1. احباب کو اردو ویب کے سالانہ اخراجات کی مد میں تعاون کی دعوت دی جاتی ہے۔ مزید تفصیلات ملاحظہ فرمائیں!

    ہدف: $500
    $418.00
    اعلان ختم کریں

لیاقت علی عاصم غزل ۔ اپنے سوا نہیں ہے کسی ماسوا کا رنگ ۔ لیاقت علی عاصم

محمداحمد نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جولائی 17, 2009

  1. محمداحمد

    محمداحمد لائبریرین

    مراسلے:
    21,625
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    غزل

    اپنے سوا نہیں ہے کسی ماسوا کا رنگ
    دیکھا ہے ہم نے آگ جلا کر ہوا کا رنگ

    ہر گوشہء بساطِ چمن ہے لہو لہو!
    دھومیں مچا رہا ہے کسی کی انا کا رنگ

    آئی جب اپنے شہر کی تصویر سامنے
    آنکھوں کے آگے پھیل گیا کربلا کا رنگ

    جمتی نہیں نگاہ کسی تیز چشم کی
    پہنا ہے قاتلوں نے بھی کیسا بلا کا رنگ

    یک رنگیء حیات سے گھبرا نہ جائیں کیوں
    جو آج غیر کا ہے وہی آشنا کا رنگ

    پرواز کی ہے فکر کہ غم بال و پر کا ہے
    عاصم اُڑا اُڑا سا ہے خلقِ خدا کا رنگ

    لیاقت علی عاصم

     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 6
  2. مغزل

    مغزل محفلین

    مراسلے:
    17,597
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Dunce
    مکمل لاجواب غزل ہے ، بارہا سنی ، مگریہاں پڑھ ک دوہری خوشی ہوئی ، سلامت رہو صاحب سلامت رہو
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  3. محمداحمد

    محمداحمد لائبریرین

    مراسلے:
    21,625
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    بہت شکریہ مغل بھائی!
     
  4. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    25,070
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    واہ کیا خوبصورت غزل ہے، شکریہ احمد صاحب پوسٹ کرنے کیلیے!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  5. محمداحمد

    محمداحمد لائبریرین

    مراسلے:
    21,625
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    :aadab:
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1

اس صفحے کی تشہیر