بہزاد لکھنوی اے جذبۂ دل گر میں چاہوں ہر چیز مقابل آ جائے- بہزاد لکھنوی

طالوت نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏نومبر 23, 2008

  1. طالوت

    طالوت محفلین

    مراسلے:
    8,353
    جھنڈا:
    SaudiArabia
    موڈ:
    Bashful
    اے جذبۂ دل گر میں چاہوں ہر چیز مقابل آ جائے
    منزل کے لیے دو گام چلوں اور سامنے منزل آ جائے

    آتا ہے جو طوفاں آنے دے، کشتی کا خدا خود حافظ ہے
    مشکل تو نہیں ان موجوں میں خود بہتا ہوا ساحل آ جائے

    اے شمع، قسم پروانوں کی، اتنا تُو میری خاطر کرنا
    اس وقت بھڑک کر گُل ہونا جب بانیِ محفل آ جائے

    اس جذبۂ دل کے بارے میں اک مشورہ تم سے لیتا ہوں
    اس وقت مجھے کیا لازم ہے جب تم پہ میرا دل آ جائے

    اے رہبرِ کامل چلنے کو تیار تو ہوں بس یاد رہے
    اس وقت مجھے بھٹکا دینا جب سامنے منزل آ جائے


    اس عشق میں جاں کو کھونا ہے، ماتم کرنا ہے، رونا ہے
    میں جانتا ہوں جو ہونا ہے، پر کیا کروں جب دل آ جائے


    ہاں یاد مجھے تم کر لینا، آواز مجھے تم دے لینا
    اس راہِ محبت میں کوئی درپیش جو مشکل آ جائے


    اے دل کی خلش چل یونہی سہی، چلتا تو ہوں ان کی محفل میں
    اس وقت مجھے چونکا دینا جب رنگ پہ محفل آ جائے

    --------------------
    بہزاد لکھنوی
    وسلام
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 17
    • زبردست زبردست × 2
  2. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    26,034
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    طالوت صاحب، اس خوبصورت غزل میں کئی غلطیاں ہیں، کچھ اشعار میں لکھتا ہوں:

    اے جذبۂ دل گر میں چاہوں، ہر چیز مقابل آ جائے
    منزل کے لیے دو گام چلوں اور سامنے منزل آ جائے

    اے دل کی خلش چل یونہی سہی، چلتا تو ہوں ان کی محفل میں
    اس وقت مجھے چونکا دینا جب رنگ پہ محفل آ جائے

    اے رہبرِ کامل چلنے کو تیار تو ہوں بس یاد رہے
    اس وقت مجھے بھٹکا دینا جب سامنے منزل آ جائے

    اس عشق میں جاں کو کھونا ہے، ماتم کرنا ہے، رونا ہے
    میں جانتا ہوں جو ہونا ہے، پر کیا کروں جب دل آ جائے

    ہاں یاد مجھے تم کر لینا، آواز مجھے تم دے لینا
    اس راہِ محبت میں کوئی درپیش جو مشکل آ جائے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 8
    • زبردست زبردست × 1
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  3. زونی

    زونی محفلین

    مراسلے:
    4,226
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amused
    اے رہبرِ کامل چلنے کو تیار تو ہوں بس یاد رہے
    اس وقت مجھے بھٹکا دینا جب سامنے منزل آ جائے



    بہت خوب! نیرہ نور نے بہت اچھی گائی ھے :)
     
    • متفق متفق × 1
  4. طالوت

    طالوت محفلین

    مراسلے:
    8,353
    جھنڈا:
    SaudiArabia
    موڈ:
    Bashful
    شکریہ وارث !!!
    وارث آپ نے یہ پوری غزل لکھی ہے یا چند شعر لکھے ہیں ؟؟ تاکہ میں وہاں اسے صحیح کر دوں یا اگر آپ کے پاس وقت ہو تو آپ کر دیجیے۔۔
    وسلام
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  5. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    26,034
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    میرے پاس ایک انتخاب میں اتنے ہی اشعار تھے جو میں نے اپنی پوسٹ میں لکھ دیے تھے۔

    آپ کی پوسٹ کی درستگی میں نے کر دی ہے لیکن صرف انہی اشعار کی جو میرے پاس تھے، جو زائد اشعار تھے انکا اضافہ بھی کر دیا ہے لیکن میرے خیال میں غزل اب بھی مکمل نہیں ہے!

    اگر کسی دوست کے پاس مکمل غزل ہو تو ضرور پوسٹ کریں، نوازش!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 6
  6. ماظق

    ماظق محفلین

    مراسلے:
    324
    جھنڈا:
    Pakistan
    اے جذبہ دل گر میں چاہوں ہر چیز مقابل آ جائے _ بہزاد لکھنوی

    اے جذبہ دل گر میں چاہوں ہر چیز مقابل آ جائے
    منزل کے لیے دو گام چلوں اور سامنے منزل آ جائے

    اے دل کی خلش چل یونہی سہی چلتا تو ہوں ان کی محفل میں
    اُس وقت مجھے چونکا دینا جب رنگ پہ محفل آ جائے

    اے رہبرِ کامل چلنے کا تیار ہوں میں پر یاد رہے
    اُس وقت مجھے بھٹکا دینا جب سامنے منزل آ جائے

    ہاں یاد مجھے تم کر لینا آواز مجھے تم دے لینا
    اس راہِ محبت میں کوئی درپیش جو مُشکل آ جائے

    اب کیوں ڈھونڈوں گا چشمِ کرم ہونے دے سِتم بالائے ستم
    میں چاہوں تو اے جذبہ غم مشکل پسِ مشکل آ جائے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 7
  7. رابطہ

    رابطہ محفلین

    مراسلے:
    358
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    اے رہبرِ کامل چلنے کو تیارتو ہوں پر یاد رہے
    اُس وقت مجھے بھٹکا دینا جب سامنے منزل آ جائے

    اب کیوں ڈھونڈوں وہ چشمِ کرم ہونے دے سِتم بالائے ستم
    میں چاہتا ہوں اے جذبہ غم مشکل پسِ مشکل آ جائے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  8. فاتح

    فاتح لائبریرین

    مراسلے:
    15,751
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Hungover
    مکمل غزل اور بہزاد لکھنوی کی آواز میں ایم پی تھری فائل

    شاید مکمل غزل یوں ہے:
    اے جذبۂ دل گر میں چاہوں ہر چیز مقابل آ جائے
    منزل کے لیے دو گام چلوں اور سامنے منزل آ جائے
    کشتی کو خدا پر چھوڑ بھی دے، کشتی کا خدا خود حافظ ہے
    مشکل تو نہیں ان موجوں میں بہتا ہوا ساحل آ جائے
    اے شمع! قسم پروانوں کی، اتنا تو مری خاطر کرنا
    اس وقت بھڑک کر گُل ہونا جب بانیِ محفل آ جائے
    اس جذبۂ دل کے بارے میں اک مشورہ تم سے لیتا ہوں
    اس وقت مجھے کیا لازم ہے جب تم پہ مرا دل آ جائے
    اے راہبرِ کامل! چلنے کو تیار تو ہوں بس یاد رہے
    اس وقت مجھے بھٹکا دینا جب سامنے منزل آ جائے
    اس عشق میں جاں کو کھونا ہے، ماتم کرنا ہے، رونا ہے
    میں جانتا ہوں جو ہونا ہے، پر کیا کروں جب دل آ جائے
    ہاں یاد مجھے تم کر لینا، آواز مجھے تم دے لینا
    اس راہِ محبت میں کوئی درپیش جو مشکل آ جائے
    اب کیوں ڈھونڈوں وہ چشمِ کرم، ہونے دے ستم بالائے ستم
    میں چاہتا ہوں اے جذبۂ غم، مشکل پسِ مشکل آ جائے
    اے برقِ تجلّی کیا تُو نے مجھ کو بھی موسیٰ سمجھا ہے؟
    میں طُور نہیں جو جل جاؤں، جو چاہے مقابل آ جائے
    اے دل کی لگی! چل یونھی سہی، چلتا تو ہوں ان کی محفل میں
    اس وقت مجھے چونکا دینا جب رنگ پہ محفل آ جائے
    (بہزاد لکھنوی)

    بہزاد لکھنوی کی آواز میں اس غزل کے چند اشعار پر مشتمل ایم پی تھری ڈاؤن لوڈ کیجیے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 8
    • زبردست زبردست × 2
  9. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    26,034
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    بہت شکریہ فاتح صاحب، نوازش!
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  10. فرحان دانش

    فرحان دانش محفلین

    مراسلے:
    3,078
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
  11. فاتح

    فاتح لائبریرین

    مراسلے:
    15,751
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Hungover
  12. سید زبیر

    سید زبیر محفلین

    مراسلے:
    4,362
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Dunce
    فاتح ! بہت شکریہ مکمل غزل کی شراکت کا ۔ ۔ بہت خوب
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  13. محسن وقار علی

    محسن وقار علی محفلین

    مراسلے:
    12,013
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Buzzed
    بھائی جان میں نے کہیں نیرہ نور ہی کی آواز میں اس مصرے کو کچھ یوں سنا تھا۔​
    آتا ہے جو طوفاں آنے دو، کشتی کا خدا خود حافظ ہے
    کونسا درست ہے؟
     
  14. فاتح

    فاتح لائبریرین

    مراسلے:
    15,751
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Hungover
    ہو سکتا ہے نیرہ نور نے یوں گایا ہو لیکن بہزاد لکھنوی کی اپنی آواز میں ہم نے ویسے ہی سنا ہے جیسے لکھا
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  15. نیلم

    نیلم محفلین

    مراسلے:
    11,419
    جھنڈا:
    England
    موڈ:
    Lurking
    اے جذبۂ دل گر میں چاہوں ہر چیز مقابل آ جائے
    منزل کے لیے دو گام چلوں اور سامنے منزل آ جائے

    اے دل کی خلش چل یونہی سہی چلتا تو ہُوں انکی محفل میں
    اُس وقت مجھے چونکا دینا جب رنگ پہ محفل آ جائے

    اے رہبرِ کامل چلنے کا تیار ہوں میں پر یاد رہے
    اُس وقت مجھے بھٹکا دینا جب سامنے منزل آ جائے

    ہاں یاد مُجھے تم کر لینا آواز مجھے تم دے لینا
    اس راہِ محبت میں کوئی درپیش جو مُشکل آ جائے

    اب کیوں ڈھونڈوں گا چشمِ کرم، ہونے دے سِتم بالائے ستم
    میں چاہوں تو اے جذبۂ غم، مشکل پسِ مشکل آ جائے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • زبردست زبردست × 1
  16. مانی عباسی

    مانی عباسی محفلین

    مراسلے:
    346
    جھنڈا:
    Pakistan
    بہت عمدہ ۔۔۔۔۔۔۔شاعر کون ہے اس غزل کا ؟؟
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  17. نیلم

    نیلم محفلین

    مراسلے:
    11,419
    جھنڈا:
    England
    موڈ:
    Lurking
    ،،بہزاد لکھنوی ہیں شاعر :)
     
  18. مانی عباسی

    مانی عباسی محفلین

    مراسلے:
    346
    جھنڈا:
    Pakistan
    شکریہ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  19. نیلم

    نیلم محفلین

    مراسلے:
    11,419
    جھنڈا:
    England
    موڈ:
    Lurking
    آپ کا بھی بہت شکریہ
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  20. آوازِ دوست

    آوازِ دوست محفلین

    مراسلے:
    1,905
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    اے جذبۂ دل گر میں چاہوں، ہر چیز مقابل آ جائے
    منزل کے لیے دو گام چلوں اور سامنے منزل آ جائے

    اے دل کی خلش چل یونہی سہی، چلتا تو ہوں اُن کی محفل میں
    اس وقت مجھے چونکا دینا جب رنگ پہ محفل آ جائے

    اے رہبرِ کامل چلنے کو تیار تو ہوں پر یاد رہے
    اس وقت مجھے بھٹکا دینا جب سامنے منزل آ جائے

    ہاں یاد مجھے تم کر لینا، آواز مجھے تم دے لینا
    اس راہِ محبت میں کوئی درپیش جو مُشکل آ جائے

    اَب کیوں ڈھونڈوں وہ چشمِ کرم ہونے دے ستم بالائے ستم
    میں چاہتا ہوں اے جذبۂ غم مُشکل پسِ مُشکل آ جائے

    اِس جذبۂ دِل کے بارے میں اِک مشورہ تم سے لیتا ہوں
    اِس وقت مُجھے کیا لازم ہے جب تُجھ پہ میرا دِل آ جائے

    اے برقِ تجلّی کیا تو نے مُجھ کو بھی موسیٰ سمجھا ہے
    میں طُور نہیں جو جل جاؤں جو چاہے مُقابل آجائے

    آتا ہے جو طوفاں آنے دو کشتی کا خُدا خود حافظ ہے
    مُشکل تو نہیں اِن موجوں میں بہتا ہوا ساحل آ جائے


    (بہزاد لکھنوی)
     
    آخری تدوین: ‏ستمبر 29, 2015
    • پسندیدہ پسندیدہ × 5

اس صفحے کی تشہیر