1. اردو ویب کے سالانہ اخراجات کی مد میں فراخدلانہ تعاون پر احباب کا بے حد شکریہ نیز ہدف کی تکمیل پر مبارکباد۔ مزید تفصیلات ملاحظہ فرمائیں!

    $500.00
    اعلان ختم کریں

"بمع" ، " بمعہ " ، "با" کی پریشانی !

بے الف اذان نے 'لکھنے پڑھنے میں مدد' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جولائی 7, 2015

  1. بے الف اذان

    بے الف اذان محفلین

    مراسلے:
    204
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    "بمع" ، "بمعہ" ، "با"

    مجھے ان الفاظ کے متعلق رہنمائی درکار ہے ، اساتذہء کرام سے التماس ہے کہ اپنے قیمتی وقت میں سے کچھ حصہ نکال کر مجھ کم عقل کی مشکل آسان کرنے میں مدد فرمائیے۔

    نیز ان کے معانی اور مطالب پر بھی روشنی ڈالیں۔ مثالوں سے بات واضح ہو جائے تو کیا ہی بات ہے ۔
     
    آخری تدوین: ‏جولائی 7, 2015
    • معلوماتی معلوماتی × 2
  2. فرحت سعیدی

    فرحت سعیدی محفلین

    مراسلے:
    18
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amused
    ب اور مع....دونوں ہم معنا الفاظ ہیں ان کا مطلب ہے ساتھ لہذا بمع لکھنا غلطی ہے اور بمعہ لکھنا سخت ترین غلطی ہے.مذید معلومات کے لیے "اردو املا" رشید حسن خاں کی طرف مراجعت کی جائے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 5
    • متفق متفق × 5
    • معلوماتی معلوماتی × 4
  3. بے الف اذان

    بے الف اذان محفلین

    مراسلے:
    204
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    بہت شکریہ ۔ ۔ ۔
     
  4. محمد امین

    محمد امین لائبریرین

    مراسلے:
    9,452
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Flirty
    اب تو جو غلطی جماعت نے کردی وہ غلط العام فصیح کے قاعدے میں آجائے گی :p
     
    • متفق متفق × 1
  5. فرحت سعیدی

    فرحت سعیدی محفلین

    مراسلے:
    18
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amused
    محمد امین صاحب یہ غلط العام فصیح کے قاعدے میں نہیں آتی غلط العوام قبیح کے تحت آتی ہے. مع لکھنا چاہیے آج بھی سینکڑوں لوگ مع اہل وعیال وغیرہ لکھتے ہیں.
     
    • متفق متفق × 3
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  6. محمد علم اللہ

    محمد علم اللہ محفلین

    مراسلے:
    5,827
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Daring
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  7. محمد علم اللہ

    محمد علم اللہ محفلین

    مراسلے:
    5,827
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Daring
  8. محمد یعقوب آسی

    محمد یعقوب آسی محفلین

    مراسلے:
    6,818
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    اردو میں استعمال کے کئی حوالے رہے ہوں گے، وہ دیکھ لیجئے۔ چونکہ بات حتمیت کا تقاضا کرتی ہے۔ اس لئے یوں نہیں کہوں گا کہ ۔۔۔۔
    ۔"میرے خیال میں ۔۔ ۔۔ ۔۔"۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  9. محمد یعقوب آسی

    محمد یعقوب آسی محفلین

    مراسلے:
    6,818
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    معانی کی بات کر لیتے ہیں۔
    عربی لغت کے مطابق مادہ (میم عین یے) ہے۔ (مَعٰی سے) حرف جر مَعَ بن گیا: بمعنی ساتھ (مَعَہٗ : اُس کے ساتھ، مَعَنا : ہمارے ساتھ، مَعَ فَلانٍ : فلاں کے ساتھ) انگریزی میں اس کا قریبی معنی with, along with, together with وغیرہ کہہ لیجئے۔ یہ (مَعَ) خود حرفِ جر ہے سو، اسے ب کی ضرورت نہیں۔
    ب حرفِ جر کے عربی میں متعدد مقامات و معانی ہیں۔ ہمارے اس وقت کے موضوع کی مناسبت سے ب : ساتھ (قابلِ توجہ ہے ۔۔ مع : ساتھ، ب : ساتھ ) تاہم یاد رہے کہ اپنی اصل میں ب اور مع ایک دوسرے کے مکمل متبادل نہیں ہیں (اس کی تفصیلات کی یہاں ضرورت نہیں ہے)۔
    با (فارسی) ب (عربی) کا ہم معنی ہے۔
    حاصل یہ ہوا کہ بمعہ، بمع ۔۔ لسانی اعتبار سے بحوالہ عربی درست نہیں ہیں۔ مع کافی ہے۔
    تاہم جب ایسے الفاظ اردو میں آئے تو اُن کے معانی اور ساخت میں قواعد سے ہٹ کر بھی کچھ تبدیلیاں واقع ہوئیں، انہیں بھی نظر انداز نہیں کیا جا سکتا۔ اس لئے عرض کیا کہ کوئی مستند لغت دیکھ لیجئے، اس میں یہ بھی دیا ہو گا کہ یہ وضعی ہے، غلط العام ہے، یا غلط العوام ہے، وغیرہ۔ یہ بھی عرض کرتا چلوں کہ املاء کے معاملے میں بعض معروف سکالروں کی سفارشات بھی کہیں کہیں مختلف ہیں۔
     
    آخری تدوین: ‏ستمبر 8, 2015
    • معلوماتی معلوماتی × 6
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • زبردست زبردست × 1
    • متفق متفق × 1
  10. محمد یعقوب آسی

    محمد یعقوب آسی محفلین

    مراسلے:
    6,818
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    اس سے کہیں زیادہ پیچیدہ معاملہ وغیرہ کا ہوتا، جسے ہم نے اردو کے لئے ایک لفظ میں کافی تسلیم کر لیا ہے۔

    اصل کی طرف جائیں تو ۔۔ و (اور) حرفِ عطف ہے۔ جملے کے مطابق غیر کی تین صورتیں ممکن ہیں: غیرَ، غیرِ، غیرُ ۔۔
    ان کے ساتھ ضمیر متصل کے چودہ صیغے ملا کر کل 42 صورتیں ہوتیں۔
    اس کا بہترین حل یہی تھا کہ ایک (وغیرَہ) پر اکتفاء کر لیا جائے، سو کر لیا گیا۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 5
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • زبردست زبردست × 1
    • متفق متفق × 1
  11. محمد یعقوب آسی

    محمد یعقوب آسی محفلین

    مراسلے:
    6,818
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    ایسا ہی کچھ علیحدہ، علاوہ کے ساتھ ہوا، بلکہ ان میں حرفی تبدیلیاں بھی واقع ہو گئیں۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 3
    • زبردست زبردست × 1
  12. محمد یعقوب آسی

    محمد یعقوب آسی محفلین

    مراسلے:
    6,818
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    جواب نمبر 8، 9، 10، 11 میں اپنی گزارشات پیش کر دی ہیں۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 2
    • زبردست زبردست × 1
  13. فاروق سرور خان

    فاروق سرور خان محفلین

    مراسلے:
    2,870
    جھنڈا:
    UnitedStates
    موڈ:
    Breezy
    اردو عربی نہیں ہے۔ اور نا ہی فارسی ہے ۔ لہذا ان زبانوں کے اصول ان تک ہی محدود رکھے جائیں تو بہتر ہے۔ اردو چونکہ ان سب زبانوں کا مجموعہ ہے جو ارد گرد بولی جاتی ہیں۔ لہذا میں اس کو احتراماَ اعلی ترین نسل کی دوغلی زبان کا عظیم اعزاز دوں گا۔ یعنی جو سب بولتے ہیں وہی درست ہے نا کہ عربا اور فارسا کو اچار زدہ کریلا چڑھا مرکب، کہ جو نا بولے بنے اور نا ہی سمجھے بنے ۔ اردو کو مادر پدر آزاد رہنے میں ہی اس معصوم زبان کا ارتقاء ممکن ہے۔

    رہ گئی عربا اور فارسا کی بات تو وقت نے یہ ثابت کیا ہے کہ عربا اور فارسا دونوں ہی بہت کمتر زبانیں ہیں۔ یہ بہت کم لوگ بولتے اور سمجھتے ہیں۔ جب کہ اردو یا ہندی دنیا کے ہر بڑے شہر میں دھوم دھڑلے سے بولی اور سمجھی جاتی ہے۔ دنیا کے ہر شہر بڑے شہر میں اردو و ہندی کے ریڈیو سٹیشن ہیں اور یہ بولی جانے والی زبانوںمیں سب سے زیادہ اہل زبان رکھنے کا اعزاز رکھتی ہے۔ چینی یا مندرین دوسر ے نمبر پر آتی ہے۔ اس نکتہ نظر سے ایک بہت ہی بڑی زبان کے اصول کسی چھوٹی سی زبان کے اصولوں کی مدد سے باندھنا ، میرے نزدیک انتہائی بیوقوفی ہے ، میں ایسا نہیں کروں گا۔ یہ تو ایسا ہے کہ چینی زبان کی گرامر اور غلط العام کو عربی ، فارسی یا آرامائیک کا شرعی پاجاما پہنایا جائے ۔

    عربی کو مذہبی لگاؤ کے نکتہ نظر سے ایک بڑی زبان قرار دیا جاسکتا ہے لیکن باقی انبیاء کی زبان عربی نہیں تھی بلکہ یہودی زبانیں ، آرامائیک یا عبرانی رہیں لہذا اس بحث میں جانا بے کار ہے۔

    لہذا -- سارے جہاں میں دھوم ہماری زباں کی ہے کے مصداق، اہل اردو کا غلط العام اور غلط العوام بھی اردو کا معیار قرار پاتے ہیں۔ یعنی ہم نے جو کہہ دیا درست ہے ۔۔۔ عربا اور فارسا اردو کے معیار سے درست کئے جانے چاہئے کہ اردو زیادہ لوگ بولتے اور سمجھتے ہیں ۔ اور یہ تعداد بڑھتی ہی جارہی ہے۔

    اگر آپ اس سے متفق ہیں یا نہیں ۔ اس سے فرق نہیں پڑتا۔ اردو اہل زبان نے اپنی خو بو نہیں چھوڑنی۔
     
    آخری تدوین: ‏ستمبر 11, 2015
    • معلوماتی معلوماتی × 2
  14. محمدظہیر

    محمدظہیر مدیر

    مراسلے:
    2,901
    جناب میں نے سنا ہے مندرین دنیا میں سب سے زیادہ بولی جانے والی زبان ہے گوگل بھی یہی کہتا ہے۔
    ہندی اور اردو کو ایک سمجھا جائے تو شاید آپ کا دعوٰی درست کہلائے؟
     
    • زبردست زبردست × 1
  15. فاروق سرور خان

    فاروق سرور خان محفلین

    مراسلے:
    2,870
    جھنڈا:
    UnitedStates
    موڈ:
    Breezy
    آپ اردو بولتے ہیں ؟ اور ہندی فلمیں دیکھتے ہیں ۔ اگر سمجھ آتی ہیں تو دونوں ایک ہی زبانیں ہیں "زبان" بولی جاتی ہے لکھی تو کسی بھی رسم الخط میں جاسکتی ہے :)
     
    • زبردست زبردست × 1
    • معلوماتی معلوماتی × 1
    • متفق متفق × 1
  16. کاظمی بابا

    کاظمی بابا محفلین

    مراسلے:
    284
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    بجا فرمایا۔

    با اور مع، دونوں فارسی سابقات ہیں، مع لکھیں، علیحدہ ہو تو با لکھیں اور اگر ساتھ جوڑنا ممکن ہو تو ب جوڑ دیں۔
    مع چند نفوس کے ۔ ۔ ۔
    با تدبیر
    بتدریج
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  17. کاظمی بابا

    کاظمی بابا محفلین

    مراسلے:
    284
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    چین میں دو بڑی زبانیں بولی جاتی تھیں۔ مندارن اور کنٹونیز۔
    اویغور اور ہان وغیرہ دوسرے درجے پر تھیں۔ ایک ہزار سے زیادہ علاقائی زبانیں اور لہجے ہیں۔
    مگر اب سادہ چینی یعنی سمپلیفائیڈ چائنیر رواج پا رہی ہے اور یہی سب سے زیادہ بولی، لکھی اور سمجھی جاتی ہے۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 2
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  18. حمیرا عدنان

    حمیرا عدنان مدیر

    مراسلے:
    6,676
    جھنڈا:
    Kuwait
    موڈ:
    Angelic
    ان مراسلات کو پڑھ کر احساس ہوتا ہے کہ میں تو ابھی تک کچھ سیکھا ہی نہیں...
    میری مثال تو کنوںِ کے منڈک کی سی ہے
    آج سچ میں احساسِ کمتری کا شکار ہوئی ہوں یونیورسٹی میں تو صرف ورق ہی کالے کئیے ہیں ایک اجنبی زبان میں
     
    آخری تدوین: ‏اکتوبر 14, 2015
    • غمناک غمناک × 1
  19. محمد یعقوب آسی

    محمد یعقوب آسی محفلین

    مراسلے:
    6,818
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    ڈاکٹر محمد شریف نظامی کا مؤقف یہ ہے کہ چینی اور روسی زبانیں زیادہ تر اپنے علاقوں تک محدود ہیں، جب کہ اردو دنیا کے کئی ممالک میں نہ صرف بولی اور سمجھی جاتی ہے بلکہ پڑھائی بھی جاتی ہے۔ ڈاکٹر صاحب نے اپنے ایک مقالے میں عالمی سطح پر اردو کی ترویج اور نفاذ سے متعلق (ماضی و حال پر مبنی) مزید تفصیلات بھی فراہم کی ہیں۔

    حوالہ:
    نفاذِ اردو اور ترقی و ٹیکنالوجی – ڈاکٹر محمد شریف نظامی
    مطبوعہ: ماہنامہ "الحرمَین" کراچی ۔ شمارہ اکتوبر 2015ء ۔ ص 20 تا 23 ۔

    [​IMG]
    [​IMG]
    [​IMG]
    [​IMG]
    ۔۔۔۔
     
    آخری تدوین: ‏اکتوبر 14, 2015
    • زبردست زبردست × 3
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  20. بے الف اذان

    بے الف اذان محفلین

    مراسلے:
    204
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    کنویں کے مینڈک نے دیگر آبی جانوروں کیلیے بہت مسائل پیدا کیے :)
     
    • پر مزاح پر مزاح × 3
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1

اس صفحے کی تشہیر