جون ایلیا طفلان کوچہ گرد کے پتھر بھی کچھ نہیں

زھرا علوی نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏مارچ 2, 2015

  1. زھرا علوی

    زھرا علوی محفلین

    مراسلے:
    1,698
    موڈ:
    Asleep
    طفلان کوچہ گرد کے پتھر بھی کچھ نہیں
    سودا بھی ایک وہم ہے اور سر بھی کچھ نہیں

    بس اک غباروہم ہے اک کوچہ گرد کا
    دیوار بود کچھ نہیں اور در بھی کچھ نہیں

    مقدور اپنا کچھ بھی نہیں اس دیار میں
    شاید وہ جبر ہے کہ مقدر بھی کچھ نہیں

    بس اک غبار طور گماں کا ہے تہہ بہ تہہ
    یعنی نظر بھی کچھ نہیں منظر بھی کچھ نہیں

    یاراں! تمہیں جو مجھ سے گلہ ہے تو کس لیے
    مجھ کو اعتراض خدا پر بھی کچھ نہیں

    گزرے گی جونٓ شہر میں رشتوں کے کس طرح
    دل میں بھی کچھ نہیں ہے زباں پر بھی کچھ نہیں
     
    • زبردست زبردست × 3
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  2. x boy

    x boy محفلین

    مراسلے:
    6,208
    جھنڈا:
    UnitedArabEmirates
    موڈ:
    Breezy
    زبردست
    شریک محفل کرنے کا شکریہ
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  3. عمر سیف

    عمر سیف محفلین

    مراسلے:
    36,701
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Where

اس صفحے کی تشہیر