مصطفیٰ زیدی آسماں گیر ہے زلفوں کا دھواں کہتے ہیں ۔ ۔ مصطفیٰ زیدی

شاہ حسین نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جون 2, 2009

  1. شاہ حسین

    شاہ حسین محفلین

    مراسلے:
    2,901
    آسماں گیر ہے زلفوں کا دھواں کہتے ہیں
    جشن بردوش ہے فردوس رواں کہتے ہیں
    آج انسان ہے میردوجہاں کہتے ہیں

    اب لچکتی نہیں کوشش سے بھی غلماں کی کمر
    جل گئے حِدّتِ تحقیق سے اوہام کے پر
    اَبَدی ہے یہ جہانِ گزراں کہتے ہیں

    رھرو و آگہی گئی منزلِ عصر ِ مسعود
    جن کو کل لوگ سمجھتے تھے بتانِ معبود
    اب اُنہیں ذہن کی آوارگیاں کہتے ہیں

    مصطفیٰ زیدی

    روشنی



    22
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
  2. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    26,054
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    بہت شکریہ شاہ صاحب خوبصورت نظم شیئر کرنے کیلیے!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  3. فرخ منظور

    فرخ منظور لائبریرین

    مراسلے:
    12,833
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cold
    شکریہ حضرت بہت خوبصورت نظم ہے۔ بس کوشش کریں کہ اب روشنی کتاب کے علاوہ کوئی دوسری کتاب سے شئیر کریں تو بہت نوازش ہوگی۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  4. دل پاکستانی

    دل پاکستانی محفلین

    مراسلے:
    490
    جھنڈا:
    Pakistan
    شکریہ شاہ صاحب خوبصورت شاعری شیئر کرنے کیلئے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  5. شاہ حسین

    شاہ حسین محفلین

    مراسلے:
    2,901
    شکریہ جناب وارث صاحب ۔

    پسند فرمانے کا بہت شکریہ جناب سخنور صاحب ۔
    جی جناب انشاء اللہ بہت جلد ہی پیش خدمت کردوں گا ۔

    جناب دل پاکستانی آ پ کا بہت شکریہ
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2

اس صفحے کی تشہیر