتبہ بزرگ خود کو ننگ اسلاف لکھتے تھے، اور اب یہ کل کے لڑکے ان کی برابری کر رہے ہیں اور خود کو ننگ اسلاف لکھنے لگے.

    محمد طارق غازی
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 7
    • پر مزاح پر مزاح × 2
    • زبردست زبردست × 1
    • متفق متفق × 1
  4. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    36,434
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    عام طور پر ہندی داں حضرات کے ساتھ یہ مسئلہ رہتا ہے کہ یہ حضرات عموماّ اردو الفاظ یا ناموں میں ز اور ج کی آ وازوں کو آپسمیں بدل دیتے ہیں۔ اس پر ایک واقعہ یاد آ یا جو ہمارے محترم دوست و شاعر تاجدار تاج صاحب نے ہمیں سنایا تھا۔ ان کا تعلق بھی دیو بند سے ہے۔ ایک مرتبہ ایک جسلے میں صدارت ایک جلیل صاحب کر رہے تھے۔ اس میں وہاں کے ایک مشہور زمیندار شام لال جی بھی تھے جو مہمان خصوصی تھے۔ جلسے کی نظامت تاجدار صاحب کر رہے تھے۔ جلیل صاحب نے تاجدار صاحب کے کان میں کہا کہ اب دیکھئے یہ شال لال جی تقریر کریں کے اور یقینی طور پر مجھے ذلیل {جلیل کے بجائے} کریں گ۔ تاجدار صاحب نے کہا آپ فکر نہ کیجئے یسا نہیں ہوگا ۔ اور واقعی جب شال لال جی آئے تو انہوں نے صحیح نام لیا یعنی جلیل صاحب کہہ کر مخاطب کیا۔ جلسے کے بعد جلیل صاحب نے پوچھا کہ یہ کرشمہ کیسے ہو گیا۔ تاجدار ساحب نے کہا بہت آ سانی سے۔ میں نے ہندی میں آپ کا نام انہیں ذلیل صاحب لاکھ کر دیا ہے اس لئے انہوں نے اسے جلیل صاحب پڑھا۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 8
    • پر مزاح پر مزاح × 6
    • زبردست زبردست × 1
  5. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    36,434
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    ریل کے سفر میں سب سے اوپر والی برتھ پر مجاز، درمیان میں جوش ملیح آ بادی اور نچلی برتھ پر فراق گو رکھپوری سفر کر رہے تھے۔ معا” جوش نے فراق سے پوچھا: رگھو پتی اس وقت تمہاری عمر کیا ہوگی۔ فراق نے جواب دیا : یہی کوئی دس برس، جوش خاموش ہو گئے تو فراق نے جوش سے پوچھا: شبیر حسن تمہاری عمر کیا ہوگی۔ جوش نے بر جستہ جواب دیا یہی کوئی پانچ چھہ سال۔ اس پر اوپر کی برتھ پر لیٹے ہوئے مجاز نے اپنا منھ چاد ر میں چھپاتے ہوئے کہا بزرگو اب مجھ سے عمر مت پوچھنا کیونکہ میں تو ابھی پیدا ہی نہیں ہوا۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • پر مزاح پر مزاح × 3
    • زبردست زبردست × 1
  6. انیس فاروقی

    انیس فاروقی محفلین

    مراسلے:
    600
    جھنڈا:
    Canada
    سب سے زیادہ ادبی لطیفے کا ایوارڈ دیا جانا چاہیے اسے
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
    • متفق متفق × 1
  7. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    36,434
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    ایک مشاعرے میں بزرگ شاعر نوح ناروی اپنا کلام پڑھ رہے تھے۔ ان کے نقلی دانتوں کی بتیسی شائد ڈھیلی تھی اچانک شعر پڑھتے ہوئے نیچے گر گئی۔ نوح صاحب جیسے ہی بتیسی اٹھانے کے لئے جھکے مجاز نے مائک پر آ کر نہات ادب سے کہا: حضرات ان آپ استاد سے ایک خالص زبان کا شعر سنئے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
    • پر مزاح پر مزاح × 2
    • زبردست زبردست × 1
  8. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    36,434
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    ساغر نظامی کی بہن بھی شاعرہ تھیں اور مینا تخلص رکھتی تھیں۔ ماجد حیدرابادی سے چونکہ ساغر صاحب کی چشمکیں چلتی رہتی تھیں اس لئے ساغر صاحب مشاعرے میں اس شرط پر جاتے تھے کہ ماجد صاحب کو نہیں بلایا جائے گا۔ ایک مشاعرے میں صدارت ساغر نظامی کی تھی۔ چونکہ ماجد صا حب مدعو نہیں تھے اس لئے وہ مشاعرہ سننے کے لئے سامعین میں آ کر بیٹھ گئے۔ لوگوں کو جب پتہ چلا تو سب نے شور مچا دیا کہ ماجد صاحب کو ضرور سنیں گے اور مجبورا” منتظمیں کو ماجد صاحب کو دعوت سخن دینی پڑی۔ ماجد صاحب مائک پر آئے تو کہنے لگے کہ چونکہ مجھے مدعو نہیں کیا گیا تھا اس لئے کوئی غزل ساتھ نہیں ہے البتہ دو شعر فی البدییہ کہے ہیں جناب صدر اجازت دیں تو پیش کروں۔ اجازت ملتے پر یہ دو شعر سنائے
    پھر آ گیا ہے لوگو بر سا ت کا مہینا
    لازم ہوا ہے اب تو سب کو شراب پینا
    پہنچا جو میکدے میں حیران رہ گیا میں
    الٹا پڑا تھا ساغر اوندھی پڑی تھی مینا
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 5
    • پر مزاح پر مزاح × 2
    • زبردست زبردست × 1
  9. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    36,434
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    ایک بار کسی دعوت میں بہت سے شعرا و ادبا مدعو تھے کھانا آنے سے قبل اس بات پر پر گفتگو ہو رہی تھی کہ صاحب طرز انشا پردازی یا شاعری اکتسابی چیز نہیں ہے کہ انسان اسے محنت سے حاصل کرلے اور وہ اپنے انداز تحریر سے پہچانا جائے بلکہ ایک وہبی صفت ہے جو فطری طور پر اسے ملتی ہے اسی لئے ہم بعض دفعہ یہ کہتے ہیں کہ یہ غزل غالب یا علامہ اقبال کے رنگ میں ہے یا یہ مولانا آزاد کی سی نثر ہے۔ اتفاق سے سب سے پہلے رائتہ لا کر رکھا گیا تو مجاز کہنے لگے کہ اب دیکھئے رائتے ہی کو لے لیجئے اگر اسے مختلف شعرا استعمال کرتے تو کیسے کرتے۔ جیسے علامہ اقبال کہتے
    حیف شاہیں رائتہ کھانے لگا
    یا جوش ہوتے تو یوں کہتے:
    وہ کج کلاہ جو کھاتا ہے رائتہ اکثر
    اور اختر شیرانی کہتے
    رائتہ جب رخ سلمیٰ پہ بکھر جاتا ہے
    اور میں تو یوں ہی کہتا کہ
    ٹھہرئے ایک ذرا رائتہ کھالوں تو چلوں

    اس لطیفے کوایسےبھی بیان کیا گیا ہے کہ
    فراق یوں کہتے
    ٹپک رہا ہے انگلیوں سے رائتہ کچھ کچھ
    اور مجاز کہتے
    ابھی چلتا ہوں ذرا رائتہ کھا/پی لوں تو چلوں
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 6
    • پر مزاح پر مزاح × 2
    • زبردست زبردست × 1
  10. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    36,434
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    تخلص بھوپالی فطری طور پر ظریف اور بذلہ سنج واقع ہوئے تھے۔ ان کی بات چیت میں بھی بڑی شوخی ہوتی تھی۔ ان کے دو واقعات حال ہی میں نظر سے گزرے وہ پیش ہیں۔ ایک مرتبہ وہ مولانا علی میاں رحمت اللہ علیہ کے پاس بیٹھے تھے اچانک ایک صاحب آئے اور اطلاع دی کہ پنڈت نہرو کا انتقال ہو گیا، اس کے ساتھ ہی انہوں نے مولانا سے سوال کیا کہ اب مسلمانوں کا کیا ہو گا۔ مولانا نے تخلص صاحب کی طرف دیکھا گویا وہ چاہتے ہیں کہ تخلص صاحب ہی اس کا جواب دیں۔ تخلص صاحب نے بر ملا کہا: میں تو یہ سوچ رہا ہوں کہ اب پنڈت نہرو کا کیا ہوگا۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • پر مزاح پر مزاح × 1
    • متفق متفق × 1
  11. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    36,434
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    ایک بار اور تخلص بھوپالی مولانا کی مجلس میں بیٹھے تھے کہ ایک صاحب آئے اور کہنے لگے کہ حضرت آپ سعودی عرب تشریف لے جا رہے ہیں اس درمیان اگر میں مر جاؤں تو کتبے پر کیا لکھواؤں۔ مولانا نے مسکرا کر تخلص کی طرف دیکھا تو انہوں نے کہا میرا خیال ہے آپ کتبے پر یہ لکھوائیے کہ یہاں پیشاب کرنا منع ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
    • پر مزاح پر مزاح × 2
    • زبردست زبردست × 1
    • غمناک غمناک × 1
  12. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    36,434
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    لطیفہ مجھے ظ.انصاری صاحب نے سنایا تھا. ان کا ہفتہ وار آئنہ بند ہوا تو اس کے عملہ کے ایک صاحب نے کہیں نوکری دلوانے کی درخواست کی. ظ. انصاری صاحب نے حیدرآباد کے روزنامہ سیاست کے مدیر عابد علی خان مرحوم کے نام سفارشی خط لکھ کر ان صاحب کو حیدرآباد بھجوا دیا. یہ وہ زمانہ تھا جب وئتنام کی جنگ زور پر تھی اور امریکی فضائیہ روزانہ شہری علاقوں پر بمباری کر رہی تھی. ان ہوائی حملوں کے لئے انگریزی میں سرکاری اصطلاح (air strikes) تھی.عابد علی خاں نے امتحاناً ان صاحب کو ایک چھؤٹی سی خبر ترجمہ کے لئے دی. ان صاحب نے ترجمہ کیا:

    امریکہ نے وئتنام میں ہوائی ہڑتالیں کر دیں

    عابد علی خان نے ترجمہ شدہ خبر ڈاک سے اور ان صاحب کو ٹرین سے ظ.انصاری صاحب کے پاس بھیج دیا.
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
    • پر مزاح پر مزاح × 2
    • زبردست زبردست × 1
  13. مدرس

    مدرس محفلین

    مراسلے:
    736
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amused
    زبر دست الف عین صا حب جزاک اللہ خیرا

    بہت عمدہ مجھے ایسے ہی ادبی لطیفوں‌کے پڑھنے کا ذوق ہے
     
  14. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    36,434
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    ابوبکر مصور (بزم مینائی) بمبئی کی میمن برادری سے تعلق رکھتے تھے۔ ظاہر ہے مادری زبان گجراتی تھی لیکن
    عبدالرزاق سعید صاحب (عبد الاحد ساز کے والد)، نسیم مینائی، شباب مینائی وغیرہ جیسے میمن حضرات کی طرح اردو شاعری سے شغف کے سبب زبان پر عبور حاصل کیا اور بحیثئت شاعر مشہور ہوئے۔ ابوبکر صاحب لکھپتی تھے اور ہمیشہ چار گھوڑوں کی بگھی میں سفر کرتے تھے۔ اور عموما” رئیس اعظم کے نام سے مشاعروں میں پکارے جانے کو پسند کرتے تھے۔ ان کی ضد میں صبا الہ آ بادی نے خود کو مشاعروں میں غریب اعظم کہلوانا شروع کر دیا تھا۔ مصور صاحب نے جب اپنا دیوان ترتیب دیا تو بمبئی کے تمام شعرا کو جمع کیا بہت شاندار دعوت کی اور سب کو مجموعہ کلام کے لئے کوئی نام تجویز کرنے کی دعوت دی۔ کچھ نام بتائے گئے جوانہیں پسند نہیں آئے کہنے لگے۔ بھئی میں بال جبریل قسم کا کوئی نام چاہتا ہوں۔ منیر الہ آ بادی جل گئے کہنے لگے : تو پھر پشم عزرائیل رکھ لیجئے۔ اس پر خوب قہقہے لگے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
    • پر مزاح پر مزاح × 2
    • زبردست زبردست × 1
  15. ابن سعید

    ابن سعید خادم

    مراسلے:
    60,174
    سبھی شگوفے دلچسپ تھے لطف آ گیا۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • متفق متفق × 1
  16. اعجازالحسینی

    اعجازالحسینی محفلین

    مراسلے:
    27
    زبر دست الف عین صا حب
     
  17. شمشاد

    شمشاد لائبریرین

    مراسلے:
    212,256
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
  18. تلمیذ

    تلمیذ لائبریرین

    مراسلے:
    3,914
    موڈ:
    Cool
    یہ دھاگہ سامنے آنے پر تمام لطائف پڑھ کر بہت مزہ آیا ہے۔ شکریہ محترم،
    کچھ مزید عطاہوں۔
     
  19. شبیر حسین تاب

    شبیر حسین تاب محفلین

    مراسلے:
    126
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Bookworm
    لا جواب. . الف عین صاحب
     
  20. ندیم مراد

    ندیم مراد محفلین

    مراسلے:
    148
    جھنڈا:
    SouthAfrica
    موڈ:
    Psychedelic

اس صفحے کی تشہیر