غالب رہا گر کوئی تا قیامت سلامت - مرزا غالب

کاشفی نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏دسمبر 22, 2016

  1. کاشفی

    کاشفی محفلین

    مراسلے:
    15,389
    غزل
    (مرزا غالب رحمتہ اللہ علیہ)
    رہا گر کوئی تا قیامت سلامت
    پھر اک روز مرنا ہے حضرت سلامت!

    جگر کو مرے عشق خوں نابہ مشرب
    لکھے ہے خداوند نعمت سلامت

    علی الرغم دشمن شہیدِ وفا ہوں
    مبارک مبارک، سلامت سلامت

    نہیں گر سر و برگ ادراک معنی
    تماشائے نیرنگِ صورت سلامت

    دو عالم کی ہستی پہ خط فنا کھینچ
    دل و دست ارباب ہمت سلامت

    نہیں گر بہ کام دل خستہ گردوں
    جگر خائی جوش حسرت سلامت

    نہ اوروں کی سنتا نہ کہتا ہوں اپنی
    سر خستہ دشوار وحشت سلامت

    وفور بلا ہے ہجوم وفا ہے
    سلامت ملامت ملامت سلامت

    نہ فکر سلامت نہ بیم ملامت
    ز خود رفتگی ہائے حیرت سلامت

    رہے غالب خستہ مغلوب گردوں
    یہ کیا بےنیازی ہے حضرت سلامت
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • زبردست زبردست × 1
  2. سید لبید غزنوی

    سید لبید غزنوی محفلین

    مراسلے:
    3,535
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    زبردست ۔۔۔بہت خوب ۔۔۔اچھی شراکت۔۔۔
    خوش رہیں سلامت رہیں۔۔
     

اس صفحے کی تشہیر