ایم ڈی تاثؔیر :::::وہ مِلے تو بے تکلُّف، نہ مِلے تو بےارادہ :::::: M. D. Taseer

طارق شاہ نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏دسمبر 18, 2016

  1. طارق شاہ

    طارق شاہ محفلین

    مراسلے:
    10,645
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm

    [​IMG]
    غزل
    وہ مِلے تو بے تکلُّف، نہ مِلے تو بےاِرادہ
    نہ طریقِ آشنائی ، نہ رُسوم ِجام و بادہ

    تِری نِیم کش نِگاہیں ، تِرا زیر ِلب تبسّم
    یُونہی اِک ادائےمستی، یُونہی اِک فریبِ سادہ

    وہ کُچھ اِسطرح سےآئے،مُجھےاِسطرح سےدیکھا
    مِری آرزو سے کم تر ، مِری تاب سے زیادہ

    یہ دلِیل ِخوش دِلی ہے، مِرے واسطے نہیں ہے!
    وہ دَہَن کہ ہےشگفتہ، وہ جَبِیں کہ ہے کُشادہ

    وہ قدم قدم پہ لغزِش، وہ نگاہ ِمستِ ساقی
    یہ تراشِ زُلفِ سرکش ، یہ کُلاہِ کج نہادہ

    ایم ڈی تاثؔیر
    (محمد دین تاثیر)

     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 7
    • زبردست زبردست × 1
  2. محمد تابش صدیقی

    محمد تابش صدیقی منتظم

    مراسلے:
    25,341
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    بہت خوبصورت شراکت.
    خاص طور پر اس شعر کے تو کیا کہنے
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  3. ابو ہاشم

    ابو ہاشم محفلین

    مراسلے:
    875
    کس طرح سے آئے اور کس طرح سے دیکھا؟
     
  4. محمد تابش صدیقی

    محمد تابش صدیقی منتظم

    مراسلے:
    25,341
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    اگلا مصرع یہی بتا رہا ہے. :)
     
  5. ابو ہاشم

    ابو ہاشم محفلین

    مراسلے:
    875
    یعنی وہ میری آرزو سے کم تر آئے۔ کیامطلب؟
    اور انھوں نے مجھے میری تاب سے زیادہ دیکھا۔ چہ معنی؟
    تو مجموعی منظر کیا تشکیل پایا؟
     
  6. محمد تابش صدیقی

    محمد تابش صدیقی منتظم

    مراسلے:
    25,341
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    اتفاق سے آج ہی نظر پڑی اس غزل پر۔
    اتنی تاخیر پر معذرت۔

    انسان کی آرزوئیں اکثر اس کی تاب اور حیثیت سے زیادہ ہی ہوتی ہیں۔ شاعر کے کہنے کا مطلب بھی یہی ہے کہ میری آرزو سے تو کم تر توجہ دی، مگر وہ بھی میرے تاب سے زیادہ تھی۔
     
  7. ابو ہاشم

    ابو ہاشم محفلین

    مراسلے:
    875
    شکریہ
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1

اس صفحے کی تشہیر