فونٹ کا ترجمہ

آصف نے 'متفرق مقامیانا' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏مئی 9, 2006

  1. آصف

    آصف محفلین

    مراسلے:
    568
    کل رات مجھے خیال آیا کہ فونٹ کیلئے تو اردو میں پہلے ہی ایک لفظ موجود ہے جس کو "خطّ" کہتے ہیں۔ اور یہ فونٹ ہی کے معنی میں استعمال بھی ہوتا رہا ہے جیسا کہ "خطِ کوفی"، "خطِ عثمانی"، وغیرہ۔ جو کہ درحقیقت عربی ہی کو لکھنے کے مختلف انداز ہیں یعنی کہ مختلف فونٹ!
    آپ کا کیا خیال ہے؟ اسی سے "رسم الخط" نکلا ہے جس کا مطلب "خط کی صورت یا خط کا انداز" ہے۔ رسم عربی میں "تصویر، شکل، ڈرائینگ، یا خاکے" کو کہتے ہیں۔ رسم الخط، فونٹ سے ایک درجہ اوپر یعنی زبان کی سطح پر لکھنے کے انداز کو ظاہر کرتا ہے جیسا کہ عربی رسم الخط یا لاطینی رسم الخط۔
     
  2. نبیل

    نبیل محفلین

    مراسلے:
    16,768
    جھنڈا:
    Germany
    موڈ:
    Depressed
    آصف، تم نے یہ اچھی نشاندہی کی ہے۔ بس ذرا اس کو استعمال کرنے کی عادت ڈالنا پڑے گی کیونکہ فونٹس کے نام زیادہ تر انگریزی میں ہیں۔ اب ایشیا ٹائپ فونٹ کو خطِ ایشیا ٹائپ کہنا شروع میں کچھ عجیب لگے گا۔
     
  3. دوست

    دوست محفلین

    مراسلے:
    13,080
    جھنڈا:
    Germany
    موڈ:
    Fine
    میرے ذہن میں‌بھی ایک دن فونٹ کا ترجمہ ناچتا رہا ہے۔رسم الخط کا انگریزی متبادل سکرپٹ ہے۔جیسے اردو رسم الخط یا سکرپٹ۔
    فونٹ‌کے لیے خط کہنا عجیب سا لگے گا پڑھنے والے کو ڈاک والا خط لگے گا یہ۔
    برقی خط سے بخط یا ب خط میں نے یہ بے تکا سا نیا لفظ‌ ایجاد کیا تھا
    اس دن سائیکل پر لائبریری جاتے ہوئے۔(ویسے میں بھی سائنسدان ہوگیا ہوں لگتا ہے) :lol:
     
  4. محب علوی

    محب علوی لائبریرین

    مراسلے:
    12,403
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    میں متفق ہوں آصف سے
     
  5. نبیل

    نبیل محفلین

    مراسلے:
    16,768
    جھنڈا:
    Germany
    موڈ:
    Depressed
    شاکر، آپ کو یہ خیال سائیکل پر بیٹھے ہوئے آیا تھا یا جب سائیکل جوہڑ میں اتر گئی تھی اس وقت؟ :twisted:

    بھئی سائنسدانوں کے تو کام ایسے ہی ہوتے ہیں۔

    دوسرے خط کا کسی فونٹ کے نام سے پہلے استعمال کیا جائے تو ط پر زیر لگے گا۔ اس کو غالباً کسر اضافی کہتے ہیں۔
     
  6. سیفی

    سیفی محفلین

    مراسلے:
    634
    نبیل بھیا۔۔۔۔۔۔۔۔

    میرے خیال میں خط کو پہلے لکھ کر کسرِ اضافی لگانے سے بہتر ہے کہ نام کے بعد خط لگا دیا جائے۔۔۔۔(خصوصا انگریزی ناموں کے بارے)

    خطِ نیو ٹائمز رومن۔۔۔۔۔۔۔۔۔خطِ تاہوما

    نیوٹائمز رومن خط۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔تاہوما خط۔۔۔۔۔۔۔۔سینز سیرف خط

    اردو میں تاہم خط کا لفظ پہلے ہی مزہ دیتا ہے۔۔۔
     
  7. دوست

    دوست محفلین

    مراسلے:
    13,080
    جھنڈا:
    Germany
    موڈ:
    Fine
    ادھر گندا نالہ ہوتا ہے جی جوہڑ نہیں۔ویسے سڑکوں پر بن جاتے ہیں اکثر۔
    مگر مجھے کبھی اتفاق نہیں ہوا اس میں گرنے کا آپ کو تجربہ لگتا ہے تبھی ذکر خیر فرما رہے تھے۔ :wink:
    خطِ بھی ٹھیک رہے گا۔اور بعد میں استعمال کرنے والی بات بھی ٹھیک ہے۔خاص طور پر انگریزی ناموں کے بعد اردو تو چلے گا
    جیسے خطِ نفیس نستعلیق۔۔۔۔۔
     
  8. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    35,636
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    کافی عرصہ پہلے غالباً طلحہ بٹ نے کسی پیغام میں لکھا تھا ’ان پیج‘ کے خطوط‘۔ میں واقعی فوراً نہیں سمجھ سکا تھا کہ ان کا مطلب فانٹ ہے۔ یہ مشکل تو یقیناً ہوگی اگر فانٹ کا بھی یہی ترجمہ کیا جائے۔
    اس کے علاوہ ایک لفظ اور بھی مستعمل تھا قدیم زمانے میں۔ ’قلم‘ ۔ اس کے بارے میں کیا خیال ہے؟
     

اس صفحے کی تشہیر