ابن انشا سو سو تہمت ہم پہ تراشی کوچہ گرد رقیبوں نے

علی فاروقی نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اگست 31, 2010

  1. علی فاروقی

    علی فاروقی محفلین

    مراسلے:
    268
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amazed
    سو سو تہمت ہم پہ تراشی کوچہ گرد رقیبوں نے
    خطبے میں لیکن نام ہمیں لوگوں کاپڑھا خطیبوں نے

    شب کی بساطِ ناز لپیٹو، شمع کے سرد آنسو پونچھو
    نقارے پہ چوٹ لگادی صبح کے نئے نقیبوں نے

    کس کو خبر ہے رات کے تارے کب نکلے کب ڈوب گئے
    شام و سحر کا پیچھا چھوڑا آپ کے درد نصیبوں نے

    امن کی مالا جپنے والے جیالے تو خاموش رہے
    فتحِ مبیں کے جھنڈے گاڑے شہر بہ شہر صلیبوں نے

    انشاء جی اب آئے ہو دو بیت کہو اور اُٹھ جاو
    تمہی کہو تمہیں شاعر مانا کب سے بڑے ادیبوں نے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 9
  2. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    26,564
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    بہت شکریہ جناب خوبصورت غزل شیئر کرنے کیلیے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  3. زونی

    زونی محفلین

    مراسلے:
    4,268
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amused
    کس کو خبر ہے رات کے تارے کب نکلے کب ڈوب گئے
    شام و سحر کا پیچھا چھوڑا آپ کے درد نصیبوں نے




    بہت خوب!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  4. فرخ منظور

    فرخ منظور لائبریرین

    مراسلے:
    12,857
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cold
    بہت عمدہ! بہت شکریہ فاروقی صاحب!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  5. خواجہ طلحہ

    خواجہ طلحہ محفلین

    مراسلے:
    1,692
    انشاء جی کے کیا کہنے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  6. محمداحمد

    محمداحمد لائبریرین

    مراسلے:
    22,412
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amazed
    بہت خوب۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔!
     

اس صفحے کی تشہیر