جمال احسانی بجز چراغ کسی اور کو خبر کیا ہے

شمشاد نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏فروری 11, 2014

  1. شمشاد

    شمشاد لائبریرین

    مراسلے:
    200,087
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    بجز چراغ کسی اور کو خبر کیا ہے
    یہ شام ہونے سے پہلے ہوا کا ڈر کیا ہے

    میں اک سوال سے نکلوں تو دوسرے میں رہوں
    مرے علاوہ بھی کچھ ہے یہاں مگر کیا ہے

    ہر ایک گوشہ کون و مکاں کی سیر کے بعد
    جو اپنی سمت نہ لے آئے وہ سفر کیا ہے

    خیال آیا مجھے گردشِ زمیں سے جمالؔ
    کہیں پہنچنے کی کوشش ہے رہگزر کیا ہے
    (جمال احسانی)
     

اس صفحے کی تشہیر