ساغر نظامی معاہدات - ساغر نظامی

کاشفی نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جولائی 1, 2010

  1. کاشفی

    کاشفی محفلین

    مراسلے:
    15,393
    معاہدات
    (ساغر نظامی)

    سرِ شوق پیہم جھکاتا رہونگا
    بہ ہر گام کعبہ بناتا رہونگا

    یہ بادِ مخالف سے ہے شرط میری
    چراغ اپنے خود ہی بجھاتا رہونگا

    ہے برق و شرر سے مرا عہد نامہ
    کہ خود اپنے خرمن بتاتا رہونگا

    شبِ تار سے میں نے وعدہ کیا ہے
    اندھیرے کو مشعل دکھاتا رہونگا

    زباں دی ہے خونخوار موجوں کو میں نے
    کہ طوفاں میں بھی مسکراتا رہونگا

    گزرتا رہے گا مرے سر سے طوفاں
    میں موجوں کا بربط بجاتا رہونگا

    کیا ہے تباہی سے یہ عہد میں نے
    کہ تعمیرِ ہستی کو ڈھاتا رہونگا

    یہ سازِ مشیّت سے پیماں ہے میرا
    مصیبت میں بھی گنگناتا رہونگا

    ہے تقدیر دامن کی صد چاک ہونا
    میں دامن کو کب تک بچاتا رہونگا

    حقیقت کے رخ سے، حقیقت کےرُخ پر
    حجابِ توہّم گراتا رہونگا

    تغّیر کا جھنڈا نہ لہرائے جب تک
    بغاوت کے پرچم اُڑاتا رہونگا

    ہیں جنبش میں آویزہء تاک جب تک
    میں پیتا رہونگا، پلاتا رہونگا

    مرے دم میں دم ہے تو ساغر ابد تک
    پلاتا، لنڈھاتا، بہاتا رہونگا
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
  2. فرخ منظور

    فرخ منظور لائبریرین

    مراسلے:
    12,867
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cold
    واہ! کیا خوبصورت کلام ہے۔ شکریہ کاشفی صاحب۔ بس ایک شعر میں خود کی بجائے "خو" ٹائپ ہو گیا ہے اسے درست کر دیجیے۔
    ہے برق و شرر سے مرا عہد نامہ
    کہ خو اپنے خرمن بتاتا رہونگا
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  3. رانا

    رانا محفلین

    مراسلے:
    2,832
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    بہت اچھی شئیرنگ ہے کاشفی صاحب۔ شکریہ۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  4. کاشفی

    کاشفی محفلین

    مراسلے:
    15,393
    بہت شکریہ فرخ منظور صاحب!
    بہت شکریہ رانا صاحب!
     
  5. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    26,903
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    بہت خوب۔ شکریہ کاشفی صاحب
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1

اس صفحے کی تشہیر