قوم کو بے وقوف مت بناؤ – اوریا مقبول جان

کاشفی نے 'صحافت' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اپریل 4, 2016

لڑی کی کیفیت:
مزید جوابات کے لیے دستیاب نہیں
  1. کاشفی

    کاشفی محفلین

    مراسلے:
    15,384
    قوم کو بے وقوف مت بناؤ – اوریا مقبول جان
    کیا یہ لوگ اس قوم کو واقعی اس قدر جاہل اور بے وقوف سمجھتے ہیں کہ ان کے سامنے جو بات بھی کی جائے گی وہ اسے بغیر کسی دلیل کے سچ مان لیں گے خواہ اس قدر بے سروپا اور لایعنی بات ہی کیوں نہ ہو۔ یوں تو تمام حکمرانوں کے ایسے بے سروپا جھوٹے فقروں سے اس ملک کی تاریخ ’’روشن‘‘ ہے اور ہر فقرہ بار بار یہ پکارتا ہے کہ کہنے والا یقیناً اس بیس کروڑ عوام کو جاہل اور بے وقوف ضرور سمجھتا ہے۔
    اپنی ایمانداری کے بلند بانگ دعوؤں سے لے کر اپنی حکومت کی اعلیٰ کارکردگی تک جیسے جھوٹ تو عام تھے لیکن چوہدری نثار جوکہ اس مملکت خداداد پاکستان کے وزیرداخلہ کے عہدے پر متمکن ہیں انھوں نے ایک ایسی بات کی ہے جس پر بلوچستان میں رہنے والا عام سا سادہ لوح بلوچ بھی حیرت میں اتنا ضرور کہہ رہا ہوگا اسے تو کچھ بھی نہیں پتہ۔ بیان کمال کا ہے۔ فرماتے ہیں کہ ’’بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو ایران میں بیٹھ کر افغانستان کی سرزمین پاکستان کے خلاف استعمال کررہا تھا۔‘‘ دنیائے جاسوسی کی تاریخ میں اس قدر احمق جاسوس میں نے پہلی دفعہ سنا ہے ۔
    جس کی کارروائیوں کا نقشہ چوہدری نثار علی صاحب نے کھینچا ہے۔ ایران میں بھی اس نے اپنا ٹھکانہ چاہ بہار کی بندرگاہ کے شہر میں بنایا جہاں سے افغانستان کا نزدیک ترین مقام زرنج آٹھ سو پچانوے (895) کلو میٹر دور ہے اور وہ بھی اس کے صوبے نیم روز میں واقع ہے اور اس کا صدر مقام بھی۔ افغانستان کا یہ صوبہ ایران اور پاکستان کے ساتھ اپنی سرحد رکھتا ہے۔ اس لیے تمام تر غیر قانونی سرگرمیوں کی رہگزر ہے۔ طالبان کی حکومت سے پہلے اور طالبان کی حکومت گرائے جانے کے بعد افیون اور ہیروئن کی سب سے زیادہ اسمگلنگ اسی صوبے میں اڈے بنا کر کی جاتی ہے۔
    یہ ایک صحرا نما علاقہ ہے جہاں کل ایک لاکھ چھپن ہزار لوگ آباد ہیں اور ان میں بھی اکثریت خانہ بدوش کوچی قبائل کی ہے۔ ان میں اکثریت بلوچوں کی ہے، پھر پشتون، بروہی، ازبک اور تاجک ہیں جو تمام کے تمام سنی ہیں۔ جب کہ صوبے میں تھوڑے سے ہزارہ بھی آباد ہیں جو شیعہ مسلک سے تعلق رکھتے ہیں۔ بلوچی، پشتو اور دری یہاں کی مادری زبانیں ہیں۔ دشت مارگو وہ بہت بڑا صحرا ہے جو ایک لاکھ پچاس ہزار مربع میل پر مشتمل ہے اور یہ پاکستان اور ایران کے ساتھ واقع ہے۔
    یہ صحرا اس قدر بے آباد ہے کہ یہاں اجنبی آدمی گم ہوجائے تو اسے واپسی کا راستہ نہیں ملتا۔ ہر وقت یہاں ریت کے طوفان چلتے رہتے ہیں۔ یہ علاقہ اس پورے خطے میں خطرناک مجرموں کی پناہ گاہ اور اسلحے کی اسمگلنگ کیلیے مشہور ہے۔ بھارت اور ایران کے معاہدات میں سب سے اہم معاہدہ چاہ بہار سے زرنج اور پھر آگے دلاآرام تک موٹروے بنانا شامل تھا۔ جسے 2009ء میں مکمل کرلیا گیا۔ یہ گیارہ سو اکتالیس کلو میٹر لمبی سڑک ہے۔ زرنج سے لے کر دلاآرام تک کا علاقہ افغانستان میں ہے۔
    اس ہائی وے بنانے کے صرف دو سال بعد طالبان نے اس پورے صوبے پر اپنا اختیار بحال کرلیا تھا اور افغان سکیورٹی فورسز اور نیٹو افواج افغانستان میں بھارت کی اتنی بڑی سرمایہ کاری سے بننے والی اس روڈ کی حفاظت میں ناکام ہوگئی تھیں۔ 15 جنوری 2011ء کو طالبان کمانڈر مولوی عبدالرشید نے اس علاقے کا کنٹرول سنبھالا اور یہ آج بھی قائم ہے۔ مولوی عبدالرشید ہلمند میں پیدا ہوا۔ وہ ایک بلوچ ہے جس نے مدرسے میں تعلیم حاصل کی۔ اس کا پورا خاندان سوویت یونین کے خلاف جہاد میں شریک رہا۔ جب امریکی افغانستان میں داخل ہوئے تو اس صوبے کا سربراہ مولوی محمود تھا جس نے یہاں امریکی افواج کا بے جگری سے مقابلہ کیا اور 2007ء میں شہیدکردیا گیا۔
    اس کے بعد مولوی عبدالرشید نے کمانڈ سنبھالی اور نہ صرف نیمروز بلکہ فرح صوبے کے علاقے بھی اپنے قبضے میں لے لیے۔ ایران نے وہاں موجود ہزارہ قبائل کی مدد کے ذریعے بھارت کی اتنی بڑی سرمایہ کاری کو بچانے کی کوشش کی کیونکہ اس سرمایہ کاری کے ساتھ ایران کا چاہ بہار کی بندرگاہ کا مستقبل وابستہ تھا۔ لیکن بری طرح ناکام رہا۔ یوں افغانستان میں واقع تقریباً پانچ سو کلو میٹر کا علاقہ ایسا ہے جہاں اب کسی بھارتی کا آزادانہ گھومنا ناممکن ہے۔ مولوی عبدالرشید طالبان کی شوریٰ میں شامل ہے اور ملا محمد عمر کے انتقال کے بعد انھیں اسی علاقے میں ایک بہت بڑے جنازے کے بعد دفن کیا گیا تھا۔
    یہ طالبان کے وہ لوگ ہیں جو بھوربن کے مذاکرات میں بھی شامل تھے۔ ان مذاکرات کو بھارت، امریکا اور افغانستان نے شمالی اتحاد کے ذریعے تباہ کرنے کی کوشش کی تھی اور ملا محمد عمر کی وفات کی خبر دے کر انھیں تعطل کا شکار کیا تھا۔ اس کی اصل وجہ یہ تھی کہ طالبان کا یہ گروہ خصوصاً پاکستان کے ساتھ بہتر تعلقات رکھتا ہے۔ یہی وہ سڑک تھی جس پر پہلے دو سال امریکی باآسانی دو سال تک اپنا سازمان رسد چاہ بہار کی بندرگاہ سے بھارتی جہازوں کے ذریعے پہنچاتے رہے اور اب وہ دور دراز ایک پوسٹ دھمرانگ میں بیٹھے ہیں۔
    بلکہ اب تو ان کی جگہ افغان سکیورٹی فورسز نے لے لی ہے۔ پورے صوبے میں طالبان کی امارات اسلامی افغانستان کے جھنڈے لہراتے ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ امریکی گزشتہ چند سالوں سے اس بات کے قائل ہوگئے تھے کہ افغانستان میں ان کی موجودگی کا راستہ نئی دہلی سے نہیں جاتا۔ بھارتی اور شمالی اتحاد کے لوگ طالبان کی اس فتح کی وجہ آئی ایس آئی کی پشت پناہی قرار دیتے ہیں۔ حیرت یہ ہے کہ جن کو اڑتالیس عالمی طاقتوں کی پشت پناہی اور ایران جیسے پڑوسی کی حمایت حاصل ہو وہ پاکستان کی ایک خفیہ ایجنسی کی مدد سے ہار جاتے ہیں۔
    اس پورے علاقے کا نقشہ میں نے اس لیے کھینچا ہے کہ اپنے وزیرداخلہ جناب چوہدری نثار علی خان کو بتاسکوں کہ جس جگہ بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو ایک جیولری کی دکان کھولے بیٹھتا تھا وہاں سے افغانستان کی سرزمین استعمال کرنے کے لیے براستہ ہوائی جہاز کم از کم قندھار آنا پڑتا۔ جہاں بھارتی کونسل خانہ اس کے لیے بلوچوں سے ملاقات کا بندوبست کر سکتا تھا لیکن شاید انھیں علم نہیں کہ آواران کی پہاڑیوں، خاران کے صحرا، مستونگ اور خضدار کے ٹھکانوں سے بلوچ مزاحمت کاروں کو قندھار آنے کیلیے کہاں کہاں سے گزرنا پڑتا ہے۔
    نزدیک ترین راستہ شوراوک کا تھا، پھر پنجپائی، پھر گلستان اور آخر میں چمن۔ لیکن یہ تمام علاقے پشتون آبادیاں ہیں اور یہاں پر پاکستان کی سکیورٹی فورسز کا اچھا خاصہ کنٹرول ہے۔ وزارت داخلہ کو خطے کے حالات کا علم نہیں تو کاش انھیں جغرافیے کا تھوڑا سا ادراک ہوتایا پھر وہاں آباد قومیتوں کا ہی پتہ ہوتا۔
    کلبھوشن یادیو کیلیے بلوچستان میں تخریب کاری کی سرپرستی اور مدد کیلیے بہترین مقام وہی تھی جہاں اس نے کئی سالوں سے اپنا ٹھکانہ بنایا ہوا تھا۔ یہی وہ مقام ہے جہاں سے باآسانی پانچ بلوچ اضلاع میں داخل ہوا جاسکتا ہے۔ گوادر، پنجگور، تربت، خاران اور چاغی ہیں۔ یہاں ایران کی سرحد پر مکمل طور پر خاردار تارلگے ہیں اور کہیں کہیں کنکریٹ کی دیوار بھی بنی ہے۔ ایرانی پاسداران کا گشت مسلسل رہتا ہے اور پوری سرحد رات کے وقت روشن ہوتی ہے۔
    کلبھوشن یادیو نے جس علاقے ساراوان کا ذکر کیا ہے اس کی سرحدیں پنجگور، تربت اور خاران سے ملتی ہیں اور یہاں بلوچ مزاحمت کار سب سے زیادہ منظم ہیں۔ آپ بلوچستان میں ہونے والی تخریب کاری کے واقعات کی فہرست نکال لیں تو آپ کو زیادہ تخریب کاری ایسے اضلاع میں ملے گی جن کی سرحدیں ایران سے ملتی ہیں جب کہ سب سے کم واقعات ان اضلاع میں ہوئے جن کی سرحدیں افغانستان میں ملتی ہیں۔
    وزیر داخلہ کو اس سے زیادہ تفصیل نہیں بتائی جاسکتی۔ لیکن ذرا اپنی وزارت خارجہ کے ایران ڈیسک سے بھی معلومات حاصل کرلیں۔ وہ انھیں بتادیں گے کہ بھارت اور ایران آپس کے تعلقات کس قدر گہرے ہیں۔ ان کا پریس باقاعدہ ان کی ولایت فقیہ کی رہبری کونسل کے ماتحت ہے، آزاد پریس نہیں، اور اس کے اخبارات میں پاکستان کے خلاف مضامین اکثر چھپتے ہیں اور پاکستانی سفیران کا مستقل جواب دیتے ہیں۔
    وزارت خارجہ آپ کو یہ بھی بتادے گی کہ ایران کی خفیہ ایجنسی ’’اطلاعات‘‘ کا کنٹرول اور خوف ایران میں اس قدر ہے کہ وہاں یہ تصور کرنا کہ کلبھوشن یادیو چاہ بہار میں بیٹھ کر بلوچ مزاحمت کاروں اور دہشت گردوں کو سرمایہ بھی فراہم کررہا تھا اور اسلحہ بھی، ایک ناممکن سی بات ہے۔
    لیکن ہمارے وزیر داخلہ نے جو روٹ اس کو تخریب کاری کیلیے بناکردیا ہے یعنی وہ ’’ایران میں بیٹھ کر افغانستان کی زمین پاکستان کے خلاف استعمال کرتا تھا‘‘ ایسے بیان پر صرف پاکستان کی سادہ لوح قوم ہی بے وقوف بن سکتی ہے یا پھر وہ لوگ جو ایران کے خلاف بات سننا بھی گوارا نہیں کرتے۔ یہ ہماری کس قدر بدقسمتی ہے کہ انقلاب ایران کے بعد ایران اور سعودی عرب کی کشمکش نے پاکستان کو خون میں نہلا رکھا ہے۔ ہم روز مسلک کی بنیاد پر قتل ہونے والوں کی لاشیں اٹھاتے ہیں۔
    لیکن اس کے باوجود دونوں ہمارے برادر ملک ہیں۔ ان دونوں ممالک کا کوئی مسلک نہیں۔ دونوں قومی ریاستیں اور اپنی اپنی قوم کی وفادار۔ لیکن خون بہانے کیلیے میرے ملک کی سرزمین رہ گئی ہے اور بے وقوف بنانے کی ذمے داری ہماری حکومتوں کو عطا ہوئی ہے۔
     
    • زبردست زبردست × 3
    • معلوماتی معلوماتی × 2
    • نا پسندیدہ نا پسندیدہ × 2
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  2. صائمہ شاہ

    صائمہ شاہ محفلین

    مراسلے:
    4,659
    جھنڈا:
    England
    موڈ:
    Cool
    میں اوریا جیسے ترجمان طالبان کو بھی یہی مشورہ دینا چاہوں گی کہ حقائق اور شواھد کو توڑ مروڑ کر اپنی کم علمی سے " قوم کو بیوقوف مت بناو اوریا "
     
    • متفق × 5
    • غیر متفق × 4
    • نا پسندیدہ × 2
    • زبردست × 1
    • پر مزاح × 1
  3. زیک

    زیک محفلین

    مراسلے:
    38,760
    جھنڈا:
    UnitedStates
    موڈ:
    Bookworm
    میں عنوان پڑھ کر پہلی نظر میں یہی سمجھا تھا کہ اوریا سے اپیل کی گئی ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • پر مزاح پر مزاح × 1
    • متفق متفق × 1
  4. صائمہ شاہ

    صائمہ شاہ محفلین

    مراسلے:
    4,659
    جھنڈا:
    England
    موڈ:
    Cool
    یہ بندہ تاریخ ہی بدل دیتا ہے اپنے موقف کو ثابت کرنے کے لیے اور ہماری سادہ لوح غیر تعلیم یافتہ قوم فورا تسلیم کر لیتی ہے
     
    • متفق متفق × 6
    • مضحکہ خیز مضحکہ خیز × 3
    • غیر متفق غیر متفق × 1
  5. یاز

    یاز محفلین

    مراسلے:
    18,114
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Confused
    کچھ ہی عرصہ قبل اس نے تاریخِ طبری کو جھوٹا اور اس وقت کی یہودی و نصرانی لابی کی سازش وغیرہ قرار دے دیا تھا، صرف اپنے مؤقف اور اپنی گھڑی ہوئی تاریخ کو سچ ثابت کرنے کے لئے۔
     
    • متفق متفق × 5
    • غیر متفق غیر متفق × 1
  6. یاز

    یاز محفلین

    مراسلے:
    18,114
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Confused
    عنوان کے علاوہ پہلے پیراگراف سے بھی یہی لگا تھا۔
     
    • متفق متفق × 1
  7. صائمہ شاہ

    صائمہ شاہ محفلین

    مراسلے:
    4,659
    جھنڈا:
    England
    موڈ:
    Cool
    ابھی ساقی۔ صاحب آتے ہوں گے آپ کو غیر متفق سے نوازنے کیونکہ دلیل تو اس معصوم قوم کے پاس ہے ہی نہیں :)
     
    • زبردست زبردست × 2
    • مضحکہ خیز مضحکہ خیز × 2
    • معلوماتی معلوماتی × 1
    • متفق متفق × 1
  8. یاز

    یاز محفلین

    مراسلے:
    18,114
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Confused
    اختلاف اس جہان کا حُسن ہے۔
    ان کو یا کسی بھی اور ممبر کو میری رائے یا مراسلے سے غیرمتفق ہونے کا اتنا ہی حق ہے جتنا مجھے اس رائے کا اظہار کرنے کا ہے۔
     
    • متفق متفق × 6
    • زبردست زبردست × 1
  9. ساقی۔

    ساقی۔ محفلین

    مراسلے:
    3,304
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    معافی چاہتا ہوں آپ کو برا لگا ۔ آپ نے بغیر کسی دلیل یا حقائق کے کالم نگار کو رگیدا تو میں نے اس سے اتفاق نہ کیا ۔ بس اتنی سی بات تھی ۔
     
    • متفق متفق × 2
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  10. صائمہ شاہ

    صائمہ شاہ محفلین

    مراسلے:
    4,659
    جھنڈا:
    England
    موڈ:
    Cool
    میں اکثر موصوف کی تحاریر دیکھتی رہتی ہوں اور مشاہدے کی بنا پر ہی کہا :)
     
    • معلوماتی معلوماتی × 2
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  11. صائمہ شاہ

    صائمہ شاہ محفلین

    مراسلے:
    4,659
    جھنڈا:
    England
    موڈ:
    Cool
    بالکل اختلاف سے مکالمے کی فضا بنتی ہے مگر صرف اختلاف کافی نہیں اس کی بنیاد بھی ہونی چاہیے ۔
     
    • متفق متفق × 3
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • مضحکہ خیز مضحکہ خیز × 1
  12. وجی

    وجی لائبریرین

    مراسلے:
    24,984
    موڈ:
    Daring
    کیا آپ حقائق و شواہد فراہم کرسکتیں ہیں خاتون ؟؟
    یا پھر آپکو اوریا مقبول جان اچھے نہیں لگتے وہ اور بات ہے
     
    • متفق متفق × 1
    • مضحکہ خیز مضحکہ خیز × 1
  13. صائمہ شاہ

    صائمہ شاہ محفلین

    مراسلے:
    4,659
    جھنڈا:
    England
    موڈ:
    Cool
    کہتے ہیں اگنورینس از بلس تو آپ کے کیس میں یہ نعمت ہے ورنہ اوریا صاحب کے مضامین پڑھیں اور اگر آپ علم رکھتے ہیں تو خودبخود ہی جان جائیں گے ورنہ مجھے غلط سمجھنا آسان قومی آپشن ہے اور اسی پر قائم رہیے ۔ اس کے علاوہ موصوف کا فیس بک پیج دیکھ لیجیے گا ہر موضوع پر گل فشانی کرتے نظر آئیں گے حقائق کو مسخ کر کے ۔ جب کوئی کہہ رہا ہے کہ میں ان کی تحاریر پڑھتی ہوں تو اس کے باوجود آپ حقائق کا تقاضہ فرما رہے ہیں عقل کا تقاضہ یہ ہے کہ آپ خود پڑھیں اور میری طرح اگر عقل رکھتے ہیں تو غیر متفق ورنہ اسلام کے نام پر متفق ہوجائیں کیونکہ ان کی دوکان بھی اسلام کے نام پر چلتی ہے ۔
    اگر وقت ملے تو ان کی طالبانی ہمدردیاں چیک کیجیے گا اور یاد رکھیے گا طالبان وہی لوگ ہیں جو کبھی سکول میں گھس کر ہمارے بچوں کو مارتے ہیں تو کبھی پارکس میں ۔
    اور مجھے یہ کہنے میں کوئی عار نہیں کہ میں کسی دہشت گرد کو پسند نہیں کرتی خواہ وہ لفظی دہشتگرد ہو یا قلمی یا خود کش یا پھر طالبانی سوچ یا اس سے ہمدردی رکھنے والا ۔
     
    • زبردست زبردست × 3
    • پر مزاح پر مزاح × 1
    • متفق متفق × 1
    • غیر متفق غیر متفق × 1
  14. صائمہ شاہ

    صائمہ شاہ محفلین

    مراسلے:
    4,659
    جھنڈا:
    England
    موڈ:
    Cool
    آپ ان کے کالمز نہیں پڑھتے ؟ کیا کبھی آپ نے ان کی دی ہوئی معلومات کو کراس چیک کیا ہے ؟ تاریخ جھوٹ نہیں بولتی سوائے ہماری تاریخ کے جسے ہم اپنی مرضی کے مطابق لکھتے ہیں ۔
     
    • متفق متفق × 3
    • مضحکہ خیز مضحکہ خیز × 1
  15. ادب دوست

    ادب دوست معطل

    مراسلے:
    3,429
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    کچھ لوگ واقعی بہت ہنساتے ہیں۔۔۔
     
    • مضحکہ خیز مضحکہ خیز × 2
    • متفق متفق × 1
  16. ادب دوست

    ادب دوست معطل

    مراسلے:
    3,429
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    اوریا مقبول کا ایک اچھا کالم ہے ،
     
    • متفق متفق × 1
    • غیر متفق غیر متفق × 1
    • مضحکہ خیز مضحکہ خیز × 1
  17. ادب دوست

    ادب دوست معطل

    مراسلے:
    3,429
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    اس میں شک نہیں کہ ایران ایک برادر ملک ہے ، مگر اس بات کو ثابت کرنے کیلئے ابھی ایران کو بہت کچھ کرنا ہوگا۔
    بھارت کی مجرمانہ کارروائیوں پر اس کی گرفت کرنا ایران حکومت کا کام ہے جبکہ یہ کارروائیاں ایران کی سرزمین سے کی جارہی ہوں۔
     
    • متفق متفق × 2
    • مضحکہ خیز مضحکہ خیز × 2
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  18. یاز

    یاز محفلین

    مراسلے:
    18,114
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Confused
    میری تجویز ہے کہ اس بحث کو ایک علمی بحث کی صورت دیتے ہوئے مزید آگے بڑھایا جائے تاکہ اسی طرح اچھے ماحول میں سب کا مؤقف جانا جا سکے۔
    فی الحال یہ دو کالم از اوریا مقبول جان صاحب پیشِ خدمت ہیں۔ یہ دو تین سال پرانے ہیں۔ انہی جیسے شاہکار کالمز کو پڑھ کر میں نے اوریا مقبول جان کو مزید پڑھنا ترک کر دیا تھا۔ ویسے ان دو کالمز سے بھی زیادہ شاہکار کالم بھی تھا جو ابھی مجھے نہیں ملا۔ جونہی ملا تو انشاءاللہ شیئر کروں گا۔
    ایک بار پھر عرض کرتا چلوں کہ جیسے مجھے کوئی بھی مراسلہ پوسٹ کرنے یا اپنی رائے کہنے کا حق ہے، اسی طرح کسی بھی دوست کو اس سے غیرمتفق ہونے کا بھی حق ہے۔ اس جہان کا حسن اختلاف سے ہے۔

    کالم پیشِ خدمت ہیں۔
    [​IMG]

    [​IMG]
     
    • معلوماتی معلوماتی × 3
    • زبردست زبردست × 1
    • متفق متفق × 1
  19. ہادیہ

    ہادیہ محفلین

    مراسلے:
    5,088
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Angelic
    بڑی سیا سی گفتگو ہورہی ہے۔میں تو صرف موضوع پڑھ کر تجسس کے ہاتھوں مجبو ر ہوکر آگئی اس لڑی میں۔مگر ۔۔۔۔۔
     
    • پر مزاح پر مزاح × 2
  20. یاز

    یاز محفلین

    مراسلے:
    18,114
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Confused
    لبِ بام بیٹھ کر تجسس کی دھوپ سینکنے سے کیا حاصل۔ دلائل کی گٹھڑی میں سے کچھ اجراء فرمائیے۔
    :thinking2:
     
    • زبردست زبردست × 2
    • پر مزاح پر مزاح × 2
لڑی کی کیفیت:
مزید جوابات کے لیے دستیاب نہیں

اس صفحے کی تشہیر