نتائج تلاش

  1. محمد آصف میؤ

    اس گھر کو آگ لگ گئی گھر کے چراغ سے

    ریختہ پر یہ شعر مہتاب رائے تاباں سے منسوب کیا ہے ۔ اور موصوف کے زمرے میں صرف یہی ایک شعر درج ہے ۔
  2. محمد آصف میؤ

    فدائے نقشِ نعلینت کنم جاں، یا رسول اللہ ۖ

    فدائے نقشِ نعلینت کنم جاں، یا رسول اللہ ۖ
  3. محمد آصف میؤ

    ہر جگہ ہر گھڑی ہر پہر میں ہیں ہم اک حسیں شاعرہ کے سحر میں ہیں ہم عشق نے چند دن کی خوشی دی ہمیں...

    ہر جگہ ہر گھڑی ہر پہر میں ہیں ہم اک حسیں شاعرہ کے سحر میں ہیں ہم عشق نے چند دن کی خوشی دی ہمیں اب شب و روز غم کی لہر میں ہیں ہم محمد آصف میؤ
  4. محمد آصف میؤ

    ‏ہزار سجدے سجاؤں گا میں تیرے در پہ بس ایک بار میرا یار ملا دے مجھ کو " محمد آصف میؤ " ‎

    ‏ہزار سجدے سجاؤں گا میں تیرے در پہ بس ایک بار میرا یار ملا دے مجھ کو " محمد آصف میؤ " ‎
  5. محمد آصف میؤ

    تم مری زیست کا سامان نہیں ہو سکتی دوست ہو سکتی ہو پر جان نہیں ہو سکتی جس نے دیکھا ہے تمہیں...

    تم مری زیست کا سامان نہیں ہو سکتی دوست ہو سکتی ہو پر جان نہیں ہو سکتی جس نے دیکھا ہے تمہیں ہنستے مسکراتے ہوئے اُس کی آنکھیں کبھی ویران نہیں ہو سکتی محمد آصف میؤ
  6. محمد آصف میؤ

    معلوم ہے وہ میرا مقدر نہیں ہے پر ۔۔۔۔!! دل سے اُس ایک شخص کی خواہش نہیں جاتی محمد آصف میؤ

    معلوم ہے وہ میرا مقدر نہیں ہے پر ۔۔۔۔!! دل سے اُس ایک شخص کی خواہش نہیں جاتی محمد آصف میؤ
  7. محمد آصف میؤ

    ہوں عجیب کشمکش میں

    شاعر کا نام ؟
  8. محمد آصف میؤ

    ریلوے ٹریک پر آنے والے شعراء

    1993 میں انہوں نے ٹرین کے آگے کود کر خود کشی کی کوشش کی انکی جان تو بچ گئی لیکن ٹانگوں سے محروم ہو گئے پھر اسکے تین سال بعد دوبارہ ٹرین کے نیچے آ کر جان دے دی ۔
  9. محمد آصف میؤ

    کشمکش ہائے الم سے اب یہ حسرتؔ جی میں ہے چھٹ کے ان جھگڑوں سے مہمان قضا ہو جائیے حسرت موہانی

    کشمکش ہائے الم سے اب یہ حسرتؔ جی میں ہے چھٹ کے ان جھگڑوں سے مہمان قضا ہو جائیے حسرت موہانی
  10. محمد آصف میؤ

    بلاشبہ خود کشی حرام ہے ۔ اللّٰہ باز رکھے اس حرکت سے لیکن میرے نزدیک تو خود سوز بہادر ہیں بہت...

    بلاشبہ خود کشی حرام ہے ۔ اللّٰہ باز رکھے اس حرکت سے لیکن میرے نزدیک تو خود سوز بہادر ہیں بہت وگرنہ بزدلوں سے خود کشی کہاں سے ہو محمد آصف میؤ
  11. محمد آصف میؤ

    نیا کھیل شعر مکمل کریں

    جس نے چاہا پھنسا لیا ہم کو دلبروں کے شکار ہم بھی ہیں داغ دہلوی
  12. محمد آصف میؤ

    بس ایک آخری درخواست تم سے کرنی ہے مجھے بھی بھول جاؤ میرے جنم دن کی طرح محمد آصف میؤ

    بس ایک آخری درخواست تم سے کرنی ہے مجھے بھی بھول جاؤ میرے جنم دن کی طرح محمد آصف میؤ
  13. محمد آصف میؤ

    جب مرے سامنے وہ آتی ہے اُڑنے لگتا ہوں میں ہواؤں میں محمد آصف میؤ

    جب مرے سامنے وہ آتی ہے اُڑنے لگتا ہوں میں ہواؤں میں محمد آصف میؤ
  14. محمد آصف میؤ

    خود کشی کرنے والے شاعروں کو پڑھتا ہوں کل کو مجھ کو بھی پڑھے گا کوئی میرے جیسا محمد آصف میؤ

    خود کشی کرنے والے شاعروں کو پڑھتا ہوں کل کو مجھ کو بھی پڑھے گا کوئی میرے جیسا محمد آصف میؤ
  15. محمد آصف میؤ

    نیا کھیل شعر مکمل کریں

    جان کیا دوں کہ جانتا ہوں میں تم نے یہ چیز لے کے دی ہی نہیں اگلا مصرع جس نے چاہا پھنسا لیا ہم کو
  16. محمد آصف میؤ

    بخشا مجھ کو بھی یہ اعزاز خدارا جائے

    بخشا مجھ کو بھی یہ اعزاز خدارا جائے سگ تیرے در کا مجھے کہہ کے پکارا جائے جس کا دل جلوہ گاہ یار ہو خود اے موسیٰ جانبِ طُور وہ کیوں بہرِ نظارا جائے جرم آنکھوں نے کیا اور ملی دل کو سزا کوئی مجرم ہو کوئی مفت میں مارا جائے آسماں پار کرے عرش پہ پہنچے آواز اُس کو اِک بار اگر دِل سے پُکارا جائے...
  17. محمد آصف میؤ

    تو گیا ہے جب سے دلبر میرا لگ نہیں رہا دل یہ دنوں میں بھی دکھی ہے اور شب میں بھی بیاکل وہ یہ...

    تو گیا ہے جب سے دلبر میرا لگ نہیں رہا دل یہ دنوں میں بھی دکھی ہے اور شب میں بھی بیاکل وہ یہ بولی بن سنور کے کہ میں کیسی لگ رہی ہوں میں یہ بولا جان میری نہیں تیرا کچھ تقابُل اک غم سے جاں نہ چھُوٹی ، تیّار دوسرا ہے میری زندگی میں آصفؔ ہے غموں کا اک تسلسل محمد آصفؔ میؤ
  18. محمد آصف میؤ

    تجھے سننا چاہوں ہر دم تجھے دیکھوں میں مسلسل میرا خوں نچوڑتا ہے تیرے ربط میں تعطُّل کبھی بن کہے...

    تجھے سننا چاہوں ہر دم تجھے دیکھوں میں مسلسل میرا خوں نچوڑتا ہے تیرے ربط میں تعطُّل کبھی بن کہے ہی سننا میرا حالِ دل سمجھنا کبھی سن کے بھی نہ سننا ارے واہ تیرا تجاہل مجھے دیکھ کر بھی جو تم یوں بنو کہ نہیں دیکھا تمہیں زیب ہے کیا جاناں بھلا اس قدر تغافل محمد آصفؔ میؤ
  19. محمد آصف میؤ

    جو ایک بار بیٹھ گیا مسندِ دل پر تاحشر اسے دل سے اتارا نہ جائے گا رد ہو گئی جو اب کے بھی...

    جو ایک بار بیٹھ گیا مسندِ دل پر تاحشر اسے دل سے اتارا نہ جائے گا رد ہو گئی جو اب کے بھی درخواست ہماری ہم سے دوبارہ رب کو پکارا نہ جائے گا جو مانگنا ہے دل سے مانگ اپنے خدا سے یہ مانگنا تمہارا نکارہ نہ جائے گا آپ ائیے ہمارا مقدر سنوارئیے ہم سے تو کسی طور سنوارا نہ جائے گا آصفؔ جسے یہ...
  20. محمد آصف میؤ

    یہ بارِ غمِ عشق اٹھایا نہ جائے گا تم رُوٹھے اگر ہم سے منایا نہ جائے گا تم خود ہی آکے دیکھ لو...

    یہ بارِ غمِ عشق اٹھایا نہ جائے گا تم رُوٹھے اگر ہم سے منایا نہ جائے گا تم خود ہی آکے دیکھ لو حالِ مریضِ عشق قاصد سے میرا حال سنایا نہ جائے گا سب ایک بار سن لیں میرا شعر غور سے دوبارہ کسی کو بھی سنایا نہ جائے گا چہرے سے عیاں ہوتا ہے جاناں تمہارا غم ہم سے تمہارا ہجر چھپایا نہ جائے گا...
Top