نتائج تلاش

  1. W

    عوام سے خطاب (پاکستانی اداروں کا)

    عوام سے خطاب (پاکستانی اداروں کا) جو خموش ہے نہ پہنچے گا اسے گزند کوئی گر اٹھے تو کاٹ دوں گا نہ ہو سر بلند کوئی میں اگر بھٹک بھی جاؤں تو روش نہیں بدلتا میں یونہی چلوں گا چاہے کہے خود پسند کوئی مری حکمتوں کا مقصد یہی رہ گیا کہ میرے چھپے مخزنوں پہ ڈالے نہ کبھی کمند کوئی تمہیں کچھ نہیں کہوں...
  2. W

    غزل

    8 اکتوبر 2022 -۰-- -۰-- -۰-- -۰-- اور باقی رہ گئی کتنی مسافت ہے کہ میں اب فاصلوں پر فاصلے طے کرتے کرتے تھک گیا ہوں کم نہیں ہوتی طلب کیسی انوکھی یہ سزا ہے چاک دامن بھر نہ پایا بھرتے بھرتے تھک گیا ہوں مصلحت کا بوجھ لادے عمر اندیشوں میں کاٹی اب قیامت آ ہی جائے ڈرتے ڈرتے تھک گیا ہوں روز جینا...
  3. W

    امام حسین خدا کی بارگاہ میں

    --۰ ۰--۰ ۰ --۰ ۰- - 27 اگست 2022 ہر سانس پکارے مرے اللّہ مرے اللّہ اے دل کے سہارے مرے اللّہ مرے اللّہ مارے گئے پیارے مرے اللّہ مرے اللّہ سب بجھ گئے تارے مرے اللّہ مرے اللّہ اے نورِ صفا، ربِ کفیٰ، مولا و ملجا آتا ہے بہت یاد وہ فرزندِ جواں سال گم ہو گیا صحرا میں مرا بیش بہا لعل وہ ماہِ فلک...
  4. W

    کورونا سے سنبھلتے ہوئے

    شکریہ۔ الحمد للّٰہ خدا سب کو سلامت رکھے
  5. W

    کورونا سے سنبھلتے ہوئے

    ۰۔۔ ۰۔۔ ۰۔۔ ۰ ۔۔ 12 فروری 2022 خس و خاک بن کے بکھرتا بکھرتا ٹھٹھرتی شبوں میں لرزتا لرزتا خزاں کے اثر سے شکستہ شکستہ اجڑتا ہے کوئی شجر پتہ پتہ بدن اب تو ایسا ہی اجڑا شجر ہے جو سوکھا ہوا آج بے برگ و بر ہے گرا کر مجھے روگ ہے اب توانا برستا ہے جنبش پہ اک تازیانہ گراں ہو گیا ہے قدم بھی اٹھانا...
  6. W

    ایک غزل

    مہربانی جناب
  7. W

    نظم بعنوان تذبذب

    شاید قافیے کے اسالیب سے اس میں بھی روگردانی کی جسارت کی ہے۔ پیشگی معذرت قبول فرمائیے۔
  8. W

    نظم بعنوان تذبذب

    4 فروری 2022 تذبذب کہنے لگا اک روز مرا دل وہ حسیں ہے یونہی نہیں میں ہو گیا مائل وہ حسیں ہے تُو دیکھ کہ مثلِ مہِ کامل وہ حسیں ہے دنیا کی ہر اک شے کے مقابل وہ حسیں ہے کچھ دیر تو اٹھا نہیں میں دل کے جہاں سے اکتا کے پھر اک بار نکل آیا وہاں سے لوٹا تو حقیقت میں کچھ اپنا ہی اثر تھا جس سمت بھی...
  9. W

    ایک غزل

    مہربانی۔ آمین
  10. W

    نظم ۔ انسان کائنات میں

    بہت شکریہ۔ کچھ مزید وضاحت فرمائیے تو نوازش ہوگی۔
  11. W

    نظم ۔ انسان کائنات میں

    بہت شکریہ حضور۔ کچھ مزید روشنی ڈالئے
  12. W

    ایک غزل

    راحل صاحب، بہت شکریہ۔ انشااللہ
  13. W

    نظم ۔ انسان کائنات میں

    28 جنوری 2022 ۔۔ ۰۰۔ ۔۔ ۔۔ ۔۔ ۰۰۔ دو پل گونجا خاموش عدم میں ساز مرا کچھ گھڑیوں میں انجام ہوا آغاز مرا پانی پہ کھچا اک خط ہے ہر اعجاز مرا مٹ جائے گا گو دلکش ہے انداز مرا آئے ہیں ابھی اور ابھی چلے بھی جانا ہے کچھ پل ہیں اور پھر جامِ اجل پی جانا ہے افتادِ فنا کا زخم بہت ہی کاری ہے لیکن پھر...
  14. W

    ایک غزل

    چھٹیوں میں لکھی ایک غزل 24 جنوری 2022 ۔۔۰ ۔۰۔۔ ۔۔۰ ۔۰۔۔ صبر آزما تھا تیرے چہرے کا طُور کب سے دل جل گیا تو کیا ہے تھا نا صبور کب سے کیوں بات بات پر ہے مجھ سے تجھے شکایت ہر بات ہو گئ ہے میرا قصور کب سے لمبا سفر ہے لیکن کچھ دیر اب ٹھہر جا چلتا ہی جا رہا ہوں میں تھک کے چُور کب سے دنیا کے سامنے...
  15. W

    سلام

    30 اگست 2020 روزِ عاشور کو کورونا کے لاک ڈاؤن میں لکھا۔ سلام جو سر جھکے تھے ظلم کے آگے اٹھا دئیے پیشانیوں سے داغِ ملامت مٹا دئیے محکومیت کے طوق سے رکتے تھے جن کے سانس گردن چھڑا کے بندگی سے حُر بنا دئیے فُطرس سے کوئی بھول ہوئی کیوں حضور میں آداب بارگاہ کے اُس کو سکھا دئیے ظالم کا خوف جب...
  16. W

    اوڑھ لیں سب گلوں نے قبائیں نئی، کونپلوں پر عجب اک نکھار آگیا

    ایک بات بتائیے کہ کیا اس بحر فاعلن فاعلن فاعلن فاعلن فاعلن فاعلن فاعلن فاعلن (8 بار) کی کوئی اور مثال آپ کے علم میں ہے؟ اگر ہے تو بتائیے۔ مجھے یہ بحر پہلی بار یہاں نظر آئی اور اچھی لگی۔
Top