عدم دن گزر جاینگے سرکار کوئی بات نہیں - عبدالحمید عدم

معاویہ وقاص نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اکتوبر 8, 2012

  1. معاویہ وقاص

    معاویہ وقاص محفلین

    مراسلے:
    204
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Shh
    دن گزر جاینگے سرکار کوئی بات نہیں
    زخم بھر جاینگے سرکار کوئی بات نہیں

    آپ کا شہر اگر بار سمجھتا ہے ہمیں
    کوچ کر جاینگے سرکار کوئی بات نہیں

    آپ کے جور کا جب ذکر چھڑا محشر میں
    ہم مکر جاینگے ، سرکار کوئی بات نہیں

    رو کے جینے میں بھلا کون سی شیرینی ہے
    ہنس کے مر جاینگے سرکار کوئی بات نہیں

    نکل آئے ہیں عدم سے تو ججھکنا کیسا
    در بدر جاینگے سرکار کوئی بات نہیں

    عبدالحمید عدم
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
    • زبردست زبردست × 2
  2. محمداحمد

    محمداحمد لائبریرین

    مراسلے:
    22,036
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amazed
    آپ کا شہر اگر بار سمجھتا ہے ہمیں
    کوچ کر جاینگے سرکار کوئی بات نہیں
    واہ ! بہت خوب
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • متفق متفق × 1
  3. طارق شاہ

    طارق شاہ محفلین

    مراسلے:
    10,631
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    وقاص معاویہ صاحب !
    عدم صاحب کی لمبی ردیف میں
    فرمانبرداری یا صلح پسندی نے مزہ دیا
    ان کی یہ اچھی غزل شیئر کرنے کے لئے تشکّر
    بہت خوش رہیں
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • متفق متفق × 1
  4. بلال رضا

    بلال رضا محفلین

    مراسلے:
    4
    آپ کا شہر اگر بار سمجھتا ہے ہمیں
    کوچ کر جاینگے سرکار کوئی بات نہیں

    *واااااہ! بہت خوب
     
  5. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    9,552
    اُستادِ محترم کا شعر دستخط میں موجود ہے، کیا ہی بات ہے غزل کی اور کیا ہی بات ہے اس شعر کی!

    ہمارے بعد کوئی آنکھ نم ہوئی کہ نہیں
    جو ہو سکے تو یہ منظر بھی دیکھ کر جائیں

    توصیف تبسم
     

اس صفحے کی تشہیر