درد یہ عمر بھر نہ ہو جائے

ایلاف نے 'آپ کی شاعری (پابندِ بحور شاعری)' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اپریل 1, 2006

  1. ایلاف

    ایلاف محفلین

    مراسلے:
    7
    غزل

    درد یہ عمر بھر نہ ہو جائے
    در ترا میرا گھر نہ ہو جائے

    یہ مرا اور ترا حسیں رشتہ
    میری سوچوں کا ڈر نہ ہو جائے

    میں جسےشارٹ کٹ سمجھتا ہوں
    مستقل رہگزر نہ ہو جائے

    اچھےوقتوں کی آس دل میں لیے
    عمر ساری بسر نہ ہو جائے

    یہ جو ہلکی سی ہے غلط فہمی
    اک تناور شجر نہ ہو جائے

    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

    قطعہ

    ساتھ دل میں گلاب موسم کے
    تیری چاہت کے داغ بھی ہیں بہت
    ہیں مرے ھمسفر اندھیرے بھی
    لیکن ہمدم چراغ بھی ہیں بہت

    ~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~~
    شاعر : سید منظر ہمدانی
    manzar_syed@hotmail.com
     
  2. دوست

    دوست محفلین

    مراسلے:
    13,050
    جھنڈا:
    Germany
    موڈ:
    Fine
    زہے نصیب۔
    اچھی غزل ہے۔اس پر تکنیکی رائے تو اساتذہ ہی دے سکیں گے۔
    بہرحال میری طرف سے اردو محفل پر خوش آمدید۔
    امید ہے آپ کی آمد و رفت اب جاری رہے گی۔
     

اس صفحے کی تشہیر