سلطنت عثمانیہ کی نایاب تصاویر

ابوشامل نے 'تصاویر' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اگست 19, 2008

  1. ابوشامل

    ابوشامل محفلین

    مراسلے:
    3,253
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    سلطنت عثمانیہ مسلم تاریخ کا آخری درخشندہ باب ہے جو پہلی جنگ عظیم میں شکست کے بعد بند ہو گیا
    آج برادر الف نظامی کی جانب سے اس دھاگے میں سلطنت عثمانیہ کے سرکاری گزٹ "تقویم وقایع" کی ڈی وی ڈی کی صورت میں پیشکش نے اس حوالے سے مزید کچھ دوستوں کی خدمت میں پیش کرنے پر آمادہ کیا ہے۔

    چند ماہ قبل ایک ساتھی نے 19 ویں صدی کے اواخر میں سلطنت عثمانیہ کے طول و عرض میں کی گئی تصویر کشی کی امریکی لائبریری آف کانگریس کی ویب سائٹ پر آن لائن آنے کا مژدہ سنایا اور یوں ہم عبد الحمید ثانی کے عہد کے اس "یادگار منصوبے" کو عملی صورت میں اپنی آنکھوں سے دیکھنے کے قابل ہوئے۔

    مندرجہ ذیل ربط پر وہ یادگار تصاویر موجود ہیں جو 1880ء سے 1900ء تک میں کیمرہ کے ذریعے ہمیشہ کے لیے امر ہو گئیں۔ ان تصاویر کا مطالعہ اس دور کے بارے میں بہت کچھ واضح کررہا ہے۔ آپ بھی ملاحظہ کیجیے:

    امیریکن لائبریری آف کانگریس عبد الحمید ثانی کلیکشن
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 20
  2. ابن حسن

    ابن حسن معطل

    مراسلے:
    587
    ابو شامل صاحب جزاک اللہ بہت مفید پوسٹ ہے آپ کی اور ساتھ ہی الف نظامی صاحب کا بھی بہت شکریہ۔ سلطنت عثمانیہ اور ترکی کے حوالے سے کیا آپ نے یہ سائٹ بھی ملاحظہ کی ہے یہاں عثمانی تاریخی عمارت اور کچھ جگہوں کی (بشمول مسجد نبوی( کے 3D Panorama دیے ہوئے ہیں خاصے کی چیز ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  3. تعبیر

    تعبیر محفلین

    مراسلے:
    11,564
    جھنڈا:
    Ireland
    موڈ:
    Amused
    واہ ایک اور جھٹکہ
    مطلب کے ابو شامل کا ایک اور کمال :)

    بہت بہت شکریہ کافی معلوماتی پوسٹ ہے اور فرصت سے پڑھنے کی بھی :)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  4. ابوشامل

    ابوشامل محفلین

    مراسلے:
    3,253
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    تعبیر صاحبہ تعریف کر کے شرمندہ مت کیا کریں۔ کون سا یہ تصاویر میں نے کھینچی ہیں؟
     
  5. پپو

    پپو محفلین

    مراسلے:
    6,999
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    ضروری نہیں تصاویر آپ نے لی ہوں مگر شئیر تو کی ہیں اچھی ہیں بہت شکریہ
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  6. قیصرانی

    قیصرانی لائبریرین

    مراسلے:
    45,875
    جھنڈا:
    Finland
    موڈ:
    Festive
    میرے ایک ترکی دوست نے بتایا تھا کہ عثمانی خاندان کے آخری فرد کی طرف سے ترکی کو برطانیہ کے ہاتھ "بیچا" تھا۔ جس کی مخالفت کرتے ہوئے مصطفٰی کمال نے ترکی کی فوج کی قیادت کی اور اس کے بعد موجودہ ترکی آپ کے سامنے ہے

    اس کے بعد اسی دوست کے مطابق اسی عثمانی خاندان کے آخری حکمران کا ایک بیٹا یا شاید پوتا اس وقت برطانیہ کے کسی شہر کا میئر بھی ہے

    کیا ان باتوں کی کوئی تصدیق یا تردید کر سکتا ہے؟
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  7. arifkarim

    arifkarim معطل

    مراسلے:
    29,828
    جھنڈا:
    Norway
    موڈ:
    Happy
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  8. تعبیر

    تعبیر محفلین

    مراسلے:
    11,564
    جھنڈا:
    Ireland
    موڈ:
    Amused
    تعریف کرنے پر شرمندہ نہیں بلکہ خوش ہوتے ہیں۔ تصاویر تو میری بھی کھینچی ہوئی نہیں ہوتیں پھر بھی میں شیئر کرتی ہوں یہاں۔ اصل بات تو انہیں شیئر کرنا ہے بس :)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  9. ابوشامل

    ابوشامل محفلین

    مراسلے:
    3,253
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    قیصرانی بھائی سب سے پہلے تو آپ کو محفل پر دوبارہ واپسی کی مبارک باد۔
    موضوع کے حوالے سے اتنا کہوں گا کہ تاریخ بہت بھاری مضمون ہے اور ایسا بھی کہ جو کئی مرتبہ سمجھ سے باہر ہوتا ہے۔ بہرحال اس کے باوجود صرف اتنا کہنا چاہوں گا کہ پہلی جنگ عظیم میں شکست کے بعد ترکی اتحادی افواج کے قبضے میں آ گیا اور آخری سلطان نے ایک ذلت آمیز معاہدے (معاہدۂ سیورے یا Treaty of Sevres) پر دستخط کیے جس کی رو سے ترکی کے حصے بخرے ہو گئے۔ اتاترک نے اس معاہدے کے خلاف آزادی کی تحریک کا آغاز کیا اور ترکی کو اتحادیوں کے قبضے سے چھڑایا۔
    یہ تو مجھے معلوم ہے کہ اتاترک کی حکومت کے قیام کے بعد سلطان کو ناپسندیدہ شخصیت قرار دے کر نکال دیا گیا تھا اور ان کی اولاد کافی عرصے تک ملک سے باہر (شاید اٹلی میں یا کہیں اور) قیام پذیر رہی اور بالآخر کئی دہائیوں کے بعد انہیں ترکی میں واپسی کی اجازت ملی۔
    باقی کسی عثمانی شاہزادے کا انگلستان کے کسی شہر کا میئر ہونا مجھ سے زیادہ دوسرے لوگ جانتے ہیں، اس بارے میں میں لاعلم ہوں۔
    سلطنت عثمانیہ، جو میرے پسندیدہ مضامین میں سے ایک ہے، پر عرصۂ دراز سے وکیپیڈیا پر مضامین لکھتا آ رہا ہوں، گو کہ حد درجہ تفصیلی نہیں لیکن کم از کم کسی موضوع پر تشنگی پوری کرنے کے لیے کافی ہیں۔ اس کے لیے سلطنت عثمانیہ پر مرکزی مضمون ملاحظہ کریں اس میں دیے گئے تمام روابط پر کلک کر کے متعلقہ مضامین پڑھے جا سکتے ہیں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  10. ابوشامل

    ابوشامل محفلین

    مراسلے:
    3,253
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    سلطنت عثمانیہ "حقیقتاً" تو جنگ کریمیا سے بہت پہلے ختم ہو چکی تھی، مزید معلومات آپ اردو وکیپیڈیا کے مضامین سے ہی حاصل کر سکتے ہیں۔ لیکن عارف بھائی ایک التجا کروں گا آپ سے کہ اگر آپ اردو وکیپیڈیا پر جنگ کریمیا کے مضمون میں کچھ معلومات کا اضافہ کر دیں تو ممنون ہوں گا۔
     

اس صفحے کی تشہیر