صبا اکبر آبادی غم میں یکساں بسر نہیں ہوتی۔صبا اکبر آبادی

چوہدری لیاقت علی نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏ستمبر 20, 2015

  1. چوہدری لیاقت علی

    چوہدری لیاقت علی محفلین

    مراسلے:
    305
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    غم میں یکساں بسر نہیں ہوتی
    شب کوئی بے سحر نہیں ہوتی
    فرق ہے شمع و جلوہ میں ورنہ
    روشنی کس کے گھر نہیں ہوتی
    یا مرا ظرفِ کیف بڑھ جاتا
    یا شراب اِس قدر نہیں ہوتی
    بات کیا ہے کہ بات بھی ہم سے
    آپ کو دیکھ کر نہیں ہوتی
    قدر کر بیقرارئی دل کی
    یہ تڑپ عمر بھی نہیں ہوتی
    اور گھر میں دھواں سا گھُٹتا ہے
    دل جلا کر سحر نہیں ہوتی
    بے ہُنر ہو صباؔ تمھیں ورنہ
    کیسے قدرِ ہنر نہیں ہوتی

    صبا اکبر آبادی
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1

اس صفحے کی تشہیر