بلکل تو بالکل مت لکھیں

محمداحمد

لائبریرین

بلکل تو بالکل مت لکھیں​

حامد محمود راجا
facebook_post_image_1607870655.jpg

اردو کے مظلوم الفاظ کی فہرست میں سے ایک لفظ بالکل بھی ہے جسے بڑھے لکھے اور عربی داں بھی بلکل لکھ رہے ہیں حالاں کہ بلکل غلط اور بالکل درست ہے۔ یہ دراصل تین الفاظ(ب+ال +کل) کا مجموعہ ہے ،اس کا معنی ہے:سب، تمام ،کمال، ہوبہو، پوری طرح سے، اچھی طرح۔ جیسے: آپ تو ہم کو بالکل بھول گئے‘ یہ لڑکا بالکل اپنے باپ کی صورت کا ہے۔ اس نوعیت کے دیگر الفاظ بھی مروج و مستعمل ہیں ۔چند الفاظ معنی کے ساتھ درج ہیں تاکہ املائی اغلاط سے بچا جاسکے ۔

بالآخر (ب+ال +آخر): سبب تدبیریں کر چکنے کے بعد، تھک کر۔جیسے دوسال تک بہت فکریں کیں، کہیں کرایہ پر اچھا گھر نہ ملا، بالآخر یہی طے کیا کہ اپنا ذاتی مکان بنانا چاہیے۔

بالاتفاق: (ب+ال +اتفاق): بغیر اختلاف کے، رضا مندی سے، سب کی مرضی سے، مل کر، اک زبان ہو کر۔جیسے: آج کمیٹی میں یہ معاملہ بالاتفاق طے ہو گیا۔

بالجبر(ب+ال +جبر): ظلم، زبردستی کرنا، جبریہ، زبردستی۔جیسے: وہ خوشی سے جانا نہیں چاہتے تو آپ کیا بالجبر لے جائیں گے۔

بالعموم (ب+ال +عموم): عام طور سے۔

بالفرض والامکان (ب+ال +فرض) اگر ۔مان لینے سے۔ مان کر۔ تسلیم کر کے۔ قبول کر کے۔ بغرض استدلال ۔ تسلیم کرنے کے بعد۔

بالمشافہ (ب+ال +مشافہ۔ تلفظ: بل مشافہ): روبروبات کہنا، دوبدو، روبرو۔ آمنے سامنے۔

بالواسطہ (ب +ال+واسطہ) : وسیلے سے، ذریعے سے۔

بالمقابل (ب+ال +مقابل): روبر و ہونا، آمنے سامنے، رو برو، موجودگی میں۔جیسے: بالمقابل ڈاک خانہ۔

بالتفصیل (ب+ال +تفصیل): کھول کر بیان کرنا، الگ الگ، واضح طور پر، تفصیل وار، مفصل طور سے۔جیسے ابن الوقت میں ہے : ” یورپ آپ کا وطن ٹھہر،اوہاں کے حالات سے تو آپ بالتفصیل واقف ہیں۔

بشکریہ ڈیلی پاکستان

یہ پوسٹ اردو لکھنے والوں (بالخصوص نوآموز نوجوانوں اور طالب علموں) کی املاء کی اصلاح کے لئے شامل کی گئی ہے۔

سو ہماری یہ درخواست ہے کہ جن جن محفلین نے اس لڑی میں ازراہِ تفنن غلط املاء لکھا ہے وہ (اب) اُسے درست کر دیں (یا درست کروا لیں) تاکہ سیکھنے والے سیکھنے کے بجائے مزید نہ اُلجھ جائیں۔

شکریہ مع جزاک اللہ!
 

لاريب اخلاص

لائبریرین
اس پر سرخ نشان لگایا کیجیے۔
بالکل سر!
مگر بات گر سکول تک ہوتی تو اور بات تھی بات کالج ، یونیورسٹی سٹوڈنٹس کی ہے ۔ امید کی جا سکتی ہے کہ ان شاءاللہ اردو فروغ پائے گی غلطی سے ہی، مگر سیکھ جائیں گے ہم سب ان شاءاللہ!
 

محمداحمد

لائبریرین
بالکل سر!
مگر بات گر سکول تک ہوتی تو اور بات تھی بات کالج ، یونیورسٹی سٹوڈنٹس کی ہے ۔ امید کی جا سکتی ہے کہ ان شاءاللہ اردو فروغ پائے گی غلطی سے ہی، مگر سیکھ جائیں گے ہم سب ان شاءاللہ!

آپ کہتی ہیں تو اللہ سے اُمید لگاتے ہیں ورنہ قوم کے معاملات تو ہرگز اُمید افزا نہیں ہیں۔ :)
 

زیک

تکنیکی معاون
بالکل سر!
مگر بات گر سکول تک ہوتی تو اور بات تھی بات کالج ، یونیورسٹی سٹوڈنٹس کی ہے ۔ امید کی جا سکتی ہے کہ ان شاءاللہ اردو فروغ پائے گی غلطی سے ہی، مگر سیکھ جائیں گے ہم سب ان شاءاللہ!
آجکل تو بڑے بڑے پاکستانی مسلمان اسلام و علیکم کرتے نظر آتے ہیں
 
Top