1. احباب کو اردو ویب کے سالانہ اخراجات کی مد میں تعاون کی دعوت دی جاتی ہے۔ مزید تفصیلات ملاحظہ فرمائیں!

    ہدف: $500
    $413.00
    اعلان ختم کریں

امجد اسلام امجد آنکھوں کا رنگ ، بات کا لہجہ بدل گیا - امجد اسلام امجد کی ایک خوبصورت غزل

لالہ رخ نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جنوری 22, 2013

  1. لالہ رخ

    لالہ رخ محفلین

    مراسلے:
    887
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Torn
    آنکھوں کا رنگ ، بات کا لہجہ بدل گیا
    وہ شخص ایک شام میں کتنا بدل گیا
    کچھ دن تو میرا عکس رہا آئینے پہ نقش
    پھر یوں ہوا کہ خود مرا چہرہ بدل گیا
    جب اپنے اپنے حال پہ ہم تم نہ رہ سکے
    تو کیا ہوا جو ہم سے زمانہ بدل گیا
    قدموں تلے جو ریت بچھی تھی وہ چل پڑی
    اس نے چھڑایا ہاتھ تو صحرا بدل گیا
    کوئی بھی چیز اپنی جگہ پر نہیں رہی!
    جاتے ہی ایک شخص کے، کیا کیا بدل گیا
    اک سرخوشی کی موج نے کیسا کیا کمال
    وہ بے نیاز، سارے کا سارا بدل گیا
    اٹھ کر چلا گیا کوئی وقفے کے درمیاں
    پردہ اٹھا تو سارا تماشہ بدل گیا
    حیرت سے سارے لفظ اسے دیکھتے رہے
    باتوں میں اپنی بات کو کیسا بدل گیا
    کہنے کو ایک صحن میں دیوار ہی بنی
    گھر کی فضا، مکان کا نقشہ بدل گیا
    شاید وفا کے کھیل سے اکتا گیا تھا وہ
    منزل کے پاس آ کے جو رستہ بدل گیا
    قائم کسی بھی حال پہ دنیا نہیں رہی!
    تعبیر کھو گئی، کبھی سپنا بدل گیا
    منظر کا رنگ اصل میں سایا تھا رنگ کا
    جس نے اسے جدھر سے بھی دیکھا، بدل گیا
    اندر کے موسموں کی خبر اس کو ہوگئی
    اس نوبہار ناز کا چہرہ بدل گیا
    آنکھوں میں جتنے اشک تھے، جگنو سے بن گئے
    وہ مسکرایا اور مری دنیا بدل گیا
    اپنی گلی میں اپنا ہی گھرڈھونڈتے ہیں لوگ
    امجد یہ کون شہر کا نقشہ بدل گیا
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • زبردست زبردست × 2
  2. لالہ رخ

    لالہ رخ محفلین

    مراسلے:
    887
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Torn
    میں نے تلاش کیا تھا کہ لیکن مجھے یہ غزل نہیں ملی ۔
     
  3. نایاب

    نایاب لائبریرین

    مراسلے:
    13,422
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Goofy
    بہت خوب انتخاب
    آنکھوں میں جتنے اشک تھے، جگنو سے بن گئے
    وہ مسکرایا اور مری دنیا بدل گیا
     
  4. عمر سیف

    عمر سیف محفلین

    مراسلے:
    36,612
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Where
    اپنی گلی میں اپنا ہی گھرڈھونڈتے ہیں لوگ
    امجد یہ کون شہر کا نقشہ بدل گیا
    بہت خوب
     
  5. نیلم

    نیلم محفلین

    مراسلے:
    11,419
    جھنڈا:
    England
    موڈ:
    Lurking
    حیرت سے سارے لفظ اسے دیکھتے رہے
    باتوں میں اپنی بات کو کیسا بدل گیا
    عمدہ
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  6. محمد بلال اعظم

    محمد بلال اعظم لائبریرین

    مراسلے:
    10,219
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Angelic
    جب اپنے اپنے حال پہ ہم تم نہ رہ سکے
    تو کیا ہوا جو ہم سے زمانہ بدل گیا
    واہ
    حسین انتخاب
     
  7. عمراعظم

    عمراعظم محفلین

    مراسلے:
    1,833
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    قدموں تلے جو ریت بچھی تھی وہ چل پڑی
    اس نے چھڑایا ہاتھ تو صحرا بدل گیا

    بہت خوبصورت اِنتخاب۔۔شیئر کرنے کا شکریہ۔
     

اس صفحے کی تشہیر