شفیق خلش ::::: پیشِ نظر ہوں حُسن کی رعنائیاں وہی :::::Shafiq Khalish

طارق شاہ نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏مارچ 3, 2016

  1. طارق شاہ

    طارق شاہ محفلین

    مراسلے:
    10,645
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm


    [​IMG]
    غزل


    پیشِ نظر ہوں حُسن کی رعنائیاں وہی
    دِل کی طلب ہے حشر کی سامانیاں وہی

    اِک عمر ہوگئی ہے اگرچہ وصال کو
    نظروں میں ہیں رَچی تِری رعانائیاں وہی

    میں کب کا بجھ چُکا ہوں مجھے یاد بھی نہیں
    دِل میں ہے کیوں رہیں تِری تابانیاں وہی

    بیٹھا تِرے خیال سے ہُوں انجمن کئے
    اے کاش پھر سے لوٹیں نہ تنہائیاں وہی

    جاتی ہیں عادتیں کہیں پختہ رہیں خلش!
    چاہے نہ کب یہ دل کہ ہو، نادانیاں وہی


    قوّت کہاں ہے دل میں سہے پھر سے اب خلش
    آئیں جو لوٹ کر مری ناکامیاں وہی

    شفیق خلش


     
    آخری تدوین: ‏مارچ 3, 2016
    • زبردست زبردست × 2
  2. طارق شاہ

    طارق شاہ محفلین

    مراسلے:
    10,645
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm

    اِک عُمر ہوگئی ہے اگرچہ وصال کو !
    نظروں میں ہیں رَچی تِری رعنائیاں وہی

    (ٹائپو درست کردہ شعر)


    :)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  3. ڈاکٹرعامر شہزاد

    ڈاکٹرعامر شہزاد معطل

    مراسلے:
    2,162
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    واہ زبردست
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1

اس صفحے کی تشہیر